اتوار, April 10 Live
Shadow
سرخیاں
افغانستان میں امریکی فوج کی جانب سے تشدد کی تربیت کے لیے بلوچی قیدی کو استعمال کرنے کا انکشافہندوستانی میزائل کا مبینہ غلطی سے پاکستانی حدود میں گرنے کا واقعہ: امریکہ کی طرف سے متعصب جبکہ چین کی جانب سے نصیحت آمیز ردعملمیٹا آسٹریلوی سیاستدانوں کو سائبر حملوں اور جھوٹی خبروں سے بچنے کی تربیت دے گییوکرین: مغربی ممالک سے آئے 180 سے زائد جنگجو ہوائی حملے میں ہلاک، روس کی مغربی ممالک کو تنبیہ، سب نشانے پر ہیں، چُن چُن کر ماریں گےاسرائیل پر تاریخ کا بڑا سائبر حملہ: وزیراعظم، وزارت داخلہ اور وزارت صیہونی بہبود کی ویب سائٹیں ہیک اور تلفروس اور یوکرین کے مابین جلد امن معاہدہ طے پا جائے گا: روسی مذاکرات کاریوکرینی مہاجرین کی تعداد 50 لاکھ سے بڑھ گئی: اقوام متحدہفیس بک اور انسٹاگرام کی شدید متعصب پالیسی کا اعلان: روسی صدر اور فوج کیخلاف نفرت اور موت کے پیغامات شائع کرنے کی اجازت، نتیجتاً مغربی ممالک میں آرتھوڈاکس کلیساؤں اور روسی کاروباروں پر حملوں کی خبریںترکی کا بھی روس کے ساتھ مقامی پیسے میں تجارت کرنے کا اعلانمغرب کے دوہرے معیار: دنیا پر روس سے تجارت پر پابندیاں، برطانیہ سمیت بیشتر مغربی ممالک روس سے گیس و تیل کی خریداری جاری رکھیں گے

فلسطین پر صہیونی قبضے کے حامی صحافیوں کی فہرست: عرب دنیا میں نئی بحث چھڑ گئی

قطری خبر رساں ادارے الجزیرہ کے سابق عرب سربراہ یاسر ابو ھلالہ نے ٹویٹر سے درخواست کی ہے کہ ایسے عرب صحافیوں کی فہرست بنانے میں انکی مدد کرے جو اس چیز کے حامی ہیں کہ عرب ممالک کو صہیونی قبضے کو تسلیم کر لینا چاہیے، اور اس حوالے سے رائے عامہ ہموار کررہے ہیں۔

یاسر ابوھلالہ کے پیغام پر مختلف عرب خبر رساں اداروں نے شدید ردعمل دیا ہے، جس پر یاسر کا کہنا تھا کہ میں نے شرمندہ لوگوں کی فہرست کا ہرگز نہیں کہا جس پر کچھ لوگ لوگ تلملا اٹھے ہیں، بلکہ ان صحافیوں کو تو خوش ہونا چاہیے، اور ان کی اماراتی پریس کلب میں خوب ستائش بھی ہونی چاہیے۔

ابوھلالہ نے چند روز قبل اپنے ٹویٹر کھاتے سے پیغام میں کہا کہ اردن، سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات سے اس سلسلے کا آغاز کرتے ہیں اور تعلقات کو ہموار کرنے کے حامیوں کی فہرست (ناملائزرلسٹ) بناتے ہیں، تاکہ عرب نوجوان ٹویٹر پر انہیں جان سکیں اپنا ردعمل دے سکیں۔

عرب صحافی کا کہنا تھا کہ فلسطین پر صہیونی قبضے کو قبول کرنا فلسطینیوں پر پیچھے سے حملے کے مترادف ہے، اور برملا اسکی مخالفت کرتے ہیں۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us