اتوار, نومبر 28 Live
Shadow
سرخیاں
نائیجیر: فرانسیسی فوج کی فائرنگ سے 2 شہری شہید، 16 زخمیامریکی فوج میں ہر 4 میں سے 1 عورت اور 5 میں سے 1 مرد جنسی زیادتی کا نشانہ بنتا ہے، بیشتر خود کشی کر لیتے، کورٹ مارشل کے خوف سے کوئی آواز نہیں اٹھاتا: سابقہ اہلکارروس کا غیر ملکی سماجی میڈیا کمپنیوں پر ملک میں کاروباری اندراج کے لیے دباؤ جاری: رواں سال کے آخر تک عمل نہ ہونے پر پابندی لگانے کا عندیاامریکہ ہائپر سونک ٹیکنالوجی میں چین اور روس سے بہت پیچھے ہے: امریکی جنرل تھامپسنامریکی تفریحی میڈیا صنعت کس عقیدے، نظریے اور مقصد کے تحت کام کرتی ہے؟چوالیس فیصد امریکی اولاد پیدا کرنے کی خواہش نہیں رکھتے: پیو سروے رپورٹچینی کمپنی ژپینگ نے جدید ترین برقی کار جی-9 متعارف کر دی: بیٹری کے معیار اور رفتار میں ٹیسلا کو بھی پیچھے چھوڑ دیاماحولیاتی تحفظ کی مہم کیوں ناکام ہے؟: کینیڈی پروفیسر نے امیر مغربی ممالک کو زمہ دار ٹھہرا دیااتحادیوں کو اکیلا نہیں چھوڑا جائے گا، تحفظ ہر صورت یقینی بنائیں گے: امریکی وزیردفاعروس اس وقت آزاد دنیا کا قائد ہے: روسی پادری اعظم کا عیسائی گھرانوں کی امریکہ سے روس منتقلی پر تبصرہ

نوازشریف کا مولانا فضل الرحمٰن سے رابطہ: حکومت کے خلاف تحریک میں بھرپور ساتھ کی یقین دہانی

سابق وزیراعظم نواز شریف نے جمعیت علمائے اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن کو حکومت کےخلاف مزاحمت میں بھرپور ساتھ دینے کی یقین دہانی کرائی ہے۔ پاکستانی ذرائع ابلاغ کے مطابق نواز شریف نے مولانا فضل الرحمان سے ٹیلی فون پر رابطہ کیا جس میں انہوں نے مولانا کے تحفظات دور کرنے کی کوشش کی۔

خبروں میں کہا جا رہا ہے کہ نواز شریف نے مولانا  فضل الرحمٰن سے کہا کہ حکومت کےساتھ بیٹھنا ہمارے مؤقف کی نفی ہے، مشترکہ حکمت عملی طے کریں گے اور آئندہ پہلے جیسی شکایت کا موقع نہیں ملے گا۔

واضح رہے کہ پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں بلوں کی منظوری کے دوران بڑی جماعتوں کے کردار سے جمعیت علمائے اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی سے سخت نالاں تھے اور انہوں نے حکومت کے خلاف اکیلے تحریک چلانے کی تیاریاں شروع کردی ہیں۔ اور اسی سلسلے میں مولانافضل الرحمٰن نے 7 ستمبر کو پشاور میں احتجاجی جلسے اور ریلی کی اعلان کیا ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us