Shadow
سرخیاں
مغربی طرز کی ترقی اور لبرل نظریے نے دنیا کو افراتفری، جنگوں اور بےامنی کے سوا کچھ نہیں دیا، رواں سال دنیا سے اس نظریے کا خاتمہ ہو جائے گا: ہنگری وزیراعظمامریکی جامعات میں صیہونی مظالم کے خلاف مظاہروں میں تیزی، سینکڑوں طلبہ، طالبات و پروفیسران جیل میں بندپولینڈ: یوکرینی گندم کی درآمد پر کسانوں کا احتجاج، سرحد بند کر دیخود کشی کے لیے آن لائن سہولت، بین الاقوامی نیٹ ورک ملوث، صرف برطانیہ میں 130 افراد کی موت، چشم کشا انکشافاتپوپ فرانسس کی یک صنف سماج کے نظریہ پر سخت تنقید، دور جدید کا بدترین نظریہ قرار دے دیاصدر ایردوعان کا اقوام متحدہ جنرل اسمبلی میں رنگ برنگے بینروں پر اعتراض، ہم جنس پرستی سے مشابہہ قرار دے دیا، معاملہ سیکرٹری جنرل کے سامنے اٹھانے کا عندیامغرب روس کو شکست دینے کے خبط میں مبتلا ہے، یہ ان کے خود کے لیے بھی خطرناک ہے: جنرل اسمبلی اجلاس میں سرگئی لاوروو کا خطاباروناچل پردیش: 3 کھلاڑی چین اور ہندوستان کے مابین متنازعہ علاقے کی سیاست کا نشانہ بن گئے، ایشیائی کھیلوں کے مقابلے میں شامل نہ ہو سکےایشیا میں امن و استحکام کے لیے چین کا ایک اور بڑا قدم: شام کے ساتھ تذویراتی تعلقات کا اعلانامریکی تاریخ کی سب سے بڑی خفیہ و حساس دستاویزات کی چوری: انوکھے طریقے پر ادارے سر پکڑ کر بیٹھ گئے

صدر پوتن کی مصر کو بھاری سرمایہ کاری کی پیشکش: مصر نے یوکرین کو ہتھیار بیچنے سے انکار کر دیا

امریکی اخبار نے دعویٰ کیا ہے کہ مصر نے یوکرین تنازعے میں شامل نہ ہونے کا عندیا دے دیا ہے۔ وال سٹریٹ جرنل نے مصری حکام کے حوالے سے دعویٰ کیا ہے کہ امریکہ کی مسلسل درخواست کے باوجود عرب ملک نے یوکرین کو ہتھیاروں کی فراہمی سے انکار کر دیا ہے۔

اخبار کے مطابق مصر سے ٹینک شکن میزائل اور فضائی دفاعی نظام کا مطالبہ کیا جا رہا اور یہ سلسلہ کئی ماہ سے جاری تھا تاہم مصر نے مشاورت کے بہانے وقت مانگتے ہوئے بالآخر فراہمی سے انکار کر دیا ہے۔

اخبار نے امریکی انتظامیہ سے اس حوالے سے پوچھا تو ان کا کہنا تھا کہ مصر نے دوٹوک نہ نہیں کی البتہ ایسا کوئی ارادہ نہ ہونے کی رائے کا اظہار ضرور کیا ہے۔ البتہ امریکی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ وہ تاحال پر امید ہیں کہ مصر ہمارا اتحادی ہے اور اس حوالے سے بات چیت ہو رہی ہے۔

اخبار کا کہنا ہے کہ ہتھیاروں کہ فراہمی یوکرین کے لیے انتہائی اہم ہے، اگر واشنگٹن یوکرین کو تحفظ فراہم نہ کر سکا تو خطے میں حالات امریکہ کے ہاتھ سے نکل سکتے ہیں۔

واضح رہے کہ کچھ امریکی ارکان کانگریس نے مصر کی ۳۲ کروڑ ڈالر کی عسکری مالی معاونت روکنے کے لیے حکومت پر دباؤ بنایا ہوا ہے، اور ممکنہ طور پر یہ بھی ایک وجہ ہے کہ مصر کی فوجی حکومت امریکہ کو اپنی اہمیت کا احساس دلانے کی کوشش کر رہی ہیں۔

جبکہ دوسری طرف روسی شہر سینٹ پیٹرزبرگ میں منعقد ہونے والے افریقہ سمٹ میں روسی صدر پوتن نے مصر کو بھاری سرمایہ کاری کا عندیا دیا ہے، جس میں نہر سوویز کے اطراف میں خصوصی صنعتی شہر اور دیگر شعبوں میں سرمایہ کاری کی پیشکش شامل ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

15 − 11 =

Contact Us