Shadow
سرخیاں
مغربی طرز کی ترقی اور لبرل نظریے نے دنیا کو افراتفری، جنگوں اور بےامنی کے سوا کچھ نہیں دیا، رواں سال دنیا سے اس نظریے کا خاتمہ ہو جائے گا: ہنگری وزیراعظمامریکی جامعات میں صیہونی مظالم کے خلاف مظاہروں میں تیزی، سینکڑوں طلبہ، طالبات و پروفیسران جیل میں بندپولینڈ: یوکرینی گندم کی درآمد پر کسانوں کا احتجاج، سرحد بند کر دیخود کشی کے لیے آن لائن سہولت، بین الاقوامی نیٹ ورک ملوث، صرف برطانیہ میں 130 افراد کی موت، چشم کشا انکشافاتپوپ فرانسس کی یک صنف سماج کے نظریہ پر سخت تنقید، دور جدید کا بدترین نظریہ قرار دے دیاصدر ایردوعان کا اقوام متحدہ جنرل اسمبلی میں رنگ برنگے بینروں پر اعتراض، ہم جنس پرستی سے مشابہہ قرار دے دیا، معاملہ سیکرٹری جنرل کے سامنے اٹھانے کا عندیامغرب روس کو شکست دینے کے خبط میں مبتلا ہے، یہ ان کے خود کے لیے بھی خطرناک ہے: جنرل اسمبلی اجلاس میں سرگئی لاوروو کا خطاباروناچل پردیش: 3 کھلاڑی چین اور ہندوستان کے مابین متنازعہ علاقے کی سیاست کا نشانہ بن گئے، ایشیائی کھیلوں کے مقابلے میں شامل نہ ہو سکےایشیا میں امن و استحکام کے لیے چین کا ایک اور بڑا قدم: شام کے ساتھ تذویراتی تعلقات کا اعلانامریکی تاریخ کی سب سے بڑی خفیہ و حساس دستاویزات کی چوری: انوکھے طریقے پر ادارے سر پکڑ کر بیٹھ گئے

Tag: کاراباخ، آزربائیجان آرمینیا جنگ، روسی ثالثی، پیوتن، بات چیت، ماریا زاخارووا،

آزربائیجان اور آرمینیا کاراباخ میں جنگ بندی کے لیے ماسکو میں بات چیت پر متفق: ترجمان روسی دفتر خارجہ

آزربائیجان اور آرمینیا کاراباخ میں جنگ بندی کے لیے ماسکو میں بات چیت پر متفق: ترجمان روسی دفتر خارجہ

روس دنیا میں
روسی دفتر خارجہ کی ترجمان ماریا زاخارووا کا کہنا ہے کہ آزربائیجان اور آرمینیا نے ماسکو کی طرف سے کاراباخ میں جنگ بندی کے لیے بات چیت پر حامی بھر لی ہے۔ بات چیت کا آغاز جلد ہو جائے گا، تیاریاں مکمل کر لی گئی ہیں۔ بات چیت کی پیشکش روسی صدرولادیمیر پیوتن کی طرف سے کی گئی تھی، جسے دونوں ممالک نے قبول کرتے ہوئے وزراء خارجہ کو بھیجنے کا فیصلہ کیا ہے۔ روسی منصوبے کے تحت جنگ بندی اور جنگی قیدیوں کی رہائی پر بات چیت ہو گی۔ واضح رہے کہ 27 ستمبر سے دونوں ہمسایہ ممالک میں کاراباخ کے علاقے میں شدید لڑائی جاری ہے، جسے عالمی طور پر آزربائیجان کا علاقہ مانا جاتا ہے تاہم آرمینیا نے اس پر قبضہ کر رکھا ہے۔ دونوں حریف اب ایک دوسرے پر عوامی مقامات پر بمباری کا الزام بھی لگا رہے ہیں۔ اور اب تک سینکڑوں عسکری و عوامی ہلاکتیں ہو چکی ہیں۔ عالمی برادری بات چیت سے مسئلے کے حل پر زور دے رہی ہے۔ ...

Contact Us