پیر, دسمبر 6 Live
Shadow
سرخیاں
امریکی سی آئی اے اہلکاروں کے ایک بار پھر کم عمر بچوں بچیوں کے ساتھ جنسی جرائم میں ملوث ہونے کا انکشافامریکہ کا مشرقی افریقہ میں تاریخ کے سب سے بڑے فوجی آپریشن کا اعلان: 1 ہزار سے زائد مزید کمانڈو تیارروسی صدر کی ثالثی: آزربائیجان اور آرمینیا کے مابین سرحدی جھڑپیں ختم، سرحدی حدود کے تعین پر اتفاق، جنگ سے متاثر آبادی اور دیگر انسانی حقوق کے تحفظ کی بھی یقین دہانینائیجیر: فرانسیسی فوج کی فائرنگ سے 2 شہری شہید، 16 زخمیامریکی فوج میں ہر 4 میں سے 1 عورت اور 5 میں سے 1 مرد جنسی زیادتی کا نشانہ بنتا ہے، بیشتر خود کشی کر لیتے، کورٹ مارشل کے خوف سے کوئی آواز نہیں اٹھاتا: سابقہ اہلکارروس کا غیر ملکی سماجی میڈیا کمپنیوں پر ملک میں کاروباری اندراج کے لیے دباؤ جاری: رواں سال کے آخر تک عمل نہ ہونے پر پابندی لگانے کا عندیاامریکہ ہائپر سونک ٹیکنالوجی میں چین اور روس سے بہت پیچھے ہے: امریکی جنرل تھامپسنامریکی تفریحی میڈیا صنعت کس عقیدے، نظریے اور مقصد کے تحت کام کرتی ہے؟چوالیس فیصد امریکی اولاد پیدا کرنے کی خواہش نہیں رکھتے: پیو سروے رپورٹچینی کمپنی ژپینگ نے جدید ترین برقی کار جی-9 متعارف کر دی: بیٹری کے معیار اور رفتار میں ٹیسلا کو بھی پیچھے چھوڑ دیا

ایرانی تجارتی جہاز پر دھماکہ: ایران کا دہشت گرد حملے کا الزام، عالمی عدالت جانے کا اعلان

ایران کی قومی جہازرانی کمپنی کے ترجمان نے ایک تجارتی بحری جہاز پر دہشت گرد حملے کا دعویٰ کیا ہے۔ ترجمان کے مطابق جہاز پر یورپ کی جانب سفر کے دوران دھماکہ خیز مواد سے حملہ ہوا، جس کے باعث جہاز کو کافی نقصان پہنچا ہے۔

اطلاعات کے مطابق دھماکے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے تاہم جہاز پر آگ لگنے کے باعث عملے کو فوری جہاز سے اتارنا پڑا۔

ایرانی جہاز رانی کمپنی کے ترجمان نے حملے کو بحری قزاقی سے مشابہت دی ہے، اور کہا ہے کہ حملہ بحری جہازوں کے تحفظ کے بین الاقوامی قوانین کے خلاف تھا، ایران تحقیقات کر کے معاملے کو عالمی عدالت میں لے کر جائے گا۔

ایرانی حکام نے دھماکے کے بعد جہاز سے نکلنے والے شعلوں کی ویڈیو مقامی نشریاتی اداروں پر بھی شائع کی ہے۔ جس میں دھماکے کے باعث کنٹینروں کو ہونے والا نقصان دیکھا جا سکتا ہے۔

واضح رہے کہ اب تک کسی ملک یا گروہ نے حملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے، اور نہ ہی ایران نے کسی پر حملے کا الزام لگایا ہے۔ تاہم ایرانی میڈیا فلسطین پر قابض صیہونی انتظامیہ پر واقعے کا الزام لگا رہا ہے۔ یاد رہے رواں ہفتے سنگاپور جاتے ہوئے خلیج عمان سے گزرتے ایک صیہونی مال بردار بحری جہاز پر بھی دھماکہ ہوا تھا جس کا الزام ایران پر لگایا گیا تھا۔ ایران نے الزام مسترد کردیا تھا تاہم شدید نقصان کے باعث جہاز کو دبئی بندرگاہ پر لنگرانداز ہونا پڑا تھا۔

رواں ہفتے ایک امریکی جریدے نے دعویٰ کیا ہے کہ گزشتہ دو سالوں کے دوران صیہونی انتظامیہ نے ایران کے درجن سے زائد تیل بردار بحری جہازوں پر حملہ کیا ہے، جن پر الزام تھا کہ وہ دہشتگرد گروہوں کو رقم اور تیل کی رسد دینے جا رہے تھے۔ صیہونی انتظامیہ نے خبر کی نہ تو تردید کی ہے اور نہ ہی اسے تسلیم کیا ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us