منگل, مئی 18 Live
Shadow
سرخیاں
فوج میں بڑھتے مارکسی نظریات پر تنقید: امریکی خلائی فوج کا کمانڈو برطرف، انتظامی کارروائی کا آغازمقبوضہ فلسطین: بے بس فلسطینیوں کی جانب سے قابض صیہونی افواج پر گاڑی چڑھا کر حملہ کرنے کے واقعات میں اضافہ، درجنوں قابض فوجی زخمی، 3 فلسطینی شہیدفرانس میں جرنیلوں کے بعد پولیس افسران کا خط بھی تشویش سے بھرا خط سامنے آگیا: ملک میں بڑھتی انتظامی ناکامی پر سیاسی حلقے پریشانچین سے معاشی میدان میں مقابلے میں ناکامی پر مغرب میں ایشیائی ملک کے خلاف پراپیگنڈا تیزغزہ میں بین الاقوامی نشریاتی اداروں کے زیر استعمال عمارت پر بمباری: اے پی، الجزیرہ سمیت دنیا بھر سے مذمت، تحقیقات کا مطالبہامریکہ میں انوکھا عوامی سروے: کیا آپ شیر، ریچھ اور مگرمچھ سے مقابلے میں جیت سکتے ہیں؟ایران: سابق صدر احمدی نژاد نے بھی آئندہ صدارتی دوڑ کے لیے کاغذات نامزدگی جمع کروا دیےغلطیاں اور سبقمیرا کشمیر شبِ تاریک کے مشعل بردار سے محروم کر دیا گیاپاکستان سمیت دنیا بھر میں فلسطینیوں کے حق میں مظاہرے: یورپ میں صیہونی لابی کے زیر اثر گروہوں کے ساتھ جھڑپیں اور پولیس تشدد کے واقعات بھی درج – ویڈیو

Author: مخبر

فوج میں بڑھتے مارکسی نظریات پر تنقید: امریکی خلائی فوج کا کمانڈو برطرف، انتظامی کارروائی کا آغاز

فوج میں بڑھتے مارکسی نظریات پر تنقید: امریکی خلائی فوج کا کمانڈو برطرف، انتظامی کارروائی کا آغاز

سیاست
امریکی خلائی فوج کے ایک کمانڈر کو میڈیا سے گفتگو میں نظام پر تنقید کرنے کے جرم میں فوج سے نکال دیا گیا ہے۔ مذکورہ اہلکار گفتگو میں کہا تھا کہ امریکی فوج کو مارکسی اور لبرل نظریات تباہ کر رہے ہیں۔لیفٹیننٹ کرنل میتھیو لوہمیر، فوجی مبصر ایل ٹوڈ ووڈ کی میزبانی میں پوڈکاسٹ ‘انفارمیشن آپریشن’ میں گفتگو کر رہے تھے جس میں انہوں نے متنازعہ بیان دیا۔لوہیمیر، کولکاروڈو کے بیکلے ہوائی اڈے میں 11ویں خلائی اسکواڈرن کی کمان کررہے تھے، اپنی اشاعت شدہ کتاب، '' ارریزسٹیبل ریوولوشین: مارکسزمز گول آف کانکئسٹ اینڈ دی انمیکینگ آف امریکن ملٹری" کے پرچار کے لیے کیے پروگرام میں لوہیمیئر کا کہنا تھا کہ نیا مارکسی ایجنڈا امریکی مسلح افواج کو شدید متاثر کررہا ہے، انہوں نے گفتگو میں کہا کہ فوج کی تربیت میں اب مارکسی نظریہ تنوع پڑھایا جا رہا ہے۔امریکی فوجی افسر کا کہنا تھا کہ اب ہمارا نظام امریکی شہر...
مقبوضہ فلسطین: بے بس فلسطینیوں کی جانب سے قابض صیہونی افواج پر گاڑی چڑھا کر حملہ کرنے  کے واقعات میں اضافہ، درجنوں قابض فوجی زخمی، 3 فلسطینی شہید

مقبوضہ فلسطین: بے بس فلسطینیوں کی جانب سے قابض صیہونی افواج پر گاڑی چڑھا کر حملہ کرنے کے واقعات میں اضافہ، درجنوں قابض فوجی زخمی، 3 فلسطینی شہید

سیاست
بیت المقدس میں ایک اور فلسطینی ڈرائیور نے سات قابض صیہونی پولیس اہلکاروں پر گاڑی چڑھا دی جس سے وہ شدید زخمی ہو گئے ہیں۔اطلاعات کے مطابق ایک اور کار سوار نے بیت القمدس کے مشرقی علاقے شیخ جراح میں قابض صیہونی انتظامیہ کی عارضی چوکی پر خود کش حملہ کیا اور ان پر گاڑی چڑھا دی، جس سے چوکی میں موجود ساتوں پولیس اہلکار زخمی ہوگئے اور جوابی کارروائی میں فلسطینی ڈرائیور قابض افواج کی گولیاں کا نشانہ بن کر موقع پر ہی شہید ہو گیا۔سماجی ذرائع ابلاغ پر نشر ہونے والی ایک ویڈیو میں ایک تیز رفتار کار کو قابض صیہونی پولیس چوکی سے ٹکراتے دیکھا جا سکتا ہے۔https://twitter.com/glick_sh/status/1393955959102451720?s=20اس واقعے میں قابض صیہونی پولیس اور سرحدی جتھوں کے سات اہلکار زخمی ہوئے ہیں۔ واقع میں اپنے ہی ساتھیوں کی بندوق سے نکلی گولی صیہوی خاتون پولیس افسر کی ٹانگ میں لگی جس کا علاج جاری ...
فرانس میں جرنیلوں کے بعد پولیس افسران کا خط بھی تشویش سے بھرا خط سامنے آگیا: ملک میں بڑھتی انتظامی ناکامی پر سیاسی حلقے پریشان

فرانس میں جرنیلوں کے بعد پولیس افسران کا خط بھی تشویش سے بھرا خط سامنے آگیا: ملک میں بڑھتی انتظامی ناکامی پر سیاسی حلقے پریشان

سیاست
فرانسیسی پولیس کے ایک اعلیٰ عہدے دار نے ان 100 سے زائد حاضر ملازمت پولیس اہلکاروں پر شدید تنقید کی ہے جنہوں نے صدر کو پولیس کے لیے اضافی حقوق کے متنازعہ قانون کے لیے خط لکھا یا اسکی توثیق کی تھی۔خط پر لکھا ہے کہ پولیس پر حملے، فرانس کی جمہوری اقدار، رواج اور معاشرتی نقشے کو مسترد کررہے ہیں۔ خط میں رواں ماہ جنوبی شہر ایگونن میں منشیات فروشوں پر چھاپے کے دوران ہلاک ہونے والے ایک افسر ایرک میسن کی موت کا ذکر بھی کیا گیا ہے۔خط میں ملک کی مسلم آبادی کا نام لیے بغیر اشارتاً کہا گیا ہے کہ مسلح اور نقاب پوش افراد گروہوں کی شکل میں پورے ملک میں پھیل رہے ہیں، ایسے لگتا ہے کہ ملک فرانس کئی حصوں میں بٹ گیا ہے۔واضح رہے کہ اسی منطق پر مبنی اس سے پہلے بھی ایک کھلا خط صدر میخرون کو 93 ریٹائر اور فعال فوجی اہلکار بھی لکھ چکے ہیں۔ جس میں انہوں نے قومی سلامتی اور امن عامہ کے ضمن میں فرانس کو مسل...
چین سے معاشی میدان میں مقابلے میں ناکامی پر مغرب میں ایشیائی ملک کے خلاف پراپیگنڈا تیز

چین سے معاشی میدان میں مقابلے میں ناکامی پر مغرب میں ایشیائی ملک کے خلاف پراپیگنڈا تیز

نقطہ نظر
مغربی ممالک میں حکومتیں چین کے خلاف اپنی عوام میں نفرت پیدا کرنے کے لیے اوچھے ہتھکنڈے استعمال کررہی ہیں۔ مغربی ذرائع ابلاغ میں چین کو ایک خطرناک شر اور ایسے ملک کے طور پر پیش کیا جارہا ہے جہاں عوام پر ظلم اور تشدد کیا جاتا ہے، بغیر وجہ کے شہریوں کو جیلوں میں ڈالا جاتا ہے اور اقلیتیں بالکل محفوظ نہیں ہیں۔ جبکہ کورونا کے ماخذ کے حوالے سے پراپیگنڈا بھی جاری و ساری ہے۔ مغربی ذرائع ابلاغ میں چینی صدر کو جنونی اور طاقت کے نشے میں مست ایک ایسی قیادت کے طور پر پیش کیا جاتا ہے جو دنیا کو تباہ کرنے پر تلی ہوئی ہے۔اس کے بالمقابل امریکہ اور صدر بائیڈن کو دنیا کے مسیحا کے طور پر پیش کیا جارہا ہے جن کے بغیر دنیا کا نظام درہم برہم ہو جائے۔چین کی حالیہ برسوں میں اقتصادی ترقی دراصل اس سارے پراپیگنڈے کے پیچھے بنیادی وجہ ہے۔ چین کی بڑھتی ہوئی اقتصادی اور عسکری قوت کے خلاف مغربی ذرائع ابلاغ نے کھلی ج...
غزہ میں بین الاقوامی نشریاتی اداروں کے زیر استعمال عمارت پر بمباری: اے پی، الجزیرہ سمیت دنیا بھر سے مذمت، تحقیقات کا مطالبہ

غزہ میں بین الاقوامی نشریاتی اداروں کے زیر استعمال عمارت پر بمباری: اے پی، الجزیرہ سمیت دنیا بھر سے مذمت، تحقیقات کا مطالبہ

سیاست
غزہ میں بین الاقوامی ذرائع ابلاغ کے مراکز پر صیہونی جنگی طیاروں کے حملے کی تمام دنیا خصوصاً میڈیا کی طرف سے شدید مذمت کی گئی ہے۔ غزہ میں میڈیا دفاتر کی عمارت پر بمباری کی مذمت کرتے ہوئے الجزیرہ اور ایسوسی ایٹ پریس نے اپنے بیانات میں کہا کہ حملہ عملے کے لیے جان لیوا ہو سکتا تھا، صحافیوں کو وقت رہتے ملنے والی اطلاع کے باعث وہ عمارت چھوڑنے میں کامیاب رہے اور انکی جان بچ گئی۔https://www.youtube.com/watch?v=DWLYu-UobVgذرائع ابلاغ کے اداروں کا کہنا ہے کہ قابض صیہونی انتظامیہ کو بخوبی پتہ تھا کہ عمارت میں ذرائع ابلاگ کے دفاتر اور صحافی ہیں، اور یہاں سے کوئی عسکری کارروائی نہیں ہو رہی لیکن طاقت کے نشے میں چور انتظامیہ نے بمباری سے دریغ نہ کیا۔امریکی ذرائع ابلاغ کے اداروں نے امریکی محکمہ خارجہ اور اقوام متحدہ سے معاملے کی تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے اور اس کے مقاصد اور اثرات کو سامنے لا...
امریکہ میں انوکھا عوامی سروے: کیا آپ شیر، ریچھ اور مگرمچھ سے مقابلے میں جیت سکتے ہیں؟

امریکہ میں انوکھا عوامی سروے: کیا آپ شیر، ریچھ اور مگرمچھ سے مقابلے میں جیت سکتے ہیں؟

رہن سہن
امریکہ میں جانوروں سے مقابلے کے حوالے سے ایک منفرد عوامی سروے کیا گیا ہے۔ امریکیوں سے پوچھا گیا کہ وہ چوہے، بلی، ہنس، عقاب، گوریلے، سانپ، کینگرو، بھیریے اور مگرچھ سے مقابلہ کرنے پر جیت سکتے ہیں یا ہیں؟جمعرات کو یوگو سروے کے نتائج سامنے آئے جس میں 1224 بالغ امریکیوں سے پوچھا گیا کہ وہ غیر مسلح تصادم میں کن جانوروں کو شکست دینے کے بارے میں پراعتماد ہیں۔اپنی نوعیت کے اس انوکھے سروے کے نتائج بھی دلچسپ آئے ہیں جس میں شہریوں کی سب سے زیادہ تعداد نے چوہے پر ہی اکتفا کیا ہے اور 72٪ نے چوہے سے ممکنہ جیت کا اظہار کیا ہے۔سروے کے مطابق 69٪ نے بلیوں، 61 فیصد نے ہنسوں، 49٪ نے درمیانے قد کے کتوں کو مقابلے میں شکست دینے کے ممکنہ امکان کا اظہار کیا ہے۔اس کے علاوہ عقاب (30 فیصد)، بڑے کتے (23 فیصد)، بندر (17 فیصد)، کوبرا سانپ (15 فیصد)، کینگرو (14 فیصد)، بھیڑیا ( 12 فیصد)، اور مگرمچھ سے (9 ...
ایران: سابق صدر احمدی نژاد نے بھی آئندہ صدارتی دوڑ کے لیے کاغذات نامزدگی جمع کروا دیے

ایران: سابق صدر احمدی نژاد نے بھی آئندہ صدارتی دوڑ کے لیے کاغذات نامزدگی جمع کروا دیے

سیاست
ایران کے سابق صدر محمود احمدی نژاد ایک بار پھر صدارتی دوڑ میں شامل ہو گئے ہیں۔ ملک کے آئندہ صدارتی انتخابات میں چیف جسٹس اور پارلیمنٹ کے سابق اسپیکر بھی ان کے مدمقابل ہوں گے۔ایران میں 18 جون کو اگلے صدارتی انتخابات ہوں گے جس میں صدر حسن روحانی کے جانشین کا تعین ہو گا۔ صدر حسن روحانی نے مغرب کی نظر میں ایک اعتدال پسند رہنما کے طور پر ملک کو چلایا جنہوں نے جوہری منصوبہ ترک کر کے امریکہ کے ساتھ 2015 میں کامیاب معاشی معاہدہ کیا۔ ملکی قانون کے مطابق وہ مسلسل تیسری بار صدارت کے لیے انتخابات میں شمولیت نہیں کر سکتے لہٰذا وہ دوڑ میں حصہ لیے بغیر ہی باہر ہو جائیں گے۔حسن روحانی کی جگہ اگر احمدی نژاد، جو مغرب کے سامنے ایک سخت گیر رہنما کی شہرت کے حامل ہیں، منتخب ہو جاتے ہیں تو ایران کا معاشی معاہدہ دوبارہ خطرے میں پڑ سکتا ہے۔ تاہم مختلف سیاسی حلقے احمدی نژاد کو ایک مظبوط امیدوار کے طور پر نہ...
غلطیاں اور سبق

غلطیاں اور سبق

بلاگ
گورنمنٹ پائلٹ سکول، سیالکوٹ آٹھویں جماعت میں ہمیں ماسٹر فیروز دین صاحب ڈرائنگ سیکھاتے تھے، بہت اعلیٰ ظرف کے انسان اور مشفق استاد تھے۔ ڈرائنگ کے پیریڈ میں پوری جماعت کو ڈرائنگ روم میں جانا پڑتا تھا۔ ڈرائنگ روم قابل دید تھا، پورا ڈرائنگ روم فیروز دین صاحب کے شاہکاروں سے سجا ہوا تھا۔ ایک دن انہوں نے سب طلباء کو گھر سے سیب بنا کر لانے کا کام دیا۔اگلے دن گھریلو مشق دیکھتے ہوئے ایک لڑکے کو کھڑا کیا اور قدرے برہمی سے بولے کہ "یہ تم نے سیب بنا کر نیچے سیب کیوں لکھا ہے؟ کیا تمہیں شک ہے کہ دیکھنے والا اسے سیب کی بجائے کچھ اور سمجھ لے گا؟؟؟پھر بولے کہ "تم کام ہی ایسا کرو کہ وہ خود بولے، تمہارا کام دیکھتے ہی دیکھنے والا اسے بلا وضاحت پہچان جائے کہ یہ سیب ہے۔"پھر تھوڑے تؤقف کے بعد پوری جماعت سے مخاطب ہوئے اور کہا کہ "کام کا معیار انسان کی شخصیت کا عکاس ہوتا ہے۔ زندگی میں جو بھی کام کرو پوری ل...
میرا کشمیر شبِ تاریک کے مشعل بردار سے محروم کر دیا گیا

میرا کشمیر شبِ تاریک کے مشعل بردار سے محروم کر دیا گیا

بلاگ
وہ اک ستارہ جو ضوفگن تھا حیات کے مغربی افق پر سیاہ شب کے پاسبانو خوشی مناؤ کہ وہ بھی ڈوبامحمد اشرف خان صحرائی، کشمیرشبِ تاریک میں کسی قافلے کے مشعل بردار کا چھن جانا ایک ایسا نقصان ہے جس کی بھرپائی ایک مشکل عمل ہے۔ تاریک راتوں میں قندیل رہبانی کا کام انجام دینے والوں کی تعداد بہت مختصر ہوتی ہے۔ ملت اسلامیہ کشمیر ایسے ہی ایک چراغ سے محروم ہوگئی۔  تحریکِ آزادئ کشمیر کی صف اوّل کے رہنما محمد اشرف خان صحرائی سنت یوسفی کی ادائیگی کے دوران اپنے خالق حقیقی سے جا ملے، اور کشمیری قافلے کا ایک اور چراغ بجھ گیا۔ صحرائی صاحب کا ثبات کوہِ بلند قامت جیسا تھا۔ ایک اونچی چوٹی والے پہاڑ کی مانند، جو زلزلوں میں بھی قائم رہتا ہے۔ وہ عظمتوں اور عزیمتوں کا ایک ایسا پہاڑ تھے جن کے ثبات سے انسانیت حق پر ثابت قدم رہنے کا سبق سیکھتی ہے۔یہ صحرائی صاحب ہی تھے جنہوں نے عالمِ شباب میں شیخ عبدالل...
پاکستان سمیت دنیا بھر میں فلسطینیوں کے حق میں مظاہرے: یورپ میں صیہونی لابی کے زیر اثر گروہوں کے ساتھ جھڑپیں اور پولیس تشدد کے واقعات بھی درج – ویڈیو

پاکستان سمیت دنیا بھر میں فلسطینیوں کے حق میں مظاہرے: یورپ میں صیہونی لابی کے زیر اثر گروہوں کے ساتھ جھڑپیں اور پولیس تشدد کے واقعات بھی درج – ویڈیو

عالمی
پاکستان سمیت دنیا بھر میں مسلمان اور انسانیت کا درد رکھنے والے فلسطین میں صیہونی مظالم کے خلاف مظاہرے کر رہے ہیں۔ یورپ کے بعض شہروں میں مظاہرین پر پولیس کے تشدد کے واقعات بھی سامنے آئے ہیں جبکہ کچھ مقامات پر صیہونی حمایت میں نکلنے افراد کے ساتھ جھڑپیں بھی خبر بنی ہیں۔https://www.youtube.com/watch?v=NaRDaL0cHG0https://www.youtube.com/watch?v=Y1IgfJvaeg0https://www.youtube.com/watch?v=NFHOLh-EaR4https://twitter.com/DomCulv/status/1393580437436575747?s=20https://www.youtube.com/watch?v=n8Hql1nqCCYhttps://www.youtube.com/watch?v=44K2X7hPqFIhttps://twitter.com/MehmetArdic_/status/1393550275135344641?s=20https://twitter.com/monsieurzak932/status/1393553489603842061?s=20https://twitter.com/RemyBuisine/status/1393544909626425345?s=20https...

Contact Us