اتوار, اکتوبر 17 Live
Shadow
سرخیاں
آؤکس بین الاقوامی سیاست میں کشیدگی و عدم استحکام بڑھانے اور اسلحے کی نئی دوڑ کا باعث ہو گا: چین اور مشرقی ممالک کے خلاف مغرب کے نئے عسکری اتحاد پر روسی ردعملایف بی آئی نے خفیہ کارروائی میں جوہری آبدوز ٹیکنالوجی بیچتے دو فوجی انجینئر گرفتار کر لیےامریکہ مصنوعی ذہانت، سائبر سکیورٹی اور دیگر جدید ٹیکنالوجیوں میں چین سے 15/20 سال پیچھے ہے: پینٹاگون سافٹ ویئر شعبے کے حال ہی میں مستعفی ہونے والے سربراہ کا تہلکہ خیز انٹرویوروسی محققین کووڈ-19 کے خلاف دوا دریافت کرنے میں کامیاب: انسانوں پر تجربات شروعسابق افغان وزیردفاع کے بیٹے کی امریکہ میں 2 کروڑ ڈالر کے بنگلے کی خریداری: ذرائع ابلاغ پر خوب تنقیدہمارے پاس ثبوت ہیں کہ فرانسیسی فوج ہمارے ملک میں دہشت گردوں کو تربیت دے رہی ہے: مالی کے وزیراعظم مائیگا کا رشیا ٹوڈے کو انٹرویوعالمی قرضہ 300کھرب ڈالر کی حدود پار کر کے دنیا کی مجموعی پیداوار سے بھی 3 گناء زائد ہو گیا: معروف معاشی تحقیقی ادارے کی رپورٹ میں تنبیہامریکہ میں رواں برس کورونا وائرس سے مرنے والوں کی تعداد 2020 سے بھی بڑھ گئی: لبرل امریکی میڈیا کی خاموشی پر شہری نالاں، ریپبلک کا متعصب میڈیا مہم پر سوالکورونا ویکسین بیچنے والی امریکی کمپنی کے بانیوں اور سرمایہ کار کا نام امریکہ کے 225 ارب پتیوں کی فہرست میں شامل: سماجی حلقوں کی جانب سے کڑی تنقیدامریکی جاسوس ادارے سی آئی اے کو دنیا بھر میں ایجنٹوں کی شدید کمی کا سامنا، ایجنٹ مارے جانے، پکڑے جانے، ڈبل ایجنٹ بننے، لاپتہ ہونے کے باعث مسائل درپیش، اسٹیشنوں کو بھرتیاں تیز کرنے کا بھی حکم: نیو یارک ٹائمز

سابق صدر ٹرمپ کو آج نہیں تو کل سماجی میڈیا پر واپسی کی سہولت مل جائے گی تاہم تب تک انکا اثرورسوخ ختم ہو چکا ہو گا: بل گیٹس

معروف سافٹ ویئر کمپنی مائیکروسافٹ کے بانی بل گیٹس کا کہنا ہے کہ سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ پر ٹویٹر کی مستقل پابندی درست نہیں اور انہیں سماجی میڈیا پر واپسی کی سہولت دے دینی چاہیے۔

امریکی میڈیا سے ہونے والی گفتگو میں بل گیٹس کا کہنا تھا کہ انہیں لگتا ہے کہ سابق صدر ٹرمپ کو جلد نہیں تو بدیر سماجی میڈیا پر واپسی کی اجازت مل جائے گی، لیکن انکی مقبولیت اور باتوں میں لوگوں کی دلچسپی پہلے جیسی نہیں رہے گی۔

واضح رہے کہ سافٹ ویئر کمپنی کے مالک اور ماضی میں دنیا کے امیر ترین شخص بل گیٹس اکثر صحت، زراعت، بیماریوں کی روک تھام کے اہم موضوعات پر بھی گفتگو کرتے رہتے ہیں، اگرچہ ان کے پاس ان میں سے کسی بھی شعبے میں سند نہیں تاہم انکی امارت اور مغربی لبرل میڈیا میں انکے اثرورسوخ کے باعث انکے تبصروں کو نمایاں جگہ دی جاتی ہے۔ گزشتہ کچھ عرصے سے بل گیٹس کا سیاسی موضوعات پر تبصروں کا سلسلہ بھی چل نکلا ہے جسے روائیتی طور پر کافی اچھالا جاتا ہے۔ گزشتہ انتخابات کے بعد امریکہ کی سیاسی صورتحال پر رائے دہی کرتے ہوئے بل گیٹس نے سابق صدر ٹرمپ کے دھاندلی کے الزامات کو عجیب اور امریکی نظام کے لیے خطرناک قرار دیا تھا۔

یاد رہے کہ صدر ٹرمپ کے خلاف امریکی لبرل سماجی میڈیا کمپنیوں کے اقدامات کی شروعات ٹویٹر نے کی تھی اور اسے تسلسل سے کیا گیا، یہاں تک کہ امریکی تاریخ کے اس واحد صدر پر تشدد کا الزام لگایا گیا جس نے کوئی نئی جنگ شروع نہ کی بلکہ گزشتہ کو بھی بند کرنے پر کام کیا۔

سماجی میڈیا پر قدغن سے اب تک صدر ٹرمپ نے خود بھی عوامی گفتگو سے اجتناب کیا ہوا ہے، اگرچہ سابق صدر ہونے کے ناطے ان کے پاس اسکی طاقت اور سہولت موجود ہے لیکن صدر ٹرمپ خود بھی بہت کم سیاسی معاملات پر گفتگو کر رہے ہیں، انتہائی ضرورت کے وقت بھی انکا دفتر باقائدہ پریس کے لیے اعلامیہ جاری کرتا ہے۔ البتہ ایک بار صدر ٹرمپ نے سماجی میڈیا پر انکے لیے پابندی کے سوال پر کہا تھا کہ انکے بغیر ٹویٹر ایک غیردلچسپ جگہ بن گیا ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us