منگل, جون 15 Live
Shadow
سرخیاں
ترکی: 20 ٹن سونا اور 5 ٹن چاندی کا نیا ذخیرہ دریافت، ملکی سالانہ پیداوار 42 ٹن کا درجہ پار کر گئی، 5 برسوں میں 100 ٹن تک لے جانے کا ارادہحکومت پنجاب کا ویکسین نہ لگوانے والوں کے موبائل سم کارڈ معطل کرنے کی پالیسی لانے کا فیصلہموساد کے سابق سربراہ کا ایرانی جوہری سائنسدان اور مرکز پر سائبر حملے کا اعترافی اشارہ: ایرانی سائنسدانوں کو منصوبہ چھوڑنے پر معاونت کی پیشکش کر دییورپی اشرافیہ و ابلاغی اداروں کے برعکس شہریوں کی نمایاں تعداد نے روس کو اہم تہذیبی شراکت دار و اتحادی قرار دے دیاروسی بحریہ نے سٹیلتھ ٹیکنالوجی سے لیس جدید ترین بحری جہاز کا مکمل نمونہ تیار کر لیا: مکمل جہاز آئندہ سال فوج کے حوالے کر دیا جائےگاٹویٹر کو نائیجیریا میں دوبارہ بحالی کیلئے مقامی ابلاغی اداروں کی طرح لائسنس لینا ہو گا، اندراج کروانا ہو گا: افریقی ملک کا امریکی سماجی میڈیا کمپنی کو دو ٹوک جواب، صدر ٹرمپ کی جانب سے پابندی پر ستائش کا بیانکاراباخ آزادی جنگ: جنگی قیدی چھڑوانے کے لیے آرمینی وزیراعظم کی آزربائیجان کو بیٹے کی حوالگی کی پیشکشمجھ پر حملے سائنس پر حملے ہیں: متنازعہ امریکی مشیر صحت ڈاکٹر فاؤچی کا اپنے دفاع میں نیا متنازعہ بیان، وباء سے شدید متاثر امریکیوں کے غصے میں مزید اضافہچین 3 سال کے بچوں کو بھی کووڈ-19 ویکسین لگانے والا دنیا کا پہلا ملک بن گیاایرانی رویہ جوہری معاہدے کی بحالی میں تعطل کا باعث بن سکتا ہے: امریکی وزیر خارجہ بلنکن

امریکی صدارتی مباحثہ: نظم و ضبط قائم رکھنے کے لیے ڈھانچے میں تبدیلی کا اعلان

امریکی صدارتی مباحثے کے منتظمین نے پہلے مباحثے میں ہونے والی بدمزگیوں کو مدنظر رکھتے ہوئے اعلان کیا ہے کہ وہ اگلی دو بحثوں کو مؤثر بنانے کے لیے ڈھانچے میں تبدیلی کریں گے۔

اپنے عوامی اعلامیے میں ادارے کا کہنا تھا کہ پہلی مشق نے واضع کر دیا ہے نظم و ضبط کو قائم کرنے کے لیے موجودہ ڈھانچے میں تبدیلی کی ضرورت ہے، ادارہ اس پر کام شروع کر چکا ہے اور جلد اس کا اعلان کرے گا۔

ادارہ کس قسم کی تبدیلیاں کرے گا، تاحال اس حوالے سے تفصیلات نہیں بتائی گئیں، تاہم امریکی نشریاتی اداروں کے مطابق میزبان کو صدر ٹرمپ کا مائیک بند کرنے کی اجازت دی جا سکتی ہے۔

اعلامیے میں ادارہ برائے صدارتی مباحثے نے میزبان کرس ویلس کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا ہے کہ انہوں نے اپنی صلاحیتوں کا بھرپور استعمال کیا، اور نظم وضبط کے لیے بنیادی ڈھانچے میں تبدیلی کی سفارش بھی کی۔

واضع رہے کہ امریکی صدارتی مباحثے کی پہلی مشق پر شدید تنقید کی جا رہی ہے، جس میں دونوں فریقین نے اپنے اپنے انداز میں نظم و ضبط کو خاطر میں نہ رکھا، صدر ٹرمپ، جو بائیڈن کے بولنے کے دوران مداخلت کرتے رہے جبکہ دوسری طرف جو بائیڈن، ڈونلڈ ٹرمپ کی گفتگو کے دوران انہیں جھوٹا جھوٹا پکارتے رہے، اور ایک موقع پر تو انہیں “بکواس بند کرو” بھی کہہ ڈالا۔

امریکی عوام نے میزبان ویلس پر بھی تنقید کی ہے اور کہا ہے کہ وہ واضع طور پر بائیڈن کی طرفداری کرتے نظر آئے، اور صدر ٹرمپ کو منصفانہ وقت نہ دیا۔

سماجی ابلاغی ویب سائٹوں پر شہریوں نے معروف پاڈکاسٹ میزبان جو روگن سے دوبارہ پہلا مباحثہ کروانے کی مہم بھی شروع کر رکھی ہے۔

دوسری طرف صدر ٹرمپ کی انتخابی مہم کے سربراہ نے مباحثے کے دوران قوانین کو بدلنے کو متعصب قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس کا مقصد بائیڈن کی کارکردگی کو چھپانا ہے، قوانین پر دونوں فریق پہلے سے متفق تھے، کھیل کے دوران قوانین بدلنا متعصب کارروائی ہے۔

صدر ٹرمپ نے بھی ممکنہ اقدام پر اپنے طنزیہ ٹویٹ میں کہا ہے کہ نیا میزبان بھی لے آؤ، اور ساتھ ڈیموکریٹ پارٹی کا نیا امیدوار بھی لے آؤ۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us