Shadow
سرخیاں
پولینڈ: یوکرینی گندم کی درآمد پر کسانوں کا احتجاج، سرحد بند کر دیخود کشی کے لیے آن لائن سہولت، بین الاقوامی نیٹ ورک ملوث، صرف برطانیہ میں 130 افراد کی موت، چشم کشا انکشافاتپوپ فرانسس کی یک صنف سماج کے نظریہ پر سخت تنقید، دور جدید کا بدترین نظریہ قرار دے دیاصدر ایردوعان کا اقوام متحدہ جنرل اسمبلی میں رنگ برنگے بینروں پر اعتراض، ہم جنس پرستی سے مشابہہ قرار دے دیا، معاملہ سیکرٹری جنرل کے سامنے اٹھانے کا عندیامغرب روس کو شکست دینے کے خبط میں مبتلا ہے، یہ ان کے خود کے لیے بھی خطرناک ہے: جنرل اسمبلی اجلاس میں سرگئی لاوروو کا خطاباروناچل پردیش: 3 کھلاڑی چین اور ہندوستان کے مابین متنازعہ علاقے کی سیاست کا نشانہ بن گئے، ایشیائی کھیلوں کے مقابلے میں شامل نہ ہو سکےایشیا میں امن و استحکام کے لیے چین کا ایک اور بڑا قدم: شام کے ساتھ تذویراتی تعلقات کا اعلانامریکی تاریخ کی سب سے بڑی خفیہ و حساس دستاویزات کی چوری: انوکھے طریقے پر ادارے سر پکڑ کر بیٹھ گئےیورپی کمیشن صدر نے دوسری جنگ عظیم میں جاپان پر جوہری حملے کا ذمہ دار روس کو قرار دے دیااگر خطے میں کوئی بھی ملک جوہری قوت بنتا ہے تو سعودیہ بھی مجبور ہو گا کہ جوہری ہتھیار حاصل کرے: محمد بن سلمان

آئی بی ایم کو ایک لاکھ ملازمین کو برطرف کرنے کے معاملے پر مقدمات کا سامنا

معروف انفارمیشن ٹیکنالوجی کمپنی آئی بی ایم کوکم و بیش ایک لاکھ عمر رسیدہ افراد کو نوکری سے فارغ کر دیںے کے مقدمات کا سامنا ہےاس کی وجہ یہ بیان کی جاتی ہے کہ کمپنی ان کے پرانے نظریات اور جدید ٹیکنالوجی کے ساتھ نہ چل سکنے کے باعث نوجوان افراد کو نوکریاں دینا چاہتی ہے

آئی بی ایم جو انٹرنیشنل بزنس مشینز کارپوریشن کامخفف ہے ، کو متعدد ملازمین کی جانب سے قانونی چارہ جوئی کا سامنا کرنا پڑا ہے جس میں یہ الزام لگایا گیا ہے کہ اس نے بڑی عمر کے کارکنوں کے ساتھ امتیازی سلوک کیا ہے ، جس میں مین ہیٹن میں کلاس ایکشن کیس اور کیلیفورنیا ، پنسلوانیا اور ٹیکساس میں انفرادی طور پر شہری مقدمات شامل ہیں۔

مین ہٹن کے معاملے کے مطابق بلوم برگ کا کہنا ہے کہ کمپنی نے 2014 میں ملازمین کی چھانٹی کرنا شروع کردی تھی۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

nineteen − two =

Contact Us