جمعرات, فروری 22 https://www.rt.com/on-air/ Live
Shadow
سرخیاں
صدر ایردوعان کا اقوام متحدہ جنرل اسمبلی میں رنگ برنگے بینروں پر اعتراض، ہم جنس پرستی سے مشابہہ قرار دے دیا، معاملہ سیکرٹری جنرل کے سامنے اٹھانے کا عندیامغرب روس کو شکست دینے کے خبط میں مبتلا ہے، یہ ان کے خود کے لیے بھی خطرناک ہے: جنرل اسمبلی اجلاس میں سرگئی لاوروو کا خطاباروناچل پردیش: 3 کھلاڑی چین اور ہندوستان کے مابین متنازعہ علاقے کی سیاست کا نشانہ بن گئے، ایشیائی کھیلوں کے مقابلے میں شامل نہ ہو سکےایشیا میں امن و استحکام کے لیے چین کا ایک اور بڑا قدم: شام کے ساتھ تذویراتی تعلقات کا اعلانامریکی تاریخ کی سب سے بڑی خفیہ و حساس دستاویزات کی چوری: انوکھے طریقے پر ادارے سر پکڑ کر بیٹھ گئےیورپی کمیشن صدر نے دوسری جنگ عظیم میں جاپان پر جوہری حملے کا ذمہ دار روس کو قرار دے دیااگر خطے میں کوئی بھی ملک جوہری قوت بنتا ہے تو سعودیہ بھی مجبور ہو گا کہ جوہری ہتھیار حاصل کرے: محمد بن سلمانمغربی ممالک افریقہ کو غلاموں کی تجارت پر ہرجانہ ادا کریں: صدر گھانامغربی تہذیب دنیا میں اپنا اثر و رسوخ کھو چکی، زوال پتھر پہ لکیر ہے: امریکی ماہر سیاستعالمی قرضوں میں ریکارڈ اضافہ: دنیا، بنکوں اور مالیاتی اداروں کی 89 پدم روپے کی مقروض ہو گئی

روس کا امریکہ پر حساس تنصیبات کی جاسوسی کا الزام

روس کی وزارت خارجہ کی ترجمان ماریہ زخارووا نے الزام عائد کیا ہے کہ امریکا کے ملٹری اتاشی مستقل بنیادوں پر روسی دفاعی تنصیبات کے اندر گھسنے کی کوشش کرتے رہتے ہیں۔روسی وزارت خارجہ کی ترجمان نے مزید کہا کہ تازہ ترین کوشش 14 اکتوبر کو اس وقت کی گئی جب امریکہ کے تین ملٹری اتاشیوں نے روس کے شمالی شہر ارخنگلیس میں ’شوٹنگ گراؤنڈ‘ کے پاس جانے کی کوشش کی تاہم انہیں اجازت نامہ نہ ہونے کی وجہ سے وہاں جانے کی اجازت نہیں دی گئی۔

ماریہ زخارووا نے روس اور امریکا کے درمیان سفارتکاروں کے دوروں کے معاہدے کا ذکر کرتے ہوئے بتایا کہ 25 میل سے زیادہ سفر کرنے سے پہلے انہیں متعلقہ حکام کو آگاہ کرنا ضروری ہے۔نہوں نے کہا کہ امریکی ملٹری اتاشیوں نے غیر متعلقہ جگہوں پر جانا معمول بنا لیا ہے اور وہ قواعد و ضوابط کو مسلسل نظر انداز کر رہے ہیں۔

ترجمان روسی دفتر خارجہ نے امریکی شہری کی گرفتاری کی خبر کو جھوٹ قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس وقت روس کے زیر حراست 22 امریکی ہیں جنہیں فراڈ، چوری، ڈرگ اسمگلنگ اور جنسی زیادتی سے متعلق کیسوں میں گرفتار کیا گیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ روسی شہریوں کے تبادلے کے عوض امریکیوں کی گرفتاری کی خبروں میں کوئی صداقت نہیں ہے اور پال وہیلن نامی امریکی شہری کو انٹیلی جنس معلومات اکٹھی کرنے پر گرفتار کیا گیا۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

19 − four =

Contact Us