جمعہ, فروری 23 https://www.rt.com/on-air/ Live
Shadow
سرخیاں
صدر ایردوعان کا اقوام متحدہ جنرل اسمبلی میں رنگ برنگے بینروں پر اعتراض، ہم جنس پرستی سے مشابہہ قرار دے دیا، معاملہ سیکرٹری جنرل کے سامنے اٹھانے کا عندیامغرب روس کو شکست دینے کے خبط میں مبتلا ہے، یہ ان کے خود کے لیے بھی خطرناک ہے: جنرل اسمبلی اجلاس میں سرگئی لاوروو کا خطاباروناچل پردیش: 3 کھلاڑی چین اور ہندوستان کے مابین متنازعہ علاقے کی سیاست کا نشانہ بن گئے، ایشیائی کھیلوں کے مقابلے میں شامل نہ ہو سکےایشیا میں امن و استحکام کے لیے چین کا ایک اور بڑا قدم: شام کے ساتھ تذویراتی تعلقات کا اعلانامریکی تاریخ کی سب سے بڑی خفیہ و حساس دستاویزات کی چوری: انوکھے طریقے پر ادارے سر پکڑ کر بیٹھ گئےیورپی کمیشن صدر نے دوسری جنگ عظیم میں جاپان پر جوہری حملے کا ذمہ دار روس کو قرار دے دیااگر خطے میں کوئی بھی ملک جوہری قوت بنتا ہے تو سعودیہ بھی مجبور ہو گا کہ جوہری ہتھیار حاصل کرے: محمد بن سلمانمغربی ممالک افریقہ کو غلاموں کی تجارت پر ہرجانہ ادا کریں: صدر گھانامغربی تہذیب دنیا میں اپنا اثر و رسوخ کھو چکی، زوال پتھر پہ لکیر ہے: امریکی ماہر سیاستعالمی قرضوں میں ریکارڈ اضافہ: دنیا، بنکوں اور مالیاتی اداروں کی 89 پدم روپے کی مقروض ہو گئی

امریکی پابندیوں اور دباؤ کے باوجود ہندوستان اپنی معاشی بہبود کو اہمیت دیتا ہے۔ بھارتی وزیر خزانہ

بھارت کےوزیر خزانہ نرملا سیتارامن نے کہا ہےکہ ہندوستان امریکی پابندیوں کی تعمیل کرنا چاہتا ہے ، لیکن اس کی معیشت کی طاقت اور اس کے تزویراتی مفادات کو پہلے آنا چاہئے۔

منگل کے روز ، سیتا رامن نے رائٹرز کو بتایا ، “مخصوص امور میں جو ہندوستان کے اسٹریٹجک مفادات کے لئے اہم ہیں ، ہم نے امریکہ کو سمجھایا ہے کہ ہندوستان ریاست ہائے متحدہ امریکہ کے لئے ایک اسٹریٹجک شراکت دار ہے اور آپ چاہتے ہیں کہ اسٹریٹجک شراکت دار مضبوط اور کمزور نہ ہو۔” . ہم امریکہ کے ساتھ مضبوط شراکت کی قدر کرتے ہیں ، لیکن ہمیں یکساں طور پر مضبوط معیشت رکھنے کی اجازت دی جانی چاہئے۔

ہندوستانی آئل ریفائنر ریلائنس انڈسٹریز بھاری تیل کے دیگر سپلائی کنندگان کی کمی کا حوالہ دیتے ہوئے وینزویلا کی تیل کی صنعت پر امریکہ کی جانب سے سخت ترین پابندیوں کے باوجود چار ماہ کے وقفے کے بعد وینزویلا کا تیل خریدنا دوبارہ شروع کرے گی۔ امریکہ اور چین تجارتی جنگ نے ہندوستان کی معیشت کو سخت نقصان پہنچایا ہے ، جس کے نتیجے میں بین الاقوامی مالیاتی فنڈ 2019 میں بھارت کی نمو کے لئے اپنا نقطہ نظر منفی رکھے گا ، جس سے گھریلو مانگ سست روی کا شکار ہو جائےگی۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

11 − four =

Contact Us