اتوار, مئی 9 Live
Shadow
سرخیاں
روسی بحریہ میں ایک اور جدید ترین آبدوز کازان شاملچینی راکٹ خلائی اسٹیشن منزل پر کامیابی سے پہنچا کر بحیرہ ہند کی فضاؤں میں جل کر بھسم: آبادی والے علاقے میں گرنے کے مغربی پراپیگنڈے پر چین کا افسوس کا اظہارکابل: اسکول پر راکٹ حملے میں متعدد طالبات سمیت 30 جاں بحق، 50 زخمیروس: دوسری جنگ عظیم میں نازی جرمنی کے خلاف فتح کا جشن، ماسکو میں فوجی پریڈ کا انعقاد – براہ راست ویڈیومالدیپ کے سابق صدر محمد نشید بم حملے میں بال بال بچ گئےبرازیل میں پولیس کے منشیات فروشوں کے خلاف چھاپے جاری: 3 روز میں 1 پولیس افسر سمیت 28 ہلاکعراق: نیٹو افواج کے زیر استعمال ہوائی اڈے پر ڈرون حملہ، کوئی جانی نقصان نہ ہونے کا دعویٰامریکی تیل ترسیل کی سب سے بڑی کمپنی پر سائبر حملہ: ملک بھر میں پہیہ جام ہونے کا خطرہ منڈلانے لگااسرائیل کوئی ریاست نہیں ایک دہشت گرد کیمپ ہے: ایرانی ریاستی سربراہ علی خامنہ ایاطالوی پولیس افسر کے قتل کے جرم میں دو امریکی سیاحوں کو عمر قید کی سزا

تاجکستان اور ازبکستان میں پانی کے تنازعے پر سرحدی جھڑپ: 30 افراد ہلاک، متعدد زخمی، روس کی ثالثی کی پیشکش

تاجکستان اور قرغزستان کے مابین پانی کے جھگڑے پر سرحدی جھڑپ میں فوجی اہلکاروں سمیت 30 افراد ہلاک، درجنوں زخمی ہو گئے ہیں۔ اعلیٰ حکومتی عہدےداروں نے فوری مداخلت کرتے ہوئے لڑائی روک دی گئی ہے لیکن دونوں حکام خود کو معاملے میں حق پر قرار دیتے ہیں۔

جھگڑا اس وقت شروع ہوا جب تاجکستان نے غولوونوئی کے مقام پر مشترکہ پانی کے ایک ماخذ پر جاسوسی کیمرے نصب کر دیے، علاقے میں پانی کی ترسیل کاشتکاری کے لیے انتہائی اہم ہے، جس پر اکثر مقامی سطح پر چھوٹے جھگڑے بھی ہوتے رہتے ہیں۔ لیکن اب دونوں ممالک نے سرحد پر اپنی فوجیں تعینات کر دیں۔ سرحدوں کی بھی واضح نشاندہی نہ ہونے کے باعث افواج میں کشیدگی اور بھی بڑھ گئی اور علاقہ جنگ کا منظر پیش کرنے لگا۔

جھڑپ میں دونوں افواج نے مقامی آبادی اور املاک کو بھی نقصان پہنچانے سے دریغ نہیں کیا۔ اطلاعات کے مطابق اسکولوں کو بھی نقصان پہنچایا گیا ہے۔

روسی دفتر خارجہ نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ وہ دونوں ہمسایہ ممالک کو بات چیت سے مسائل حل کرنے پر زور دیتے ہیں، تاکہ علاقائی استحکام کو یقینی بنایا جا سکے، یاد رہے کہ دونوں ممالک ماضی میں سوویت یونین کا حصہ رہے ہیں لیکن اب انہیں خودمختاری حاصل کیے 30 برس کا وقت گزر چکا ہے۔

روسی صدارتی ترجمان نے بھی جنگ بندی کی حمایت کا اعلان کرتے ہوئے صدر پوتن کی ثالثی کی پیشکش کی ہے۔

دونوں ممالک نے تاجکستان کے شہر اصفہارا میں گفتگو کی حامی بھری ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us