نیوکلیئر ڈیل توڑنے پر امریکہ کو انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے۔ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف

ایران کے وزیر خارجہ جواد ظریف نے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل سے مطالبہ کیا ہے کہ یک طرفہ طور پرنیوکلیئر ڈیل توڑنے پر امریکہ کو انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے۔ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف نے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتریس کو لکھے گئے خط میں کہا کہ لاقانونیت ساکھ کو متاثر اور عالمی امن و سلامتی کے لیے خطرہ بنتی ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ نیوکلیئر ڈیل کے حوالے سے امریکہ کی جانب سے دیگر رکن ممالک پر دباؤ کا بھی نوٹس لیا جائے۔

واضح رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے مئی 2018 میں ایران کے ساتھ کیے جانے والے جوہری معاہدے سے دستبردار ہونے کا اعلان کیا تھا جبکہ یورپی یونین نے معاہدے کی پاسداری کرنے کا اعلان کیا تھا۔ امریکہ کی طرف سے معاہدے کے توڑے جانے کے اعلان کے بعد ایران کے صدر حسن روحانی نے امریکہ کے بغیر جوہری توانائی کے معاہدے کو جاری رکھنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ امریکہ کبھی بھی نیوکلیئر ڈیل سے مخلص نہیں تھا۔

ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف نے یورپی یونین کے امور خارجہ کے نمائندے کو بھی ٹیلی فون کر کے نیو کلیئر ڈیل کے معاملات اور امریکہ کے غیر ذمہ دارانہ رویے پر تبادلہ خیال کیا۔

Care to Share?

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

4 × 3 =