اتوار, نومبر 28 Live
Shadow
سرخیاں
نائیجیر: فرانسیسی فوج کی فائرنگ سے 2 شہری شہید، 16 زخمیامریکی فوج میں ہر 4 میں سے 1 عورت اور 5 میں سے 1 مرد جنسی زیادتی کا نشانہ بنتا ہے، بیشتر خود کشی کر لیتے، کورٹ مارشل کے خوف سے کوئی آواز نہیں اٹھاتا: سابقہ اہلکارروس کا غیر ملکی سماجی میڈیا کمپنیوں پر ملک میں کاروباری اندراج کے لیے دباؤ جاری: رواں سال کے آخر تک عمل نہ ہونے پر پابندی لگانے کا عندیاامریکہ ہائپر سونک ٹیکنالوجی میں چین اور روس سے بہت پیچھے ہے: امریکی جنرل تھامپسنامریکی تفریحی میڈیا صنعت کس عقیدے، نظریے اور مقصد کے تحت کام کرتی ہے؟چوالیس فیصد امریکی اولاد پیدا کرنے کی خواہش نہیں رکھتے: پیو سروے رپورٹچینی کمپنی ژپینگ نے جدید ترین برقی کار جی-9 متعارف کر دی: بیٹری کے معیار اور رفتار میں ٹیسلا کو بھی پیچھے چھوڑ دیاماحولیاتی تحفظ کی مہم کیوں ناکام ہے؟: کینیڈی پروفیسر نے امیر مغربی ممالک کو زمہ دار ٹھہرا دیااتحادیوں کو اکیلا نہیں چھوڑا جائے گا، تحفظ ہر صورت یقینی بنائیں گے: امریکی وزیردفاعروس اس وقت آزاد دنیا کا قائد ہے: روسی پادری اعظم کا عیسائی گھرانوں کی امریکہ سے روس منتقلی پر تبصرہ

امریکی انتخابات: جوبائیڈن کا میڈیا خبروں کی بنیاد پر فتح کا اعلان، صدر ٹرمپ کی جانب سے دعویٰ مسترد – کہا میڈیا اور ڈیموکریٹ کا اتحاد نہیں، قانونی ووٹ صدر کا انتخاب کریں گے

امریکی صدارتی انتخابات میں جوبائیڈن نے میڈیا رپورٹنگ کی بنیاد پر فتح کا دعویٰ کر دیا ہے جبکہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے دعوے کو مسترد کرتے ہوئے قانونی چارہ جوئی کا اعلان کیا ہے۔ صدر ٹرمپ کا کہنا ہے کہ وہ حقیقی فاتح کو ہی امریکہ کا صدر بننے کی اجازت دیں گے۔

ایسوسیئیٹڈ پریس نے پنسلوینیا سے مبینہ فتح کی خبر دیتے ہوئے جوبائیڈن کو مطلوبہ 270 الیکٹورل ووٹ حاصل کرنے میں کامیاب قرار دیا تھا جس پر حزب اختلاف کے امیدوار جو بائیڈن نے بھی فوری فتح کا اعلان کرتے ہوئے ٹویٹ میں کہا کہ وہ سب امریکیوں کے صدر ہوں گے، انکے بھی جنہوں نے انہیں ووٹ نہیں دیا۔

صورتحال پر اپنے ردعمل میں صدر ٹرمپ کا کہنا ہے کہ جو بائیڈن اپنے میڈیا اتحادیوں کی مدد سے فتح کا جھوٹا اعلان کر رہے ہیں۔ غیر قانونی ووٹوں اور میڈیا میں حاصل کی گئی اس فتح کو انکی قانونی ٹیم عدالت میں غلط ثابت کرے گی۔ صدر کا مزید کہنا تھا کہ قانونی ووٹ صدر کا انتخاب کرتے ہیں، نہ کہ ذرائع ابلاغ کی خبریں۔

امریکی صدر کی درخواست پر متعدد ریاستوں میں دوبارہ گنتی شروع ہو سکتی ہے۔ جن میں وسکونسن اور جارجیا زیادہ نمایاں ہیں جہاں جو بائیڈن کو بالترتیب محض 20 اور 7 ہزار ووٹوں کی برتری حاصل ہے۔ جبکہ پنسلوینیا میں بھی ڈاک ووٹوں پر پچھلی تاریخ ڈالنے کی تحقیقات ابھی جاری ہیں۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us