Shadow
سرخیاں
پولینڈ: یوکرینی گندم کی درآمد پر کسانوں کا احتجاج، سرحد بند کر دیخود کشی کے لیے آن لائن سہولت، بین الاقوامی نیٹ ورک ملوث، صرف برطانیہ میں 130 افراد کی موت، چشم کشا انکشافاتپوپ فرانسس کی یک صنف سماج کے نظریہ پر سخت تنقید، دور جدید کا بدترین نظریہ قرار دے دیاصدر ایردوعان کا اقوام متحدہ جنرل اسمبلی میں رنگ برنگے بینروں پر اعتراض، ہم جنس پرستی سے مشابہہ قرار دے دیا، معاملہ سیکرٹری جنرل کے سامنے اٹھانے کا عندیامغرب روس کو شکست دینے کے خبط میں مبتلا ہے، یہ ان کے خود کے لیے بھی خطرناک ہے: جنرل اسمبلی اجلاس میں سرگئی لاوروو کا خطاباروناچل پردیش: 3 کھلاڑی چین اور ہندوستان کے مابین متنازعہ علاقے کی سیاست کا نشانہ بن گئے، ایشیائی کھیلوں کے مقابلے میں شامل نہ ہو سکےایشیا میں امن و استحکام کے لیے چین کا ایک اور بڑا قدم: شام کے ساتھ تذویراتی تعلقات کا اعلانامریکی تاریخ کی سب سے بڑی خفیہ و حساس دستاویزات کی چوری: انوکھے طریقے پر ادارے سر پکڑ کر بیٹھ گئےیورپی کمیشن صدر نے دوسری جنگ عظیم میں جاپان پر جوہری حملے کا ذمہ دار روس کو قرار دے دیااگر خطے میں کوئی بھی ملک جوہری قوت بنتا ہے تو سعودیہ بھی مجبور ہو گا کہ جوہری ہتھیار حاصل کرے: محمد بن سلمان

ریفائنریز کے لئے2020 ایک بحران کا سال ہو سکتا ہے۔ کیسے؟

آئل مارکیٹوں کے ذریعے مارکیٹ میں ہلچل پیدا کرنےکے لئے ایندھن کی نئی خصوصیات مرتب کی گئیں ، لیکن آن لائن آنے والے کم سلفر فیول آئل کی ایک نئی کھیپ مارکیٹ میں ناراضی پیدا کرسکتی ہے۔ دنیا بھر کی ریفائنریز کی صنعت نے احتیاط سے سال کے آخر میں ایندھن کی پیداوار کو فروغ دینے کا منصوبہ بنایا ہے ۔

شپنگ کے قواعد میں تبدیلی سے قبل آنے والے مہینوں میں آئی ایم او کے زیراثرپیداوار گرنے کی توقع کی جارہی ہے۔ لیکن جیسے ہی یکم جنوری ، 2020 ، تیزی سے قریب آرہا ہے ، اس سے پہلے کی توقع شدہ ریفائننگ مارجن بونینزا ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہوسکتی ہے کیونکہ اب توقع کی جارہی ہے کہ رکاوٹ اس سے پہلے کی توقعات سے کہیں زیادہ ڈرامائی ہوگی۔

بین الاقوامی میری ٹائم آرگنائزیشن (آئی ایم او) کے نئے قواعد کے مطابق ، یکم جنوری 2020 سے بحری جہازوں میں صرف 0.5 فیصد یا اس سے کم سلفر فیول آئل کا استعمال کیا جانا چاہئے وہ بھی کم از کم اس یقین دہانی کی صورت میں کہ بحری جہازوں نے نام نہاد اسکربرزیعنی سلفر کو صاف کرنے والا نظام انسٹال کردیا ہے لہٰذا وہ ہائی سلفر فیول آئل کا استعمال جاری رکھ سکتے ہیں۔ اس بات کا یقین حاصل کرنے کے لئے کہ جہاز کی صنعت میں پوری سپلائی چین کے ذریعے یاددہانیاں بھیجنے کے لئے ایندھن کی نئی خصوصیات مرتب کی گئی ہیں ، خام تیل پیدا کرنے والوں کی جانب سے ، ریفائنرز ، تاجرحضرات ، بحری جہازوں اورجہازوں پر تجارت کی جانے والی ہر چیز کے اختتامی صارفین کومعلومات ہونی چاہئیں۔ تاہم کم سلفر ایندھن کی فراہمی اتنا ہی کافی ہوسکتی ہے اورعالمی معاشی اور تجارتی نمو میں کمی اور شپنگ کے قواعد کی وجہ سے ، طلب کو کم کیا جاسکتا ہے ، جو کہ 2020 میں ووڈ میکنزی کے تجزیہ کاروں کے مطابق دس فیصد کے لگ بھگ ہو سکتی ہے۔

واضح رہے کہ روس ان ممالک میں سے ایک ہے جو اپنے علاقائی پانیوں میں دریاؤں سمیت آئی ایم او قواعد پر عمل درآمد میں تاخیر کا شکار ہے ۔ لیکن روسی وزیر توانائی الیگزینڈر نوواک نے بلومبرگ کے بھیجے ہوئے سوالات کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ روس اب بھی بین الاقوامی پانیوں میں قواعد کی تعمیل کرے گا۔ اس کےکثیر گندھک تیل کی وجہ سے ، روس سمندری ایندھن کے نئے قواعد کے مطابق سب سے زیادہ خسارہ پیدا کرنے والا ملک ہے جو کہ نئے ضابطے میں کم سلفر فیول آئل ،ہائی سلفر فیول آئل کی طلب کو کم کرنے کا باعث بنے گا ۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

3 + six =

Contact Us