ہفتہ, April 9 Live
Shadow
سرخیاں
افغانستان میں امریکی فوج کی جانب سے تشدد کی تربیت کے لیے بلوچی قیدی کو استعمال کرنے کا انکشافہندوستانی میزائل کا مبینہ غلطی سے پاکستانی حدود میں گرنے کا واقعہ: امریکہ کی طرف سے متعصب جبکہ چین کی جانب سے نصیحت آمیز ردعملمیٹا آسٹریلوی سیاستدانوں کو سائبر حملوں اور جھوٹی خبروں سے بچنے کی تربیت دے گییوکرین: مغربی ممالک سے آئے 180 سے زائد جنگجو ہوائی حملے میں ہلاک، روس کی مغربی ممالک کو تنبیہ، سب نشانے پر ہیں، چُن چُن کر ماریں گےاسرائیل پر تاریخ کا بڑا سائبر حملہ: وزیراعظم، وزارت داخلہ اور وزارت صیہونی بہبود کی ویب سائٹیں ہیک اور تلفروس اور یوکرین کے مابین جلد امن معاہدہ طے پا جائے گا: روسی مذاکرات کاریوکرینی مہاجرین کی تعداد 50 لاکھ سے بڑھ گئی: اقوام متحدہفیس بک اور انسٹاگرام کی شدید متعصب پالیسی کا اعلان: روسی صدر اور فوج کیخلاف نفرت اور موت کے پیغامات شائع کرنے کی اجازت، نتیجتاً مغربی ممالک میں آرتھوڈاکس کلیساؤں اور روسی کاروباروں پر حملوں کی خبریںترکی کا بھی روس کے ساتھ مقامی پیسے میں تجارت کرنے کا اعلانمغرب کے دوہرے معیار: دنیا پر روس سے تجارت پر پابندیاں، برطانیہ سمیت بیشتر مغربی ممالک روس سے گیس و تیل کی خریداری جاری رکھیں گے

فلپائن: شام میں فلپینی لڑکیوں کو بیچنے والے افسران کے خلاف تحقیقات کا آغاز

فلپائن میں وزارت داخلہ کے شعبہ برائے ہجرت کے افسران کے خلاف انسانی سمگلنگ کی تحقیقات شروع کر دی گئی ہیں، افسران پر الزام ہے کہ وہ جبری مشقت کے لیے لڑکیوں کو بیرون ملک بیچنے کے جرم میں شریک ہیں۔

تحقیقات کا آغاز سینٹ میں آئی ایک درخواست کے بعد شروع کیا گیا ہے، جس میں جوان لڑکیوں کو سیاحتی ویزے پر شام بھیجنے اور وہاں انہیں 10 ہزار ڈالر کے عوض بیچنے کا دعویٰ کیا گیا تھا۔

معاملے کی تحقیقات کی ذمہ داری سینٹر ریسا ہونتیویرس کو دی گئی ہے، جن کا دعویٰ ہے کہ انہوں نے ایسی تصاویر دیکھی ہیں جن میں لڑکیوں کو دمشق میں گندی اور تاریک جگہوں پر بیچنے سے پہلے رکھا جاتا ہے۔ سینٹر کا کہنا ہے کہ انہیں افسوس ہے کہ انکے اپنے افسر شہریوں کو بیچنے میں ملوث ہیں۔

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ شام میں فلپائن کے سفارت خانے میں متعدد فلپینی لڑکیوں نے پناہ لی تھی، جنہوں نے شامی گھروں پر کام کے دوران سخت مشقت اور تشدد کی شکایت کی تھی۔ سفارت خانے نے حکومتی حکم پر شہریوں کی واپسی کا بندوبست کی تھا تاہم معاملہ ابھرنے پر اسکی تحقیقات کا حکم دے دیا گیا ہے۔

شعبہ ہجرت کے سربراہ نے سینٹ تحقیقات میں مکمل تعاون کی یقین دہانی کروائی ہے اور معاملے میں ملوث تمام افسران کو سخت سزا دینے کا وعدہ کیا ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us