اتوار, April 10 Live
Shadow
سرخیاں
افغانستان میں امریکی فوج کی جانب سے تشدد کی تربیت کے لیے بلوچی قیدی کو استعمال کرنے کا انکشافہندوستانی میزائل کا مبینہ غلطی سے پاکستانی حدود میں گرنے کا واقعہ: امریکہ کی طرف سے متعصب جبکہ چین کی جانب سے نصیحت آمیز ردعملمیٹا آسٹریلوی سیاستدانوں کو سائبر حملوں اور جھوٹی خبروں سے بچنے کی تربیت دے گییوکرین: مغربی ممالک سے آئے 180 سے زائد جنگجو ہوائی حملے میں ہلاک، روس کی مغربی ممالک کو تنبیہ، سب نشانے پر ہیں، چُن چُن کر ماریں گےاسرائیل پر تاریخ کا بڑا سائبر حملہ: وزیراعظم، وزارت داخلہ اور وزارت صیہونی بہبود کی ویب سائٹیں ہیک اور تلفروس اور یوکرین کے مابین جلد امن معاہدہ طے پا جائے گا: روسی مذاکرات کاریوکرینی مہاجرین کی تعداد 50 لاکھ سے بڑھ گئی: اقوام متحدہفیس بک اور انسٹاگرام کی شدید متعصب پالیسی کا اعلان: روسی صدر اور فوج کیخلاف نفرت اور موت کے پیغامات شائع کرنے کی اجازت، نتیجتاً مغربی ممالک میں آرتھوڈاکس کلیساؤں اور روسی کاروباروں پر حملوں کی خبریںترکی کا بھی روس کے ساتھ مقامی پیسے میں تجارت کرنے کا اعلانمغرب کے دوہرے معیار: دنیا پر روس سے تجارت پر پابندیاں، برطانیہ سمیت بیشتر مغربی ممالک روس سے گیس و تیل کی خریداری جاری رکھیں گے

ہم اسلامی نظریات کے خلاف حالت جنگ میں ہیں، مزید حملے ہو سکتے ہیں: فرانسیسی وزیر داخلہ کا نفرت سے بھرا ریڈیو خطاب

فرانسیسی وزیر داخلہ نے اسلام اور مسلمانوں کے خلاف نفرت کے پرچار کے سلسلے کو جاری رکھتے ہوئے اور عوام کو خوف میں مبتلا کرتے ہوئے کہا ہے کہ انکا ملک اسلام کے ساتھ حالت جنگ میں ہے، اسلامی دہشت گردوں کی جانب سے مزید حملے ہو سکتے ہیں، شہری متنبہ رہیں۔

وزیر داخلہ گیرالڈ درمینین نے مزید کہا ہے کہ انہیں ایسے دشمن کا سامنا ہے جو انکے اندر بھی موجود ہے اور باہر بھی، انہیں اسلامی نظریاست سے نمٹنے کے لیے نئی اور بہترحکمت عملی کی ضرورت ہے۔ اپنے ریڈیو خطاب میں فرانسیسی اعلیٰ عہدے دار کا کہنا تھا کہ جیسے حملے گزشتہ کچھ دنوں سے ہو رہے ہیں، ان میں مزید اضافہ ہو سکتا ہے، تاہم حکومت نے عوامی مقامات پر 4000 عسکری اہلکاروں کو تعینات کر دیا ہے، عوام بھی متنبہ رہے۔

فرانسیسی وزیر داخلہ نے مزید کہا کہ اسلامی نظریات کی فرانس میں کوئی جگہ نہیں، اسکے بڑھتے ہوئے پھیلاؤ کو روکنا ہو گا، اسلام کو لبرل نظریات کے ساتھ رہنا سیکھنا ہو گا۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us