جمعرات, ستمبر 24 Live
Shadow

امریکہ چین کو کرنسی کے چکرباز کی حیثیت سے دنیا میں بدنام کرنے کے لیےکیا طریقے اختیارکرے گا۔ رشیہ ٹو ڈے کےبوم بسٹ کی پیش گوئی ۔

بین الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) کی جانب سے یہ فیصلہ آنے کے باوجود کہ چین جان بوجھ کر یوآن کی قدر کو کم نہیں کررہا ہے ، واشنگٹن اب بھی چاہتا ہے کہ ہر شخص اس بات پر متفق ہوجائے کہ اس کی تجارتی جنگ کا حریف کرنسی کی ہیرا پھیری میں ملوث ہے۔ اب سوال یہ اٹھتا ہے کہ بھلا کس طرح.

تجارتی جنگ میں حمایت حاصل کرنے کے لئے بین الاقوامی سطح پر تسلیم شدہ آزاد معاشی ادارے کی لابنگ کرنا اب تک آئی ایم ایف کے سب سے بڑے شراکت دار، امریکہ کے لئے بیکار رہا ہے ، کیونکہ ٹریژری سکریٹری اسٹیون منوچین اس سلسلے میں معاملات طے کرنے میں ناکام رہے ہیں۔ تاہم ، آئی ایم ایف ایک حساس عہدے کی نئی قیادت کو منتقلی کی راہ پر گامزن ہے ، اور یہی وہ مقام ہے جہاں واشنگٹن  مداخلت کر سکتا ہے۔

منوچین [کرسٹلینا] جورجیوا ، جو عالمی بینک کی چیف ایگزیکٹو ہیں کی حمایت کر رہے ہیں کہ وہ  [کرسٹین] لگارڈ کی جگہ لے لیں۔   آرٹی کے پروگرام بوم بسٹ کی شریک میزبان کرسٹی آئیی نے بتایا کہ جارجیوا کے ساتھ قریبی تعلقات رکھنے کے باعث اسےاکتوبر کے اوائل میں ہی آئی ایم ایف میں تعینات کیا جاسکتا ہے۔

یہ وہ مقام ہوگا جہاں بیجنگ کی کرنسی کی پالیسی سے نمٹنے کے لئے امریکہ آئی ایم ایف پر دباؤ ڈالنے کی اپنی کوششوں کی “یقینی طور پر” تجدید کرے گا۔ تاہم ، اگر آئی ایم ایف واشنگٹن کے دباؤ کو بڑھاتا ہے تو ، یہ آئی ایم ایف کی غیر جانبداری پر ایک سوالیہ نشان ہو سکتا ہے۔

 
دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں