ہفتہ, جنوری 15 Live
Shadow
سرخیاں
قازقستان ہنگامے: مشترکہ تحفظ تنظیم کے سربراہ کا صورتحال پر قابو کا اعلان، امن منصوبے کی تفصیلات پیش کر دیںبرطانوی پارلیمنٹ میں منشیات کا استعمال: اسپیکر کا سونگھنے والے کتے بھرتی کرنے کا عندیاامریکی سی آئی اے اہلکاروں کے ایک بار پھر کم عمر بچوں بچیوں کے ساتھ جنسی جرائم میں ملوث ہونے کا انکشافامریکہ کا مشرقی افریقہ میں تاریخ کے سب سے بڑے فوجی آپریشن کا اعلان: 1 ہزار سے زائد مزید کمانڈو تیارروسی صدر کی ثالثی: آزربائیجان اور آرمینیا کے مابین سرحدی جھڑپیں ختم، سرحدی حدود کے تعین پر اتفاق، جنگ سے متاثر آبادی اور دیگر انسانی حقوق کے تحفظ کی بھی یقین دہانینائیجیر: فرانسیسی فوج کی فائرنگ سے 2 شہری شہید، 16 زخمیامریکی فوج میں ہر 4 میں سے 1 عورت اور 5 میں سے 1 مرد جنسی زیادتی کا نشانہ بنتا ہے، بیشتر خود کشی کر لیتے، کورٹ مارشل کے خوف سے کوئی آواز نہیں اٹھاتا: سابقہ اہلکارروس کا غیر ملکی سماجی میڈیا کمپنیوں پر ملک میں کاروباری اندراج کے لیے دباؤ جاری: رواں سال کے آخر تک عمل نہ ہونے پر پابندی لگانے کا عندیاامریکہ ہائپر سونک ٹیکنالوجی میں چین اور روس سے بہت پیچھے ہے: امریکی جنرل تھامپسنامریکی تفریحی میڈیا صنعت کس عقیدے، نظریے اور مقصد کے تحت کام کرتی ہے؟

بولیویا: 2019 میں منتخب حکومت کے خلاف بغاوت کرنے والا پورا ٹولہ گرفتار

بولیویا کی اعلیٰ عدالت نے سابق صدر ایوو مورالس کی منتخب حکومت کے خلاف بغاوت کرنے کے جرم میں سابق قائمقام صدر، وزراء اور سربراہان افواج کو گرفتار کرنے کا حکم جاری کیا ہے۔

حکومتی درخواست پر سنوائی میں عدالت نے سابق قائمقام صدر جینائن آنیز اور دیگر اعلیٰ حکام پر بغاوت، سازش، دہشت گردی اور ہراسگی کے الزامات پر سماعت کی اور تمام افراد کی گرفتاری کا حکم دیا۔

سابق قائمقام صدر نے عدالتی کارروائی کو سیاسی انتقام قرار دیا ہے۔

دیگر افراد میں جنرل قلیم کالیمان اور پولیس کے سابق سربراہ یوری کالدیرون بھی شامل ہیں۔ عسکری اہلکاروں پر الزام ہے کہ انہوں نے سابق صدر پر نومبر 2019 کی بغاوت کے دوران انتخابات جیتنے کے باوجود استعفیٰ دینے کا دباؤ ڈالا تھا۔ باغیوں کا الزام تھا کہ انتخابات میں دھاندلی ہوئی ہے۔

بغاوت کے بعد باغیوں نے سابق منتخب صدر کو ملک بدر کر دیا تھا اور آنیز کے ساتھ مل کر اقتدار پر قبضہ کر لیا تھا، 2020 میں واضح ناکامی وک دیکھتے ہوئے آنیز نے 2020 کے انتخابات میں اپنی نامزدگی واپس لے لی اور سیاست سے دور رہنے لگیں تاہم اب عدالت نے ان سمیت انکے تمام گروہ کو گرفتار کرنے کا حکم دیا ہے۔

ملک بدر صدر مورالس کی سوشلسٹ جماعت کی قیادت اب لوئس آرک کر رہے ہیں، اور 2020 کے انتخابات میں وہ فاتح ٹھہرے ہیں۔ لوئس نے سابق منتخب صدر کے حامیوں پر سیاسی بنیاد پر ظلم و ستم کو بند کروایا ہے اور باغیوں کو عدالت میں گھسیٹا ہے۔

عدالتی حکم پر اب تک باغی صدر، وزیرتوانائی اور وزیرانصاف کو گرفتار کیا جا چکا ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us