ہفتہ, April 9 Live
Shadow
سرخیاں
افغانستان میں امریکی فوج کی جانب سے تشدد کی تربیت کے لیے بلوچی قیدی کو استعمال کرنے کا انکشافہندوستانی میزائل کا مبینہ غلطی سے پاکستانی حدود میں گرنے کا واقعہ: امریکہ کی طرف سے متعصب جبکہ چین کی جانب سے نصیحت آمیز ردعملمیٹا آسٹریلوی سیاستدانوں کو سائبر حملوں اور جھوٹی خبروں سے بچنے کی تربیت دے گییوکرین: مغربی ممالک سے آئے 180 سے زائد جنگجو ہوائی حملے میں ہلاک، روس کی مغربی ممالک کو تنبیہ، سب نشانے پر ہیں، چُن چُن کر ماریں گےاسرائیل پر تاریخ کا بڑا سائبر حملہ: وزیراعظم، وزارت داخلہ اور وزارت صیہونی بہبود کی ویب سائٹیں ہیک اور تلفروس اور یوکرین کے مابین جلد امن معاہدہ طے پا جائے گا: روسی مذاکرات کاریوکرینی مہاجرین کی تعداد 50 لاکھ سے بڑھ گئی: اقوام متحدہفیس بک اور انسٹاگرام کی شدید متعصب پالیسی کا اعلان: روسی صدر اور فوج کیخلاف نفرت اور موت کے پیغامات شائع کرنے کی اجازت، نتیجتاً مغربی ممالک میں آرتھوڈاکس کلیساؤں اور روسی کاروباروں پر حملوں کی خبریںترکی کا بھی روس کے ساتھ مقامی پیسے میں تجارت کرنے کا اعلانمغرب کے دوہرے معیار: دنیا پر روس سے تجارت پر پابندیاں، برطانیہ سمیت بیشتر مغربی ممالک روس سے گیس و تیل کی خریداری جاری رکھیں گے

لاہور چڑیاگھر میں ہلاک ہونے والے نایاب سفید ٹائیگر کے 2 بچوں کی موت کورونا کے باعث ہوئی: طبی عملہ

گزشتہ ماہ لاہور چڑیا گھر میں ہلاک ہونے والے دو سفید شیروں کی موت کی وجہ سامنے آگئی ہے۔ تحقیق میں پتہ چلا ہے کہ دونوں بچوں کے پھیپھرے تباہ ہو چکے تھے اور ممکنہ طور پر وہ کورونا سے متاثر ہوئے تھے۔

ابتدائی طور پر کہا جا رہا ہے کہ کورونا ان تک انکی دیکھ بھال کرنے والے افراد کے ذریعے پہنچا۔

تحقیق سے پہلے اندازہ لگایا جا رہا تھا کہ ممکنہ طور پر انکی موت فیلائن پینلیوکوپینیا کے باعث ہوئی، جو کہ بلیوں کے کاندان سے تعلق رکھنے والے جانوروں میں مدافعتی نظام کو نشانہ بناتی ہے۔ تاہم طبی معائنے میں سامنے آیا ہے کہ دونوں شیر خوار شیروں کے پھیپھرے بری طرح تباہ ہو چکے تھے۔ جس سے محققین نے اندازہ لگایا کہ یہ کورونا وائرس سے متاثر تھے۔

چڑیا گھر کے طبی عملے نے باقی جانوروں کا ابھی معائنہ نہیں کیا تاہم عملے میں کورونا کی تصدیق ہوئی ہے۔ طبی عملے میں شامل ڈاکٹر کرن سلیم کا کہنا ہے کہ پورے عملے میں سے 6 افراد میں کورونا کی تصدیق ہوئی ہے اور ان مین سے ایک وہ شخص بھی تھا جو سفید شیروں کی نگہداشت پر تعینات تھا۔

یاد رہے کہ سید ٹائیگر انتہائی نایاب نسل کے شیر ہیں، جو کہ شیروں میں جینیاتی تبدیلی کی وجہ سے وجود میں آئی ہے۔

گزشتہ سال امریکہ میں بھی سائیبریا اور مالائے نسل کے ٹائیگروں میں بھی کورونا کی تصدیق ہوئی تھی۔ جنہیں عملے نے کھانسی، بھوک میں کمی اور تھکن کا احساس بھانپتے ہیں قرنطینہ کر دیا تھا اور خصوصی نگہداشت سے جانورں کی زندگی کو بچا لیا گیا تھا۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us