منگل, دسمبر 7 Live
Shadow
سرخیاں
امریکی سی آئی اے اہلکاروں کے ایک بار پھر کم عمر بچوں بچیوں کے ساتھ جنسی جرائم میں ملوث ہونے کا انکشافامریکہ کا مشرقی افریقہ میں تاریخ کے سب سے بڑے فوجی آپریشن کا اعلان: 1 ہزار سے زائد مزید کمانڈو تیارروسی صدر کی ثالثی: آزربائیجان اور آرمینیا کے مابین سرحدی جھڑپیں ختم، سرحدی حدود کے تعین پر اتفاق، جنگ سے متاثر آبادی اور دیگر انسانی حقوق کے تحفظ کی بھی یقین دہانینائیجیر: فرانسیسی فوج کی فائرنگ سے 2 شہری شہید، 16 زخمیامریکی فوج میں ہر 4 میں سے 1 عورت اور 5 میں سے 1 مرد جنسی زیادتی کا نشانہ بنتا ہے، بیشتر خود کشی کر لیتے، کورٹ مارشل کے خوف سے کوئی آواز نہیں اٹھاتا: سابقہ اہلکارروس کا غیر ملکی سماجی میڈیا کمپنیوں پر ملک میں کاروباری اندراج کے لیے دباؤ جاری: رواں سال کے آخر تک عمل نہ ہونے پر پابندی لگانے کا عندیاامریکہ ہائپر سونک ٹیکنالوجی میں چین اور روس سے بہت پیچھے ہے: امریکی جنرل تھامپسنامریکی تفریحی میڈیا صنعت کس عقیدے، نظریے اور مقصد کے تحت کام کرتی ہے؟چوالیس فیصد امریکی اولاد پیدا کرنے کی خواہش نہیں رکھتے: پیو سروے رپورٹچینی کمپنی ژپینگ نے جدید ترین برقی کار جی-9 متعارف کر دی: بیٹری کے معیار اور رفتار میں ٹیسلا کو بھی پیچھے چھوڑ دیا

خلیج تعاون کونسل: ایران پر اسلحے کی پابندی میں توسیع کا مطالبہ

عرب ممالک کی تنظیم خلیج تعاون کونسل نے اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا ہے کہ خطے میں پائیدار امن اور استحکام کے لیے ایران پر عائد اسلحے کی پابندی میں مزید توسیع کی جائے۔

عرب ذرائع ابلاغ کے مطابق چھ خلیجی عرب ممالک کی تنظیم نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کو ایک خط میں لکھا ہے کہ ایران پر اسلحہ کی پابندی میں مزید توسیع کی جائے تاکہ خطے میں اسکی شر پسند کارروائیوں کو روکا جا سکے۔ یہ خط اس وقت لکھا گیا ہے جب ایران پر اسلحے کی پابندی کی مدت کے خاتمے میں صرف دو ماہ رہ گئے ہیں۔

خلیجی ممالک نے اپنے خط میں کہا ہے کہ ایران لبنان اور حزب اللہ کے جنگجوؤں کو اسلحہ فراہم کرتا ہے نیز شام، بحرین، کویت اور سعودی عرب میں دہشت گرد گروپوں کی پشت پناہی کر رہا ہے۔ ایران کے اس عمل میں ہمسائیہ ممالک میں غیر یقینی صورت حال اور امن عامہ کا مسئلہ پیدا ہوگیا ہے۔

چھ خلیج ممالک بحرین، کویت، عمان، قطر، سعودی اور متحدہ عرب امارات پر مشتمل تنظیم ’’جی سی سی‘‘ یعنی  گلف کوآپریشن کونسل ایران کی ہمسائیہ ممالک میں مسلح مداخلت اور بے امنی پھیلانے پر شدید نالاں ہے اور اسے روکنے کے لیے ہر ممکن کارروائی کر رہی ہے۔

واضح رہے کہ عالمی سطح قوتوں اور اداروں کی جانب سے ایران پر عائد پابندیوں کی وجہ سے ایران غیر ملکی ساختہ ہتھیار، جہاز، ٹینک اور دیگر جنگی ساز و سامان نہیں خرید سکتا۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us