بدھ, جولائی 28 Live
Shadow
سرخیاں
انٹرپول کی 47 ممالک میں بڑی کارروائی: انسانی تجارت، منشیات اور جسم فروشی کے لیے لڑکیوں کو بیچنے والے 286 افراد گرفتار، 430 افراد بازیابلبنان میں سیاسی بحران و معاشی بدحالی: ارب پتی کاروباری شخصیت اور سابق وزیراعظم نجیب میقاطی حکومت بنانے میں کامیاب، فرانسیسی منصوبے کے تحت ملک کو معاشی بدحالی سے نکالنے کا اعلانجنگی جہازوں کی دنیا میں جمہوری انقلاب: روس نے من چاہی خوبیوں کے مطابق جدید ترین جنگی جہاز تیار کرنے کی صلاحیت کا اعلان کر دیا، چیک میٹ نامی جہاز ماکس-2021 نمائش میں پیشکیوبا میں کورونا اور تالہ بندی کے باعث معاشی حالات کشیدہ: روس کا خوراک، ماسک اور ادویات کا بڑا عطیہ، پریشان شہریوں کے انتظامیہ اور امریکی پابندیوں کے خلاف بڑے مظاہرےچینی معاملات میں بیرونی مداخلت ایسے ہی ہے جیسے چیونٹی کی تناور درخت کو گرانے کی کوشش: چین نے سابق امریکی وزیر تجارت سمیت 6 افراد پر جوابی پابندیاں عائد کر دیںمغربی یورپ میں کورونا ویکسین کی لازمیت کے خلاف بڑے مظاہرے، پولیس کا تشدد، پیرس و لندن میدان جنگ بن گئے: مقررین نے ویکسین کو شیطانی ہتھیار قرار دے دیا – ویڈیوجرمنی: پولیس نے بچوں اور جانوروں سے جنسی زیادتی کی ویڈیو آن لائن پھیلانے والے 1600 افراد کا جال پکڑ لیا، مجرمانہ مواد کی تشہیر کیلئے بچوں کے استعمال کا بھی انکشافگوشت کا تبادلہصدر بائیڈن افغانستان سے انخلا پر میڈیا کے کڑے سوالوں کا شکار: کہا، امارات اسلامیہ افغانستان ۱ طاقت ضرور ہے لیکن ۳ لاکھ غنی افواج کو حاصل مدد کے جواب میں طالبان کچھ نہیں، تعاون جاری رکھا جائے گاامریکہ، برطانیہ اور ترکی کا مختلف وجوہات کے بہانے کابل میں 1000 سے زائد فوجی تعینات رکھنے کا عندیا: امارات اسلامیہ افغانستان کی معاہدے کی خلاف ورزی پر نتائج کی دھمکی

ارطعرل ڈرامہ ترک حکومت کی مدد سے بنا، عمران خان اعانت کریں، بہتر کام ہو سکتا: ہمایوں سعید

اداکارو پروڈیوسر ہمایوں سعید کا کہنا ہے کہ اگر پاکستانی حکومت مالی طور پر صنعت کی مدد کرے تو ہم بھی ’’ارطعرل‘‘ جیسا ڈرامہ بنا سکتے ہیں۔

ہمایوں سعید کی ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہورہی ہے جس میں وہ ایک نجی چینل کے میزبان سے ڈرامہ سیریل ’’ارطعرل غازی‘‘ کے بارے میں بات کرتے ہوئے نظر آرہے ہیں۔ میزبان نے ہمایوں سعید سے پوچھا کہ ’’ارطعرل‘‘ ڈرامہ جس طرح سے پاکستان میں پسند کیا گیا اس کے بعد کیا اب ہماری انڈسٹری بھی سوچ رہی ہے کہ اسلامی تاریخ پر اسی طرح کے مزید ڈرامے بنائے جائیں؟

جس پر ہمایوں سعید نے کہا ہماری صنعت میں ’’ارطعرل‘‘ جیسے ڈرامے بنانے کے بارے میں سوچ نہیں رہی، کیونکہ ڈرامے و فلموں کے لیے درکار پیسہ جہاں سے آتا ہے، مواد بھی ویسا ہی پیدا ہوتا ہے۔ البتہ عوامی پسند کو مد نظر رکھتے ہوئے سوچنا چاہئے اور ہمیں اب بھی ماضی کی طرح اسلامی تہذیبی ڈرامے بنانے چاہیے۔ پاکستان نے اسلامی تاریخ پر مبنی ’’ٹیپو سلطان‘‘، ’’بابر‘‘ اور ’’محمد بن قاسم‘‘ جیسے اچھے ڈرامے بنائے ہیں، تاہم انہیں بنے ہوئے 30 ، 40 سال گزر گئے ہیں، لوگوں میں انکی طلب قدرتی ہے۔ لوگوں کو موجودہ تکنیکی معیار کے ساتھ ڈراموں میں دلچسپی ہے جس میں درکار لاگت کے لیے حکومتی مدد درکار ہو گی، اور اگر حکومت واقع اس میں دلچسپی رکھتی ہے تو ڈرامہ صنعت کی مالی اعانت کرے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us