ہفتہ, April 9 Live
Shadow
سرخیاں
افغانستان میں امریکی فوج کی جانب سے تشدد کی تربیت کے لیے بلوچی قیدی کو استعمال کرنے کا انکشافہندوستانی میزائل کا مبینہ غلطی سے پاکستانی حدود میں گرنے کا واقعہ: امریکہ کی طرف سے متعصب جبکہ چین کی جانب سے نصیحت آمیز ردعملمیٹا آسٹریلوی سیاستدانوں کو سائبر حملوں اور جھوٹی خبروں سے بچنے کی تربیت دے گییوکرین: مغربی ممالک سے آئے 180 سے زائد جنگجو ہوائی حملے میں ہلاک، روس کی مغربی ممالک کو تنبیہ، سب نشانے پر ہیں، چُن چُن کر ماریں گےاسرائیل پر تاریخ کا بڑا سائبر حملہ: وزیراعظم، وزارت داخلہ اور وزارت صیہونی بہبود کی ویب سائٹیں ہیک اور تلفروس اور یوکرین کے مابین جلد امن معاہدہ طے پا جائے گا: روسی مذاکرات کاریوکرینی مہاجرین کی تعداد 50 لاکھ سے بڑھ گئی: اقوام متحدہفیس بک اور انسٹاگرام کی شدید متعصب پالیسی کا اعلان: روسی صدر اور فوج کیخلاف نفرت اور موت کے پیغامات شائع کرنے کی اجازت، نتیجتاً مغربی ممالک میں آرتھوڈاکس کلیساؤں اور روسی کاروباروں پر حملوں کی خبریںترکی کا بھی روس کے ساتھ مقامی پیسے میں تجارت کرنے کا اعلانمغرب کے دوہرے معیار: دنیا پر روس سے تجارت پر پابندیاں، برطانیہ سمیت بیشتر مغربی ممالک روس سے گیس و تیل کی خریداری جاری رکھیں گے

قزاقستان: رواں برس بچوں سے جنسی زیادتی کرنے والے 25 مجرموں کو ٹیکے سے خصی کرنے کی سزا دی گئی

بچوں کے ساتھ جنسی زیادتی کے لیے مختلف معاشروں اور ممالک میں مختلف سزائیں ہیں لیکن زیادتی کرنے والے کو کیمیائی مواد/ٹیکے سے خصی کرنے کی سزا مغربی ممالک کے بعد باقی دنیا میں بھی دیکھنے میں مل رہی ہے۔ قازقستان میں خصی کرنے کی سزا 2018 میں اپنائی گئی تھی۔ اطلاعات کے مطابق رواں سال 25 مجرموں کو عدالتی حکم پر خصی کیا گیا۔

کیمیائی مواد سے خصی کرنے یا آختہ کاری کے عمل میں اینافروڈیسیک مرکب کو جسم میں ٹیکے کی مدد سے داخل کیا جاتا ہے جس سے ٹیسٹوسٹیران ہارمون بننا رک جاتا ہے اور مرد کی جنسی خواہش ختم ہو جاتی ہے۔

قزاقستان نے 2018 میں خصی کرنے کا قانون متعارف کروایا، جس کے تحت عدالت مجرم کو جیل کی سزا کے ساتھ ساتھ خصی کرنے کی سزا بھی سناتی ہے۔ واضح رہے کہ ٹیکہ مستقل خصی نہں کرتا بلکہ اس کا اثر 3 ماہ یا اس سے زیادہ ہوتا ہے اور یوں ہر 3 ماہ بعد مجرم کو ٹیکہ لگایا جاتا ہے۔

قزاقستان میں ٹیکہ لگا کر خصی کیے گئے ایک مجرم نے میڈیا سے گفتگو میں کہا ہے کہ وہ اپنے دشمن کے لیے بھی ایسی سزا تجویز نہیں کرے گا۔ مجرم نے عدالت اور ملکی پارلیمنٹ سے سزا کو ختم کرنے کی درخواست کی ہے۔ مجرم کا کہنا ہے کہ وہ شادی کر کے اپنی عمومی زندگی شروع کرنا چاہتا ہے۔ مجرم کا کہنا ہے کہ ٹیکہ لگنے کے بعد اسکا پورا جسم انتہائی کرب سے گزرتا ہے، اس کے لیے چلنا تو دور کھڑے ہونا تک مشکل ہو جاتا، یہ انتہائی خوفناک ہے۔

واضح رہے کہ دنیا بھر میں خصی کرنے سے متعلق دوہری رائے پائی جاتی ہے، کچھ معاشروں میں اسے غیر انسانی سزا کہا جاتا ہے اور اس کے انسانی جسم اور نسل پر اثرات کے حوالے سے سوالات اٹھائے جارہے ہیں جبکہ کچھ لبرل معاشروں میں اسے قبولیت حاصل ہو رہی ہے، حتیٰ کہ مغربی ممالک کے زیر اثر بیشترغیر مغربی ممالک بھی اسے سزا کے طور پر لاگو کر چکے ہیں، جن میں جنوبی کوریا اور پولینڈ بھی شامل ہیں۔ امریکہ کی کچھ ریاستوں میں بھی ٹیکے سے خصی کرنے کے حوالے سے قانون موجود ہے جبکہ کچھ میں یہ ابھی مجرم کی مرضی سے مشروط کرنے کی بحث سے گزر رہا ہے۔

یاد رہے کہ ٹیکے سے خصی کرنے کا عمل ایک مہنگا عمل بھی ہے، جس کے لیے قازقستان سالانہ 40 لاکھ سے زائد خرچ کرتا ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us