منگل, دسمبر 7 Live
Shadow
سرخیاں
امریکی سی آئی اے اہلکاروں کے ایک بار پھر کم عمر بچوں بچیوں کے ساتھ جنسی جرائم میں ملوث ہونے کا انکشافامریکہ کا مشرقی افریقہ میں تاریخ کے سب سے بڑے فوجی آپریشن کا اعلان: 1 ہزار سے زائد مزید کمانڈو تیارروسی صدر کی ثالثی: آزربائیجان اور آرمینیا کے مابین سرحدی جھڑپیں ختم، سرحدی حدود کے تعین پر اتفاق، جنگ سے متاثر آبادی اور دیگر انسانی حقوق کے تحفظ کی بھی یقین دہانینائیجیر: فرانسیسی فوج کی فائرنگ سے 2 شہری شہید، 16 زخمیامریکی فوج میں ہر 4 میں سے 1 عورت اور 5 میں سے 1 مرد جنسی زیادتی کا نشانہ بنتا ہے، بیشتر خود کشی کر لیتے، کورٹ مارشل کے خوف سے کوئی آواز نہیں اٹھاتا: سابقہ اہلکارروس کا غیر ملکی سماجی میڈیا کمپنیوں پر ملک میں کاروباری اندراج کے لیے دباؤ جاری: رواں سال کے آخر تک عمل نہ ہونے پر پابندی لگانے کا عندیاامریکہ ہائپر سونک ٹیکنالوجی میں چین اور روس سے بہت پیچھے ہے: امریکی جنرل تھامپسنامریکی تفریحی میڈیا صنعت کس عقیدے، نظریے اور مقصد کے تحت کام کرتی ہے؟چوالیس فیصد امریکی اولاد پیدا کرنے کی خواہش نہیں رکھتے: پیو سروے رپورٹچینی کمپنی ژپینگ نے جدید ترین برقی کار جی-9 متعارف کر دی: بیٹری کے معیار اور رفتار میں ٹیسلا کو بھی پیچھے چھوڑ دیا

جدید ترین ہتھیاروں کی سمگلنگ: صیہونی انتظامیہ نے دفاعی صنعت سے وابستہ اہلکاروں سمیت 20 افراد کو گرفتار کر لیا

مقبوضہ فلسطین کی قابض صیہونی انتظامیہ نے دفاعی صنعت سے وابستہ اہلکاروں سمیت 20 افراد کو گرفتار کیا ہے جو کسی نامعلوم ایشیائی ملک کو حساس ہتھیاروں کی سمگلنگ میں مبینہ طور پر ملوث تھے۔ قابض انتظامیہ کی سکیورٹی ایجسنی شِم بیت کا کہنا ہے کہ ملزمان نے خودکش ڈرون بنائے، انکا تجربہ کیا اور اسے نامعلوم ملک کو بیچا۔

کامیکیز ڈرون طیارے جدید ترین ہتھیار ہیں جو دی گئی ہدایات کے مطابق اپنے ہدف کو تلاش کرنے اور ملتے ہی خودکش حملہ کرکے اسے مار دینے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

صیہونی انتظامیہ کی جاری کردہ ویڈیو میں تین افراد کو تجربہ کرتے دیکھا جا سکتا ہے۔

تحقیقات میں صیہونی انتظامیہ کو خودکش ڈرون خریدنے والے ملک کا پتہ چل گیا ہے تاہم اس نے نام عیاں نہیں کیا۔ البتہ یہ ضرور بتایا ہے کہ خودکش ڈرون جس ملک کو بیچا گیا ہے وہ دشمن ملک نہیں ہے، اور مبینہ طور پر وہاں کی فوج نے پیسوں اور تعلقات کے عوض خودکش ڈرون حاصل کیے ہیں۔ البتہ انتظامیہ نے خوف کا اظہار کیا ہے کہ خفیہ نیٹ ورک سے کوئی دشمن ملک بھی جدید ہتھیاروں تک رسائی حاصل کر سکتا ہے۔

تحقیقات میں ملزمان کے زیر استعمال خفیہ رابطے اور رقوم کی ترسیل کے نئے ذرائع کا انکشاف بھی ہوا ہے۔

واضح رہے کہ ملزمان کو تاحال کسی عدالت میں پیش نہیں کیا گیا ہے اور نہ ہی ان پر کوئی مقدمہ قائم کیا گیا ہے۔

یاد رہے کہ گزشتہ ہفتے بھی صیہونی انتظامیہ نے مغربی کنارے کے علاقے میں تین افراد کو جدید رائفل کی سمگلنگ کرتے گرفتار کیا تھا، جس پر انتظامیہ کا شبہہ تھا کہ اسے خطرناک ہتھیار میں بدلا جا سکتا ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us