پیر, دسمبر 6 Live
Shadow
سرخیاں
امریکی سی آئی اے اہلکاروں کے ایک بار پھر کم عمر بچوں بچیوں کے ساتھ جنسی جرائم میں ملوث ہونے کا انکشافامریکہ کا مشرقی افریقہ میں تاریخ کے سب سے بڑے فوجی آپریشن کا اعلان: 1 ہزار سے زائد مزید کمانڈو تیارروسی صدر کی ثالثی: آزربائیجان اور آرمینیا کے مابین سرحدی جھڑپیں ختم، سرحدی حدود کے تعین پر اتفاق، جنگ سے متاثر آبادی اور دیگر انسانی حقوق کے تحفظ کی بھی یقین دہانینائیجیر: فرانسیسی فوج کی فائرنگ سے 2 شہری شہید، 16 زخمیامریکی فوج میں ہر 4 میں سے 1 عورت اور 5 میں سے 1 مرد جنسی زیادتی کا نشانہ بنتا ہے، بیشتر خود کشی کر لیتے، کورٹ مارشل کے خوف سے کوئی آواز نہیں اٹھاتا: سابقہ اہلکارروس کا غیر ملکی سماجی میڈیا کمپنیوں پر ملک میں کاروباری اندراج کے لیے دباؤ جاری: رواں سال کے آخر تک عمل نہ ہونے پر پابندی لگانے کا عندیاامریکہ ہائپر سونک ٹیکنالوجی میں چین اور روس سے بہت پیچھے ہے: امریکی جنرل تھامپسنامریکی تفریحی میڈیا صنعت کس عقیدے، نظریے اور مقصد کے تحت کام کرتی ہے؟چوالیس فیصد امریکی اولاد پیدا کرنے کی خواہش نہیں رکھتے: پیو سروے رپورٹچینی کمپنی ژپینگ نے جدید ترین برقی کار جی-9 متعارف کر دی: بیٹری کے معیار اور رفتار میں ٹیسلا کو بھی پیچھے چھوڑ دیا

روس کے حملہ کرنے پر جرمنی اور فرانس کو فوری مدد کے لیے پہنچنا ہو گا، معاملہ دفتری کارروائی کی نظر نہ ہو جائے: یوکرینی وزیر خارجہ

یوکرین کے وزیر خارجہ دیمتری کلیبا نے جرمنی اور فرانس سے مدد طلب کرتے ہوئے کہا ہے کہ روس یوکرین کی سرحد پر بڑی عسکری تنصیبات کر رہا ہے، ملک میں افواہیں سرگرم ہیں کہ روس کسی بھی وقت یوکرین پر حملہ کر سکتا ہے، جرمنی اور فرانس کو ایسی صورتحال میں یوکرین کی پوری مدد کے لیے تیار رہنا چاہیے۔

یوکرین کے وزیرخارجہ نے جرمنی اور فرانس کی قیادت سے ملاقات میں مزید کہا کہ کسی بھی ہنگامی حالات میں دونوں مغربی ممالک کو فوری ردعمل دکھانا ہو گا، معاملہ دفتری کارروائیوں میں ہی نہ دب جائے۔ اگر روس نے حملہ کر دیا تو ہمارے پاس رابطے کا وقت بھی نہیں ہو گا، لہٰذا حالات کو مدنظر رکھتے ہوئے جرمنی اور فرانس کو خود مطلوبہ کارروائی عمل میں لانا ہو گی۔ انکا مزید کہنا تھا کہ ہم تو ابھی سے تیاری اور حکمت عملی بنانے پر زور دیں گے، کیونکہ جنگ کے دوران یہ سب سوچنا وقت ضائع کرنے کے سوا کچھ نہیں ہے۔

یوکرینی وزیرخارجہ نے روس کے ساتھ بڑھتی کشیدگی پر کہا کہ وہ قطعاً ابتداء نہیں کریں گے لیکن اگر ان پر حملہ ہوا تو ہر ممکن دفاع انکا حق ہوگا۔

واضح رہے کہ روس ان تمام تحفظات کو مسترد کر چکا ہے، گزشتہ ماہ بھی اپنے بیان میں روسی دفتر خارجہ کی ترجمان نے مگربی ذرائع ابلاغ میں شائع ان تمام رپورٹوں کو مسترد کرتے ہوئے انکی مذمت کی تھی جن میں روس کی جانب سے یوکرین پر چڑھائی کی تیاریوں کا دعویٰ کیا گیا تھا۔ ان کا کہنا تھا دنیا بھر میں افواج عسکری مشقیں کرتی ہیں، روسی افواج کی ملک کے اندر کسی قسم کی مشق کا کسی ہمسایہ ملک کو دھمکانے سے کوئی تعلق نہیں۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us