پیر, جون 14 Live
Shadow
سرخیاں
ترکی: 20 ٹن سونا اور 5 ٹن چاندی کا نیا ذخیرہ دریافت، ملکی سالانہ پیداوار 42 ٹن کا درجہ پار کر گئی، 5 برسوں میں 100 ٹن تک لے جانے کا ارادہحکومت پنجاب کا ویکسین نہ لگوانے والوں کے موبائل سم کارڈ معطل کرنے کی پالیسی لانے کا فیصلہموساد کے سابق سربراہ کا ایرانی جوہری سائنسدان اور مرکز پر سائبر حملے کا اعترافی اشارہ: ایرانی سائنسدانوں کو منصوبہ چھوڑنے پر معاونت کی پیشکش کر دییورپی اشرافیہ و ابلاغی اداروں کے برعکس شہریوں کی نمایاں تعداد نے روس کو اہم تہذیبی شراکت دار و اتحادی قرار دے دیاروسی بحریہ نے سٹیلتھ ٹیکنالوجی سے لیس جدید ترین بحری جہاز کا مکمل نمونہ تیار کر لیا: مکمل جہاز آئندہ سال فوج کے حوالے کر دیا جائےگاٹویٹر کو نائیجیریا میں دوبارہ بحالی کیلئے مقامی ابلاغی اداروں کی طرح لائسنس لینا ہو گا، اندراج کروانا ہو گا: افریقی ملک کا امریکی سماجی میڈیا کمپنی کو دو ٹوک جواب، صدر ٹرمپ کی جانب سے پابندی پر ستائش کا بیانکاراباخ آزادی جنگ: جنگی قیدی چھڑوانے کے لیے آرمینی وزیراعظم کی آزربائیجان کو بیٹے کی حوالگی کی پیشکشمجھ پر حملے سائنس پر حملے ہیں: متنازعہ امریکی مشیر صحت ڈاکٹر فاؤچی کا اپنے دفاع میں نیا متنازعہ بیان، وباء سے شدید متاثر امریکیوں کے غصے میں مزید اضافہچین 3 سال کے بچوں کو بھی کووڈ-19 ویکسین لگانے والا دنیا کا پہلا ملک بن گیاایرانی رویہ جوہری معاہدے کی بحالی میں تعطل کا باعث بن سکتا ہے: امریکی وزیر خارجہ بلنکن

ویتنام اور سویزرلینڈ ڈالر پر اثرانداز ہورہے ہیں: امریکی محکمہ خزانہ نے ہندوستان، چین اور تھائی لینڈ کو بھی تنبیہ جاری کر دی

امریکی محکمہ خزانہ نے ویتنام اور سویزرلینڈ پر الزام لگایا ہے کہ وہ ڈالر پر اثرانداز ہو رہے ہیں۔ محکمے نے امریکی معاشی تحفظ کو یقینی بنانے کے لیے مزید ممالک کو بھی تنبیہ جاری کی ہے، ان ممالک میں ہندوستان، چین اور تھائی لینڈ شامل ہیں۔

وزارت خزانہ کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ امریکی مزدوروں اور کمپنیوں کی معاشی ترقی اور تحفظ کو یقینی بنانے کے لیے اقدام ناگریز تھا، ڈالر میں تجارت کرنے والے ممالک کو معاہدوں کی پاسداری کرنا ہو گی، کسی بیرونی اثرورسوخ کو برداشت نہیں کیا جائے گا، رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ محکمہ خزانہ ویتنام اور سویزرلینڈ سمیت تمام ممالک پر نظر رکھے گا اور ایسی تمام حرکات کو ختم کروائے گا جن سے امریکی معیشت کا فائدہ غیر ملکی کمپنیوں کو پہنچے۔

واضح رہے کہ ڈالر پر اثرانداز ہونے کا اندازہ امریکہ تین عوامل سے کرتا ہے۔ اگر کسی ملک کا امریکہ سے تجارت کے حجم میں فرق 20 ارب ڈالر سے زائد کا ہو تو اسے زیر نظر رکھا جاتا ہے، یوں اگر کسی ملک کے کرنٹ اکاؤنٹ میں مالیت اسکی ملکی پیداوارکی نسبت دو فیصد سے زائد ہو جائے تو بھی متعلقہ ملک کو مشکوک سمجھا جاتا ہے، اور اگر کوئی ملک اپنی ملکی پیداوار کی نسبت دو فیصد سے بڑھ کر نقدی کا تبادلہ کرنے لگے تو بھی اسے ڈالر پر اثر انداز ہونے کی کوشش سمجھا جاتا ہے۔

اس معیار پر سویزرلینڈ اور ویتنام دونوں پورا اترے ہیں، یہی وجہ ہے کہ انہیں تنبیہ جاری کر دی گئی ہے۔ ویتنام کا تجارتی فرق 57 ارب ڈالر سے بھی زائد کا ہے، جس پر ویتنام پر اپنے روپے کی قدر کو جان بوجھ کر وقعت سے نیچے رکھنے کا الزام ہے، تاکہ اسی برآمدات میں اضافہ ہو، جبکہ سویزرلینڈ نے الزامات کی تردید کی ہے۔

چین کو گزشتہ سال آگست میں زیر معائنہ فہرست میں شامل کیا گیا تھا اور ایشیائی ملک اب بھی فہرست میں شامل ہے، چہن کے خلاف کسی قسم کے اقدامات نہیں کیے گئے ہیں۔

ہندوستان کو بھی پچھلے سال تنبیہ جاری ہوئی تھی، تاہم رواں سال اسے خطرے والی فہرست سے نکال کر زیر معائنہ فہرست میں شامل کردیا گیا ہے۔ ہندوستانی حکومت پر الزام تھا کہ یہ روپے کی لین دین پر اثرانداز ہوتی ہے اور سرمایہ کاروں کے لیے آسانیاں پیدا کرنے میں ناکام ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us