منگل, مئی 18 Live
Shadow
سرخیاں
فوج میں بڑھتے مارکسی نظریات پر تنقید: امریکی خلائی فوج کا کمانڈو برطرف، انتظامی کارروائی کا آغازمقبوضہ فلسطین: بے بس فلسطینیوں کی جانب سے قابض صیہونی افواج پر گاڑی چڑھا کر حملہ کرنے کے واقعات میں اضافہ، درجنوں قابض فوجی زخمی، 3 فلسطینی شہیدفرانس میں جرنیلوں کے بعد پولیس افسران کا خط بھی تشویش سے بھرا خط سامنے آگیا: ملک میں بڑھتی انتظامی ناکامی پر سیاسی حلقے پریشانچین سے معاشی میدان میں مقابلے میں ناکامی پر مغرب میں ایشیائی ملک کے خلاف پراپیگنڈا تیزغزہ میں بین الاقوامی نشریاتی اداروں کے زیر استعمال عمارت پر بمباری: اے پی، الجزیرہ سمیت دنیا بھر سے مذمت، تحقیقات کا مطالبہامریکہ میں انوکھا عوامی سروے: کیا آپ شیر، ریچھ اور مگرمچھ سے مقابلے میں جیت سکتے ہیں؟ایران: سابق صدر احمدی نژاد نے بھی آئندہ صدارتی دوڑ کے لیے کاغذات نامزدگی جمع کروا دیےغلطیاں اور سبقمیرا کشمیر شبِ تاریک کے مشعل بردار سے محروم کر دیا گیاپاکستان سمیت دنیا بھر میں فلسطینیوں کے حق میں مظاہرے: یورپ میں صیہونی لابی کے زیر اثر گروہوں کے ساتھ جھڑپیں اور پولیس تشدد کے واقعات بھی درج – ویڈیو

ارطعرل ڈرامہ ترک حکومت کی مدد سے بنا، عمران خان اعانت کریں، بہتر کام ہو سکتا: ہمایوں سعید

اداکارو پروڈیوسر ہمایوں سعید کا کہنا ہے کہ اگر پاکستانی حکومت مالی طور پر صنعت کی مدد کرے تو ہم بھی ’’ارطعرل‘‘ جیسا ڈرامہ بنا سکتے ہیں۔

ہمایوں سعید کی ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہورہی ہے جس میں وہ ایک نجی چینل کے میزبان سے ڈرامہ سیریل ’’ارطعرل غازی‘‘ کے بارے میں بات کرتے ہوئے نظر آرہے ہیں۔ میزبان نے ہمایوں سعید سے پوچھا کہ ’’ارطعرل‘‘ ڈرامہ جس طرح سے پاکستان میں پسند کیا گیا اس کے بعد کیا اب ہماری انڈسٹری بھی سوچ رہی ہے کہ اسلامی تاریخ پر اسی طرح کے مزید ڈرامے بنائے جائیں؟

جس پر ہمایوں سعید نے کہا ہماری صنعت میں ’’ارطعرل‘‘ جیسے ڈرامے بنانے کے بارے میں سوچ نہیں رہی، کیونکہ ڈرامے و فلموں کے لیے درکار پیسہ جہاں سے آتا ہے، مواد بھی ویسا ہی پیدا ہوتا ہے۔ البتہ عوامی پسند کو مد نظر رکھتے ہوئے سوچنا چاہئے اور ہمیں اب بھی ماضی کی طرح اسلامی تہذیبی ڈرامے بنانے چاہیے۔ پاکستان نے اسلامی تاریخ پر مبنی ’’ٹیپو سلطان‘‘، ’’بابر‘‘ اور ’’محمد بن قاسم‘‘ جیسے اچھے ڈرامے بنائے ہیں، تاہم انہیں بنے ہوئے 30 ، 40 سال گزر گئے ہیں، لوگوں میں انکی طلب قدرتی ہے۔ لوگوں کو موجودہ تکنیکی معیار کے ساتھ ڈراموں میں دلچسپی ہے جس میں درکار لاگت کے لیے حکومتی مدد درکار ہو گی، اور اگر حکومت واقع اس میں دلچسپی رکھتی ہے تو ڈرامہ صنعت کی مالی اعانت کرے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us