اتوار, April 10 Live
Shadow
سرخیاں
افغانستان میں امریکی فوج کی جانب سے تشدد کی تربیت کے لیے بلوچی قیدی کو استعمال کرنے کا انکشافہندوستانی میزائل کا مبینہ غلطی سے پاکستانی حدود میں گرنے کا واقعہ: امریکہ کی طرف سے متعصب جبکہ چین کی جانب سے نصیحت آمیز ردعملمیٹا آسٹریلوی سیاستدانوں کو سائبر حملوں اور جھوٹی خبروں سے بچنے کی تربیت دے گییوکرین: مغربی ممالک سے آئے 180 سے زائد جنگجو ہوائی حملے میں ہلاک، روس کی مغربی ممالک کو تنبیہ، سب نشانے پر ہیں، چُن چُن کر ماریں گےاسرائیل پر تاریخ کا بڑا سائبر حملہ: وزیراعظم، وزارت داخلہ اور وزارت صیہونی بہبود کی ویب سائٹیں ہیک اور تلفروس اور یوکرین کے مابین جلد امن معاہدہ طے پا جائے گا: روسی مذاکرات کاریوکرینی مہاجرین کی تعداد 50 لاکھ سے بڑھ گئی: اقوام متحدہفیس بک اور انسٹاگرام کی شدید متعصب پالیسی کا اعلان: روسی صدر اور فوج کیخلاف نفرت اور موت کے پیغامات شائع کرنے کی اجازت، نتیجتاً مغربی ممالک میں آرتھوڈاکس کلیساؤں اور روسی کاروباروں پر حملوں کی خبریںترکی کا بھی روس کے ساتھ مقامی پیسے میں تجارت کرنے کا اعلانمغرب کے دوہرے معیار: دنیا پر روس سے تجارت پر پابندیاں، برطانیہ سمیت بیشتر مغربی ممالک روس سے گیس و تیل کی خریداری جاری رکھیں گے

امریکہ: ایف بی آئی نے بلیک لائف میٹر تحریک کے نام پر 7کروڑ کا دھوکہ کرنے والا دھر لیا

امریکی تفتیشی ادارے ایف بی آئی نے “بلیک لائف میٹر” تحریک کے نام پر چندہ اکٹھا کرنے اور دھوکہ دہی سے اسے نجی استعمال میں لانے والے ایک اور فراڈیے کو دھر لیا ہے۔

سر میجرپیج نامی ملزم بلیک لائف میٹر آف گریٹر اٹلانٹا نامی خیراتی ادارہ چلا رہا تھا، ادارے کا 2016 میں مقامی انتظامیہ کے پاس اندراج کروایا گیا۔ امریکی خبر رساں اداروں کے مطابق شروع میں پیج کو زیادہ امداد نہ ملی تاہم جارج فلائیڈ کی موت کے بعد اسے صرف 3 ماہ میں 4 لاکھ 66 ہزار ڈالر امداد دی گئی، جس میں سے اس نے بڑی قرم دھوکے سے تفریخی مقام پر اپنا گھر خریدنے، اور دیگر آسائشوں کے لیے استعمال کر لی۔

سات کروڑ بہتر لاکھ روپے سے زائد کی کل امداد میں سے 3کروڑ 30 لاکھ کو دھوکے سے استعمال کرنے کے ثبوت مل گئے ہیں، جبکہ مزید تحقیقات جاری ہیں۔ تاہم ملزم پر چندے کی رقم کے نجی استعمال، دھوکہ دہی اور منی لانڈرنگ کی دفعات لگاتے ہوئے ایف بی آئی نے پیج کو گرفتار کر لیا ہے۔

امریکی نشریاتی اداروں کے مطابق پیج کا خیراتی ادارہ بلیک لائف میٹر کی مرکزی تحریک سے منسلک نہیں تھا، اور ایف بی آئی اپریل سے اس پر نظر رکھے ہوئے تھا۔

واضح رہے کہ رفاہی اداروں کے نام پر بدعنوانی امریکہ میں ایک رواج بنتا جا رہا ہے، جس میں خصوصاً بلیک لائف میٹر تحریک سے وابستہ تنظیمیں سب سے نمایاں ہے۔ تحریک کو گزشتہ کچھ عرصے میں کروڑوں روپوں کا چندہ ملا ہے۔ تاہم اب مرکزی تحریک کے کام، امداد کا استعمال اور اثاثے ایک سوالیہ نشان بنتے جا رہے ہیں۔ خبروں کے مطابق تحریک نے اب تک امداد کا صرف 6 فیصد سیاہ فام امریکیوں کی فلاح پہ خرچ کیا ہے۔ جبکہ 82 فیصد تحریک کے لیے کام کرنے والے افراد کو بڑی تنخواہوں، رضا کاروں اور ملازمین کو اضافی انعام دینے، سفری سہولیات دینے اور تحریک میں شمولیت اختیار کرنے والی نئی تنظیموں کی مشاورت پر خرچ کیا گیا ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us