جمعرات, اکتوبر 22 Live
Shadow

امریکی حزب اخلتلاف کا صدر ٹرمپ کو ہٹانے کیلیے نیا منصوبہ منظر عام پر

روسی مداخلت کے الزامات میں ناکامی کے بعد امریکی حزب اختلاف نے صدر ٹرمپ کی راہ میں روڑے اٹکانے کا نیا طریقہ ڈھونڈ نکالا ہے۔ امریکی اسپیکر اسمبلی نینسی پلوسی نے اعلان کیا ہے کہ وہ ایک کمیشن بنانے جا رہی ہیں جو دیکھے گا کہ صدر ٹرمپ کی صحت اتنے معیار کی ہے یا نہیں کہ وہ امریکی صدر کی ذمہ داریاں ادا کر سکیں۔

نینسی پلوسی کا کہنا تھا کہ ہم 25ویں ترمیم کی بنیاد پر صدر ٹرمپ کے خلاف کارروائی کرنے جا رہے ہیں۔

اسپیکر اسمبلی کا بیان صدر سے ملاقات کے بعد سامنے آیا ہے جس میں دونوں ذمہ داران نے کووڈ19 سے متعلق بڑے امدادی وظیفے پر بات چیت کی۔

امریکی آئین کی 25ویں ترمیم ناگفتہ بہ حالات یعنی صدر کی اچانک موت، کسی بھی وجہ سے بہت زیادہ بیمار ہو جانے یا اچانک استعفے کے بعد کے حالات میں صدر کی ذمہ داریوں کے متلعق انتظامیہ کی رہنمائی کرتی ہے۔ ترمیم 1963 میں صدر جان ایف کینیڈی کے اچانک قتل کے بعد سامنے آئی تھی، جس کے تحت نائب صدر کو تمام ذمہ داریاں سونپ دی گئی تھیں۔

ترمیم کے تحت یا تو صدر خود اپنی ذمہ داریاں ایک مقررہ مدت تک نائب صدر کو دے سکتا ہے، یا کانگریس اور نائب صدر حالات کے پیش نظر ایسا کر سکتے ہیں، یا پھر کانگریس اکیلے ایک کمیٹی بنا کر اس کے فیصلے کے تحت اقدامات کر سکتی ہے۔ تاہم یہ سارا مرحلہ انتہائی پیچیدہ اور وقت کا متقاضی ہوتا ہے۔ اور صدر کے پاس بھی اختیار ہے کہ وہ کمیٹی کے فیصلے کو ماننے سے انکار کر دے، اور تو اور فیصلے پر عملدرآمد کے لیے اسمبلی میں 2/3 ووٹوں کی ضرورت بھی اسے مشکل بناتی ہے۔ ان سب پیچیدگیوں کے علاوہ نائب صدر کا متفق ہونا اور کانگریس میں حکومتی جماعت کے ارکان کو بھی قائل کرنا ایک مشکل مشق ہے۔

خاتون اسپیکر اسمبلی نے انتظامیہ سے صدر کی ٹیسٹ رپورٹ عام کرنے کا بھی کہا ہے۔ واضح رہے کہ گزشتہ ہفتے صدر ٹرمپ کا کووڈ19 ٹیسٹ مثبت آنے پر انہیں اسپتال داخل کروانا پڑا تھا۔ تاہم 4 دن کے بعد ہی انہیں اسپتال سے چھٹی مل گئی اور وہ تب سے اپنی صدارتی ذمہ داریاں پوری کر رہے ہیں۔

اس کے علاوہ صدر ٹرمپ مسلسل خود بھی ویڈیو پیغامات میں اپنی صحت اور انتخابات سے متعلق آئندہ کی حکمت عملیوں پر گفتگو کرتے رہتے ہیں۔

جبکہ دوسری طرف صدر ٹرمپ کی جماعت کے ارکان اسمبلی نے سختی سے کسی ایسی قرارداد کو مسترد کرنے کا اعلان کیا ہے، بلکہ اسپیکر کو ہٹانے کی مہم شروع کر دی ہے۔

معاملے پر صدر ٹرمپ نے اپنے ردعمل میں کہا ہے کہ ـــــ نینسی پلوسی اس بہانے ڈیموکریٹ نائب امید وار کیمیلا حیرث کے لیے راہ ہموار کر رہی ہے، کیونکہ جوبائیڈن تو جیسے دوڑ سے پہلے ہی نکل چکا۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں