ہفتہ, April 9 Live
Shadow
سرخیاں
افغانستان میں امریکی فوج کی جانب سے تشدد کی تربیت کے لیے بلوچی قیدی کو استعمال کرنے کا انکشافہندوستانی میزائل کا مبینہ غلطی سے پاکستانی حدود میں گرنے کا واقعہ: امریکہ کی طرف سے متعصب جبکہ چین کی جانب سے نصیحت آمیز ردعملمیٹا آسٹریلوی سیاستدانوں کو سائبر حملوں اور جھوٹی خبروں سے بچنے کی تربیت دے گییوکرین: مغربی ممالک سے آئے 180 سے زائد جنگجو ہوائی حملے میں ہلاک، روس کی مغربی ممالک کو تنبیہ، سب نشانے پر ہیں، چُن چُن کر ماریں گےاسرائیل پر تاریخ کا بڑا سائبر حملہ: وزیراعظم، وزارت داخلہ اور وزارت صیہونی بہبود کی ویب سائٹیں ہیک اور تلفروس اور یوکرین کے مابین جلد امن معاہدہ طے پا جائے گا: روسی مذاکرات کاریوکرینی مہاجرین کی تعداد 50 لاکھ سے بڑھ گئی: اقوام متحدہفیس بک اور انسٹاگرام کی شدید متعصب پالیسی کا اعلان: روسی صدر اور فوج کیخلاف نفرت اور موت کے پیغامات شائع کرنے کی اجازت، نتیجتاً مغربی ممالک میں آرتھوڈاکس کلیساؤں اور روسی کاروباروں پر حملوں کی خبریںترکی کا بھی روس کے ساتھ مقامی پیسے میں تجارت کرنے کا اعلانمغرب کے دوہرے معیار: دنیا پر روس سے تجارت پر پابندیاں، برطانیہ سمیت بیشتر مغربی ممالک روس سے گیس و تیل کی خریداری جاری رکھیں گے

عالمی فوجداری عدالت کا فلسطینیوں کے خلاف روا جرائم کی تحقیقات کا حکم: وکیل سے ملاقات پر قابض صیہونی انتظامیہ برہم، فلسطینی وزیر خارجہ کو دھر لیا، سفری دستاویزات چھین لیے

فلسطین پر قابض صیہونی انتظامیہ نے فلسطینی وزیر خارجہ ریاض المالکی کو عالمی فوجداری عدالت میں ایک اہم ملاقات سے واپسی پر زبردستی دھر لیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق صیہونی انتظامیہ نے فلسطینی وزیر خارجہ کو مغربی کنارے جاتے ہوئے روکا، پوچھ تاچھ کی اور انکا مقبوضہ علاقے کا راہگیری ویزہ بھی منسوخ کر دیا۔

فلسطینی حکام کے مطابق قابض صیہونی انتظامیہ کے حساس اداروں نے آدھے گھنٹے تک وزیر خارجہ سے سوال جواب کیے اور انکے ساتھ شریک سفر افراد سے بھی لمبی پوچھ تاچھ کی گئی۔

اطلاعات کے مطابق علاقائی ممالک کی جانب سے تشویش پر صیہونی انتظامیہ نے وزیر خارجہ کو چھوڑ دیا ہے تاہم انکا مقبوضہ علاقوں سے آزادانہ گزرنے کا خصوصی اجازت نامہ ان سے چھین لیا گیا ہے، واضح رہے کہ تاحال قابض انتظامیہ نے کچھ نہیں بتایا کہ آیا اجازت نامہ واپس ملے گا یا نہیں۔

صیہونی انتظامیہ نے تمام کارروائی کی کوئی باقائدہ وجہ بھی نہیں بتائی البتہ اخبارات نے عالمی فوجداری عدالت کے دورے اور وہاں صیہونی جرائم سے متعلق موضوعات پراہم ملاقاتوں کو سبب لکھا ہے۔

واضح رہے کہ ریاض المالکی نے یورپ کے ایک ہفتہ طویل دورے کے دوران عالمی فوجداری عدالت کی وکیل فاطو بینسودا سے ملاقاتیں کی ہیں، جن میں ممکنہ طور پر قابض صیہونی انتظامیہ کے فلسطینیوں کے خلاف 2014 سے روا رکھے جانے والے جرائم پر مقدمہ چلانے کے حوالے سے گفتگو ہوئی۔

فلسطینی وزیر خارجہ کے دفتر نے فوجداری عدالت کی وکیل سے ملاقات کے حوالے میڈیا کو بتایا ہے کہ ملاقاتوں میں فلسطینی علاقوں میں قابض صیہونی افواج کی جانب سے روا رکھے گئے مظالم اور جرائم کی تحقیقات کی اہمیت پر بات ہوئی اور انصاف دلانے سے فلسطینیوں کے عالمی نظام پر پیدا ہونے والے اعتماد پر بھی گفتگو ہوئی۔

واضح رہے کہ عالمی فوجداری عدالت نے گزشتہ جمعہ فلسطینی اور قابض صیہونی انتظامیہ کو عدالت میں پیش ہونے کے نوٹس بھی بھیج دیے ہیں اور دونوں اطراف کو جنگی جرائم پر تحقیقات کرنے کا حکم دیا ہے۔

عالمی عدالت کے فیصلے کو فلسطینی حکام نے خوش آئند قرار دیا ہے تاہم قابض صیہونی انتظامیہ اس پر بہت سیخ پا ہے۔ قابض انتظامیہ کے سربراہ نیتن یاہو نے معاملے کو یہودیوں سے نفرت اور منافقت کی بہترین مثال قرار دیا ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us