پیر, جون 14 Live
Shadow
سرخیاں
ترکی: 20 ٹن سونا اور 5 ٹن چاندی کا نیا ذخیرہ دریافت، ملکی سالانہ پیداوار 42 ٹن کا درجہ پار کر گئی، 5 برسوں میں 100 ٹن تک لے جانے کا ارادہحکومت پنجاب کا ویکسین نہ لگوانے والوں کے موبائل سم کارڈ معطل کرنے کی پالیسی لانے کا فیصلہموساد کے سابق سربراہ کا ایرانی جوہری سائنسدان اور مرکز پر سائبر حملے کا اعترافی اشارہ: ایرانی سائنسدانوں کو منصوبہ چھوڑنے پر معاونت کی پیشکش کر دییورپی اشرافیہ و ابلاغی اداروں کے برعکس شہریوں کی نمایاں تعداد نے روس کو اہم تہذیبی شراکت دار و اتحادی قرار دے دیاروسی بحریہ نے سٹیلتھ ٹیکنالوجی سے لیس جدید ترین بحری جہاز کا مکمل نمونہ تیار کر لیا: مکمل جہاز آئندہ سال فوج کے حوالے کر دیا جائےگاٹویٹر کو نائیجیریا میں دوبارہ بحالی کیلئے مقامی ابلاغی اداروں کی طرح لائسنس لینا ہو گا، اندراج کروانا ہو گا: افریقی ملک کا امریکی سماجی میڈیا کمپنی کو دو ٹوک جواب، صدر ٹرمپ کی جانب سے پابندی پر ستائش کا بیانکاراباخ آزادی جنگ: جنگی قیدی چھڑوانے کے لیے آرمینی وزیراعظم کی آزربائیجان کو بیٹے کی حوالگی کی پیشکشمجھ پر حملے سائنس پر حملے ہیں: متنازعہ امریکی مشیر صحت ڈاکٹر فاؤچی کا اپنے دفاع میں نیا متنازعہ بیان، وباء سے شدید متاثر امریکیوں کے غصے میں مزید اضافہچین 3 سال کے بچوں کو بھی کووڈ-19 ویکسین لگانے والا دنیا کا پہلا ملک بن گیاایرانی رویہ جوہری معاہدے کی بحالی میں تعطل کا باعث بن سکتا ہے: امریکی وزیر خارجہ بلنکن

چین، پہاڑی علاقے میں خراب موسم کے دوران دوڑ کا مقابلہ: پھسلن سے حادثہ، 21 ہلاک، متعدد لاپتہ

شمال مغربی چین کے صوبہ گانسو میں دوڑ کا مقابلہ ژالہ باری اور تیز ہواؤں کے باعث بقاء کی جنگ میں تبدیل ہوگیا، دوڑ کے شرکاء ایک اونچے مقام پر پہاڑی سے پھسل گئے جس کے نتیجے میں 21 افراد کی موت واقع ہو گئی ہے۔

دوڑ کا اہتمام جِنگتائی پیلے پتھر نامی دریا کے کنارے پر واقع جنگل میں ہوا، اگرچہ جنگل میں 50 مربع کلومیٹر پر محیط پارک سیاحوں کے لیے ایک مقبول اور پرکشش مقام ہے لیکن 100 کلومیٹر لمبی دوڑ میں شدید موسم شرکاء میں جھڑپ کا باعث بن گیا۔

شرکاء جو 20 سے 31 کلومیٹر دوڈ مرحلے پر پہنچے تو ژالہ باری، تیز بارش، سرد اور تیز ہوا کے جھکڑ نے ان کو آلیا۔  موسم میں اچانک تبدیلی کے نتیجے میں 172 افراد پر مشتمل شرکاء  میں متعدد کو ہائپوتھرمیا کا سامنا کرنا پڑا۔ منتظمین نے مقابلے میں شامل متعدد افراد سے رابطہ ختم ہوجانے کی وجہ سے بالآخر مقابلے کو معطل کردیا۔

لاپتہ افراد کی تلاش میں 1200 سے زائد امدادی کارکن لگے ہوئے ہیں جبکہ جائے وقوعہ پر موجود بھاری مشینری اور لواحقین کی تعداد بھی انتظامیہ کے لیے مسائل کا باعث بن رہی ہے۔ پتھریلی زمین اور خراب موسم بھی امدادی کاروائیوں میں مشکلات پیدا کر رہے ہیں جبکہ درجہ حرارت میں اچانک ہونے والی کمی اور مٹی کا تودا گرنے سے بھی لاپتہ افراد کی تلاش مشکل ہو گئی ہے۔

چینی ذرائع ابلاغ کے مطابق دوڑ میں شریک 200 افراد میں سے 151 محفوظ ہیں جن میں سے زیادہ انتہائی معمولی طبی امداد کے بعد گھروں کو روانہ ہو گئے ہیں جبکہ 8 اب بھی زیر علاج ہیں۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us