اتوار, April 10 Live
Shadow
سرخیاں
افغانستان میں امریکی فوج کی جانب سے تشدد کی تربیت کے لیے بلوچی قیدی کو استعمال کرنے کا انکشافہندوستانی میزائل کا مبینہ غلطی سے پاکستانی حدود میں گرنے کا واقعہ: امریکہ کی طرف سے متعصب جبکہ چین کی جانب سے نصیحت آمیز ردعملمیٹا آسٹریلوی سیاستدانوں کو سائبر حملوں اور جھوٹی خبروں سے بچنے کی تربیت دے گییوکرین: مغربی ممالک سے آئے 180 سے زائد جنگجو ہوائی حملے میں ہلاک، روس کی مغربی ممالک کو تنبیہ، سب نشانے پر ہیں، چُن چُن کر ماریں گےاسرائیل پر تاریخ کا بڑا سائبر حملہ: وزیراعظم، وزارت داخلہ اور وزارت صیہونی بہبود کی ویب سائٹیں ہیک اور تلفروس اور یوکرین کے مابین جلد امن معاہدہ طے پا جائے گا: روسی مذاکرات کاریوکرینی مہاجرین کی تعداد 50 لاکھ سے بڑھ گئی: اقوام متحدہفیس بک اور انسٹاگرام کی شدید متعصب پالیسی کا اعلان: روسی صدر اور فوج کیخلاف نفرت اور موت کے پیغامات شائع کرنے کی اجازت، نتیجتاً مغربی ممالک میں آرتھوڈاکس کلیساؤں اور روسی کاروباروں پر حملوں کی خبریںترکی کا بھی روس کے ساتھ مقامی پیسے میں تجارت کرنے کا اعلانمغرب کے دوہرے معیار: دنیا پر روس سے تجارت پر پابندیاں، برطانیہ سمیت بیشتر مغربی ممالک روس سے گیس و تیل کی خریداری جاری رکھیں گے

چین: مغربی ایماء پر کام کرنے اور دھوکہ دہی کے الزامات پر بڑی میڈیا کمپنی کا مالک گرفتار

ہانگ کانگ پولیس نے بروز سوموار ملک کے سب سے بڑے ذرائع ابلاغ گروپ کے مالک جمی لائے سمیت 10 افراد کو گرفتار کیا ہے۔ جمی لائے پر ملکی سلامتی کو خطرے میں ڈالنے، بیرونی ایجنڈے پر کام کرنے اور دھوکہ دہی کے الزامات درج ہیں۔ جمی لائے ہانگ کانگ مظاہروں کے دوران مظاہرین کی حمایت میں بھرپور میڈیا کوریج کرتے رہے ہیں۔

واقعے پر مغربی میڈیا کی جانب سے بھرپور تنقید کی جا رہی ہے جس پر چینی میڈیا گروپ گلوبل ٹائم نے تبصرے میں کہا ہے کہ چینی عوام مغربی حکومتوں کی دو رخی سے تنگ آچکی ہے، نیو یارک، پیرس اور لندن میں مظاہرے ہوں تو وہ فساد کہلاتے ہیں تاہم ہانگ کانگ اور دیگر ایشیائی ممالک میں مظاہرے جمہوری حق اور آزادی رائے گردانے جاتے ہیں۔ مغربی ممالک کو اپنی روش بدلنا ہو گی۔

معروف صحافی ہو شی جن کا کہنا ہے کہ جمی لائے کی گرفتاری اشارہ ہے کہ ہانگ کانگ حکومت نہ صرف اہم سیاسی قائدین پر لگنے والی حالیہ امریکی پابندیوں کا ردعمل دینا چاہتی ہے بلکہ وہ ہانگ کانگ میں غیر ملکی ایجنڈوں کے ذریعے مزید فساد کی اجازت بھی نہیں دے گی، جن میں جمی لائے سر فہرست تھے جو مسلسل ملکی سلامتی کے خلاف پراپیگنڈا کرتے پائے گئے۔

قانونی ماہرین کا کہنا ہے کہ جمی لائے کے رویے اور مظاہروں کے دوران کردار پر انہیں عمر قید تک کی سزا دی جا سکتی ہے۔

واضح رہے کہ ہانگ کانگ میں مسلسل ایک سال تک مظاہروں کی وجہ سے شہری زندگی اور ملکی معیشت بری طرح متاثر ہوئے تھے۔ جس پر چینی حکومت نے بالآخر قانون سازی کر کے معاملے سے سختی سے نمٹنے کی پالیسی اپنائی ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us