ہفتہ, جنوری 15 Live
Shadow
سرخیاں
قازقستان ہنگامے: مشترکہ تحفظ تنظیم کے سربراہ کا صورتحال پر قابو کا اعلان، امن منصوبے کی تفصیلات پیش کر دیںبرطانوی پارلیمنٹ میں منشیات کا استعمال: اسپیکر کا سونگھنے والے کتے بھرتی کرنے کا عندیاامریکی سی آئی اے اہلکاروں کے ایک بار پھر کم عمر بچوں بچیوں کے ساتھ جنسی جرائم میں ملوث ہونے کا انکشافامریکہ کا مشرقی افریقہ میں تاریخ کے سب سے بڑے فوجی آپریشن کا اعلان: 1 ہزار سے زائد مزید کمانڈو تیارروسی صدر کی ثالثی: آزربائیجان اور آرمینیا کے مابین سرحدی جھڑپیں ختم، سرحدی حدود کے تعین پر اتفاق، جنگ سے متاثر آبادی اور دیگر انسانی حقوق کے تحفظ کی بھی یقین دہانینائیجیر: فرانسیسی فوج کی فائرنگ سے 2 شہری شہید، 16 زخمیامریکی فوج میں ہر 4 میں سے 1 عورت اور 5 میں سے 1 مرد جنسی زیادتی کا نشانہ بنتا ہے، بیشتر خود کشی کر لیتے، کورٹ مارشل کے خوف سے کوئی آواز نہیں اٹھاتا: سابقہ اہلکارروس کا غیر ملکی سماجی میڈیا کمپنیوں پر ملک میں کاروباری اندراج کے لیے دباؤ جاری: رواں سال کے آخر تک عمل نہ ہونے پر پابندی لگانے کا عندیاامریکہ ہائپر سونک ٹیکنالوجی میں چین اور روس سے بہت پیچھے ہے: امریکی جنرل تھامپسنامریکی تفریحی میڈیا صنعت کس عقیدے، نظریے اور مقصد کے تحت کام کرتی ہے؟

امریکی سپریم کورٹ نے صدر ٹرمپ کی انتخابی نتائج کالعدم قرار دینے کی آخری درخواست بھی مسترد کر دی

سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ 2020 کے صدارتی انتخابات کو کالعدم قرار دلوانے کی آخری کوشش میں بھی ناکام ٹھہرے ہیں۔ امریکی سپریم کورٹ نے انکے وسکونسن میں انتخابی عمل پر اعتراضات کو مسترد کرتے ہوئے درخواست کو رد کر دی ہے۔

سابق امریکی صدر نے درخواست میں مؤقف اختیار کیا ہے کہ انتخابی عمل میں آئین اور ریاستی قانون کو توڑا گیا اور ڈاک کے ذریعے ووٹ ڈالنے کی مقررہ مدت کے بعد بھی ووٹوں کو قبول کیا گیا، درخواست میں اس کے علاوہ دیگر بے ضابطگیوں پر بھی سوالات اٹھائے گئے تھے تاہم سپریم کورٹ نے درخواست مسترد کر دی ہے۔

واضح رہے کہ صدر ٹرمپ کی قانونی ٹیم نے انتخابی نتائج کے خلاف عدالتوں میں درجنوں مقدمات دائر کیے، جن میں مختلف اعتراضات اٹھائے گئے تھے تاہم سابق صدر کو ان سے کوئی خاطر خواہ فائدہ حاصل نہ ہو سکا، بلکہ اکثر درخواستوں کو اعلیٰ عدالتوں نے بلا سنوائی ہی رد کر دیا۔

واضح رہے کہ درخواست پر ججوں نے کوئی تبصرہ نہیں دیا ہے اور نہ ہی اس حوالے سے کوئی وضاحت شائع کی گئی ہے۔ سپریم کورٹ نے ایسا ہی رویہ گزشتہ ماہ پنسلوینیا کے حوالے سے دائر درخواست پر بھی اپنایا تھا۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us