Shadow
سرخیاں
مغربی طرز کی ترقی اور لبرل نظریے نے دنیا کو افراتفری، جنگوں اور بےامنی کے سوا کچھ نہیں دیا، رواں سال دنیا سے اس نظریے کا خاتمہ ہو جائے گا: ہنگری وزیراعظمامریکی جامعات میں صیہونی مظالم کے خلاف مظاہروں میں تیزی، سینکڑوں طلبہ، طالبات و پروفیسران جیل میں بندپولینڈ: یوکرینی گندم کی درآمد پر کسانوں کا احتجاج، سرحد بند کر دیخود کشی کے لیے آن لائن سہولت، بین الاقوامی نیٹ ورک ملوث، صرف برطانیہ میں 130 افراد کی موت، چشم کشا انکشافاتپوپ فرانسس کی یک صنف سماج کے نظریہ پر سخت تنقید، دور جدید کا بدترین نظریہ قرار دے دیاصدر ایردوعان کا اقوام متحدہ جنرل اسمبلی میں رنگ برنگے بینروں پر اعتراض، ہم جنس پرستی سے مشابہہ قرار دے دیا، معاملہ سیکرٹری جنرل کے سامنے اٹھانے کا عندیامغرب روس کو شکست دینے کے خبط میں مبتلا ہے، یہ ان کے خود کے لیے بھی خطرناک ہے: جنرل اسمبلی اجلاس میں سرگئی لاوروو کا خطاباروناچل پردیش: 3 کھلاڑی چین اور ہندوستان کے مابین متنازعہ علاقے کی سیاست کا نشانہ بن گئے، ایشیائی کھیلوں کے مقابلے میں شامل نہ ہو سکےایشیا میں امن و استحکام کے لیے چین کا ایک اور بڑا قدم: شام کے ساتھ تذویراتی تعلقات کا اعلانامریکی تاریخ کی سب سے بڑی خفیہ و حساس دستاویزات کی چوری: انوکھے طریقے پر ادارے سر پکڑ کر بیٹھ گئے

یورپی یونین ہمارے سر پر بندوق نہ تانے، رویہ نہ بدلا تو بریگزٹ کی طرز پر پولیگزٹ ہو گا: پولینڈ وزیراعظم

پولینڈ کے وزیراعظم ماتیعوسزموراویئسکی نے یورپی اتحاد کو دھمکی دی ہے کہ اگر اس نے اپنا رویہ نہ بدلا اور پولینڈ پر دباؤ جاری رکھا تو پولینڈ بھی پوری قوت سے جواب دے گا۔ انکا کہنا تھا کہ یورپی یونین نے پولینڈ کے سر پر بندوق تانی ہوئی ہے، اور جیسے کہ پولینڈ کے خلاف تیسری عالمی جنگ کا اعلان کیا جارہا ہے۔ عالمی وباء کے دوران پولینڈ پر شدید دباؤ ڈالا جا رہا ہے، پولینڈ کو مجبور کیا جا رہا ہے کہ وہ بھی جواب دے۔

پولینڈ کے وزیراعظم کی جانب سے سخت الفاظ پر مبنی بیان یورپی یونین عدالت کی جانب سے مقامی قوانین کے خلاف متنازعہ فیصلہ سنانے کے بعد سامنے آیا ہے، جس پر پولینڈ کی اعلیٰ عدالت نے مداخلت کرتے ہوئے حکومت کو اس پر عملدرآمد سے روک دیا ہے۔ واضح رہے کہ یورپی یونین کے قوانین کے تحت بھی ممالک کے اندرونی قوانین کو یورپی یونین کے قوانین پر فوقیت حاصل ہے لیکن اتحادی انتظامیہ پولینڈ پر مالی دباؤ بڑھا کر اسے گھٹنے ٹیکنے پر مجبور کر رہی ہے۔

ایسے میں پولینڈ کے وزیراعظم نے اپنے حالیہ بیان میں کہا ہے کہ اگر یورپی یونین نے پولینڈ کے خلاف تیسری جنگ عظیم کا اعلان کر دیا تو کیا ہو گا؟ پولینڈ اپنی خود مختاری کا پورا دفاع کرے گا، اور اس کے لیے ہر ممکن ہتھیار اور رستے کا استعمال کیا جائے گا۔ فنانشل ٹائمز کو دیے انٹرویو میں مورایئسکی کا کہنا تھا کہ اگر اس میں انہیں یورپی یونین کے ماحولیاتی تبدیلیوں کے حوالے سے متوقع نئے قانون کو منظور ہونے میں رکاوٹ بھی ڈالنی پڑی تو وہ ہچکچائیں گے نہیں، اور اسے ویٹو کر دیں گے۔ ہم پہلے سے ہی شدید تعصب اور تفریق کو محسوس کر رہے ہیں، اس رویے کو مزید برداشت نہیں کیا جائے گا۔

وزیراعظم مورایئسکی نے واضح طور پر کہا کہ برسلز نے کورونا سے نمٹنے کے لیے پولینڈ کے 36 ارب یورو بھی روک رکھے ہیں، یہ ہماری حق تلفی ہے، اور حکومت پر دباؤ بڑھ رہا ہے کہ وہ سخت فیصلے لے۔ انکا مزید کہنا تھا کہ یورپی یونین اپنے ہی قوانین کی عدولی کر رہی ہے، اسے خاموشی سے برداشت نہیں کیا جائے گا۔ ہم عدالتی نظام میں ترامیم کے لیے بھی متفق ہیں لیکن اس میں درکار وقت کو سمجھا جائے اور سر پر بندوق نہ تانی جائے۔ اس سے ہم مزید اصلاحات نہیں لا سکیں گے۔

پولینڈ کی قیادت کی جانب سے سخت ناراضگی کے اظہار اور الفاظ کے استعمال کے باوجود امید کا اظہار کیا گیا ہے، ان کا کہنا تھا کہ انکی جرمنی اور فرانس کی قیادت کے ساتھ حالیہ ملاقات خوشگوار رہی، انہیں امید ہے کہ پولینڈ کے برطانیہ کی طرح پولیگزٹ (اتحاد سے نکلنے) تک نوبت نہیں جائے گی۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

4 × 3 =

Contact Us