ہفتہ, April 9 Live
Shadow
سرخیاں
افغانستان میں امریکی فوج کی جانب سے تشدد کی تربیت کے لیے بلوچی قیدی کو استعمال کرنے کا انکشافہندوستانی میزائل کا مبینہ غلطی سے پاکستانی حدود میں گرنے کا واقعہ: امریکہ کی طرف سے متعصب جبکہ چین کی جانب سے نصیحت آمیز ردعملمیٹا آسٹریلوی سیاستدانوں کو سائبر حملوں اور جھوٹی خبروں سے بچنے کی تربیت دے گییوکرین: مغربی ممالک سے آئے 180 سے زائد جنگجو ہوائی حملے میں ہلاک، روس کی مغربی ممالک کو تنبیہ، سب نشانے پر ہیں، چُن چُن کر ماریں گےاسرائیل پر تاریخ کا بڑا سائبر حملہ: وزیراعظم، وزارت داخلہ اور وزارت صیہونی بہبود کی ویب سائٹیں ہیک اور تلفروس اور یوکرین کے مابین جلد امن معاہدہ طے پا جائے گا: روسی مذاکرات کاریوکرینی مہاجرین کی تعداد 50 لاکھ سے بڑھ گئی: اقوام متحدہفیس بک اور انسٹاگرام کی شدید متعصب پالیسی کا اعلان: روسی صدر اور فوج کیخلاف نفرت اور موت کے پیغامات شائع کرنے کی اجازت، نتیجتاً مغربی ممالک میں آرتھوڈاکس کلیساؤں اور روسی کاروباروں پر حملوں کی خبریںترکی کا بھی روس کے ساتھ مقامی پیسے میں تجارت کرنے کا اعلانمغرب کے دوہرے معیار: دنیا پر روس سے تجارت پر پابندیاں، برطانیہ سمیت بیشتر مغربی ممالک روس سے گیس و تیل کی خریداری جاری رکھیں گے

رشیا گیٹ سازشی نظریے کو پروان چڑھانے والی وکیل خاتون کو صدر بائیڈن نے مشیر بنا لیا

امریکی انتخابات میں روسی مداخلت کی سازش کو ہوا دینے اور ماضی میں اوباما-بائیڈن انتظامیہ کے ساتھ کام کرنے والی سابق وکیل سوسن ہینسسی کو صدر بائیڈن نے اعلیٰ مشیر مقرر کر دیا ہے۔

سوسن صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے دور صدارت میں رشیا گیٹ سازش کے نظریے کو فروغ دینے میں پیش پیش رہی ہیں، اور اب ان خدمات کے پیش نظر صدر بائیڈن نے انہیں محکمہ قومی سلامتی میں اعلیٰ مشیر مقرر کر دیا ہے۔

تعیناتی کی خبر مذکورہ وکیل نے خود اپنے سماجی ابلاغی کھاتے پر دی، اور کہا کہ انہیں محکمہ انصاف کے قومی سلامتی شعبے میں اعلیٰ مشیر مقرر کیا گیا ہے۔

ماضی میں سوسن اوباما-بائیڈن انتظامیہ کی میڈیا پر چاپلوسی میں مصروف رہی ہیں، جبکہ رشیا گیٹ سازش کو اٹھانے میں بھی انکا بڑا کردار تھا۔ انہی خدمات کے پش نظر اب بائیڈن-ہیرس انتظامیہ نے بھی سوسن کو ٹرمپ مخالف مہم کے لیے نیا عہدہ دے دیا ہے۔

سوسن ماضی میں سی این این پر بطور تجزیہ کار، لائف بلاگ کی انتظامی مدیر اور بروکنگ انسٹی ٹیوٹ کی رکن رہی ہیں۔  امریکی صحافی گلین گرین والڈ نے اس تقرری پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ صدر ٹرمپ پر کیچر اچھالنے، میلانیا ٹرمپ سے بغض و نفرت کرنے کے عوض سوسن کو نوازا گیا ہے، ورنہ انکا ملک کی خدمت میں کوئی کردار نہیں۔ مذکورہ وکیل نے سابق صدر کے خلاف ایک کتاب بھی تصنیف کر رکھی ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us