پیر, دسمبر 6 Live
Shadow
سرخیاں
امریکی سی آئی اے اہلکاروں کے ایک بار پھر کم عمر بچوں بچیوں کے ساتھ جنسی جرائم میں ملوث ہونے کا انکشافامریکہ کا مشرقی افریقہ میں تاریخ کے سب سے بڑے فوجی آپریشن کا اعلان: 1 ہزار سے زائد مزید کمانڈو تیارروسی صدر کی ثالثی: آزربائیجان اور آرمینیا کے مابین سرحدی جھڑپیں ختم، سرحدی حدود کے تعین پر اتفاق، جنگ سے متاثر آبادی اور دیگر انسانی حقوق کے تحفظ کی بھی یقین دہانینائیجیر: فرانسیسی فوج کی فائرنگ سے 2 شہری شہید، 16 زخمیامریکی فوج میں ہر 4 میں سے 1 عورت اور 5 میں سے 1 مرد جنسی زیادتی کا نشانہ بنتا ہے، بیشتر خود کشی کر لیتے، کورٹ مارشل کے خوف سے کوئی آواز نہیں اٹھاتا: سابقہ اہلکارروس کا غیر ملکی سماجی میڈیا کمپنیوں پر ملک میں کاروباری اندراج کے لیے دباؤ جاری: رواں سال کے آخر تک عمل نہ ہونے پر پابندی لگانے کا عندیاامریکہ ہائپر سونک ٹیکنالوجی میں چین اور روس سے بہت پیچھے ہے: امریکی جنرل تھامپسنامریکی تفریحی میڈیا صنعت کس عقیدے، نظریے اور مقصد کے تحت کام کرتی ہے؟چوالیس فیصد امریکی اولاد پیدا کرنے کی خواہش نہیں رکھتے: پیو سروے رپورٹچینی کمپنی ژپینگ نے جدید ترین برقی کار جی-9 متعارف کر دی: بیٹری کے معیار اور رفتار میں ٹیسلا کو بھی پیچھے چھوڑ دیا

تیل کی طلب میں 2035 تک اضافے کا رحجان اور 2045 تک بلا گراوٹ طلب قائم رہے گی: اوپیک رپورٹ

تیل برآمد کرنے والے ممالک کی بین الاقوامی تنظیم اوپیک کے مطابق کووڈ-19 وباء کے باعث ہونے والے عالمی معاشی نقصان کو پورا کرنے کے لیے آئندہ کچھ برسوں میں تیل کی طلب میں اضافے کا امکان ہے۔ تنظیم کی جانب سے شائع کردہ رپورٹ کے مطابق تیل کی طلب میں یومیہ 17 لاکھ بیرل کا اضافہ متوقع ہے، جو 2023 تک 10 کروڑ 66 لاکھ تک بھی جا سکتا ہے۔

تنظیم کے سیکرٹری جنرل محمد بارکندو کے مطابق 2021 میں توانائی اور تیل کے طلب میں 2020 میں اچانک ہونے والی گراوٹ کے بعد اضافہ ہوا ہے، اور انکے اندازے کے مطابق طلب میں اضافے کا یہ سلسلہ لمبا عرصہ چلے گا۔

تنظیم کے اعدادوشمار کے مطابق اضافے کے اس رحجان کے باوجود 2030 میں تیل کی یومیہ طلب 2007 میں دیے گئے اندازے سے 6 لاکھ بیرل کم ہو گی۔ جس کی وجہ کاروں اور دیگر آسائش زندگی کا بجلی اور دیگر ذرائع توانائی پہ منتقل ہو جانا ہو گا، اوپیک کے مطابق تیل کی طلب 2035 تک اپنے مکمل عروج پر پہنچے گی اور پھر یہ کچھ عرصہ مساوی رہے گی۔

اوپیک رپورٹ کے مطابق 2045 میں تیل کی طلب 2044 کی نسبت 9 لاکھ کم ہو کر 10 کروڑ 82 لاکھ بیرل یومیہ ہو جائے گی، لیکن پھر بھی یہ توانائی کا سب سے بڑا ذریعہ ہو گا۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us