ہفتہ, April 9 Live
Shadow
سرخیاں
افغانستان میں امریکی فوج کی جانب سے تشدد کی تربیت کے لیے بلوچی قیدی کو استعمال کرنے کا انکشافہندوستانی میزائل کا مبینہ غلطی سے پاکستانی حدود میں گرنے کا واقعہ: امریکہ کی طرف سے متعصب جبکہ چین کی جانب سے نصیحت آمیز ردعملمیٹا آسٹریلوی سیاستدانوں کو سائبر حملوں اور جھوٹی خبروں سے بچنے کی تربیت دے گییوکرین: مغربی ممالک سے آئے 180 سے زائد جنگجو ہوائی حملے میں ہلاک، روس کی مغربی ممالک کو تنبیہ، سب نشانے پر ہیں، چُن چُن کر ماریں گےاسرائیل پر تاریخ کا بڑا سائبر حملہ: وزیراعظم، وزارت داخلہ اور وزارت صیہونی بہبود کی ویب سائٹیں ہیک اور تلفروس اور یوکرین کے مابین جلد امن معاہدہ طے پا جائے گا: روسی مذاکرات کاریوکرینی مہاجرین کی تعداد 50 لاکھ سے بڑھ گئی: اقوام متحدہفیس بک اور انسٹاگرام کی شدید متعصب پالیسی کا اعلان: روسی صدر اور فوج کیخلاف نفرت اور موت کے پیغامات شائع کرنے کی اجازت، نتیجتاً مغربی ممالک میں آرتھوڈاکس کلیساؤں اور روسی کاروباروں پر حملوں کی خبریںترکی کا بھی روس کے ساتھ مقامی پیسے میں تجارت کرنے کا اعلانمغرب کے دوہرے معیار: دنیا پر روس سے تجارت پر پابندیاں، برطانیہ سمیت بیشتر مغربی ممالک روس سے گیس و تیل کی خریداری جاری رکھیں گے

ترکی کو دنیا کی دسویں بڑی معیشت بنانے کے لیے بڑی سرمایہ کاری کے منصوبے لا رہے ہیں: صدر ایردوعان

ترک صدر رجب طیب ایردوعان نے ملک کو دنیا کی دسویں بڑی معیشت بنانے کے منصوبے کا اعلان کر دیا ہے۔ ملک کے مشرقی شہر مالاتیا میں ایک بڑے پل کا افتتاح کرتے ہوئے مسلم ملک کے سربراہ کا کہنا تھا کہ وہ جلد بڑی سرمایہ کاری کے منصوبے لانے والے ہیں جن سے ملکی پیداوار اسے دنیا کی دسویں بڑی معیشت بنا دے گی۔

صدر ایردوعان کا کہنا تھا کہ بڑے منصوبوں میں بڑی سرمایہ کاری کے منصوبے لائے جا رہے ہیں، جن میں خلائی ٹیکنالوجی، مصنوعی ذہانت اور جدید ترین ٹیکنالوجی سے لیس مشینوں کی صنعت ترجیح ہوں گے۔

ترک صدر کا مزید کہنا تھا کہ سرمایہ کاروں کو سہولیات دی جائیں گی، ہر شعبے میں ایک ہدف رکھتے ہوئے کام ہو گا اور صنعتوں کی صلاحیت بڑھانے پر توجہ دیں گے۔ صدر ایردوعان نے ملک میں ہر طرح کی صنعت کو مقامی سطح پر شروع کرنے اور خود کفیل ہونے کے ارادے کا اظہار بھی کیا۔

یاد رہے کہ کورونا وائرس وباء کے باعث ترکی کی معیشت بھی بری طرح متاثر ہوئی تھی تاہم اب اس میں دوبارہ اٹھاؤ شروع ہو گیا ہے۔ عالمی تجزیہ کاروں کے مطابق 2021 میں ترکی کی شرح نمو 4 فیصد رہے گی تاہم شرح مہنگائی کے حوالے سے مختلف حلقوں کی جانب سے تحفظات کا اظہار کیا جا رہا ہے، جو 11 اعشاریہ 6 فیصد تک جانے کا امکان ہے۔

یاد رہے کہ ترکی کی معیشت گزشتہ سال کے آخری حصے میں 10 فیصد تک سکڑ گئی تھی، کووڈ-19 کی پہلی لہر کے دوران بھی ترکی بری طرح متاثر ہوا تاہم جولائی میں اس میں دوبارہ بڑھوتری دیکھنے میں ملی۔ وباء کے دوران معاشی پہیہ تھم جانے سے 2019 کا مثبت کرنٹ اکاؤنٹ بیلنس دوبارہ منفی میں چلا گیا تھا۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us