اتوار, اکتوبر 25 Live
Shadow

کورونا پابندیوں کے خلاف جرمن شہریوں کا مظاہرہ، لبرل اور نسل پرست گروہ مظاہرے میں بھڑ گئے، پولیس نے 300 کو دھڑ لیا، باقی فرار

جرمنی میں کووڈ19 کی پابندیوں سے اکتائے شہریوں نے سڑکوں پر نکل کر احتجاج کرنا چاہا پر مخالف فکر کے گروہوں کے آمنے سامنے آںے پر مظاہرے جھڑپ میں بدل گئے۔ پولیس نے روکنا چاہا تو مظاہرین نے پولیس کو بھی رگڑ دیا۔

جرمن خبر رساں اداروں کے مطابق دارالحکومت برلن میں 35 سے 38 ہزار افراد کورونا وائرس کی پابندیوں کے خلاف سڑکوں پر نکلے تو روسی سفارتخانے کے سامنے نسل پرست اور لبرل قوتوں کا ٹاکرا ہو گیا۔

ایسے میں مظاہرین نے ایک دوسرے پر دھاوا بول دیا جس پر بیچ بچاؤ کے لیے پہنچنے والی پولیس سے بھی شہری الجھ پڑے، اور یوں معاملہ جھڑپوں تک پہنچ گیا۔ مظاہرین نے پولیس پر پتھراؤ کیا، بوتلیں پھینکیں، جس پر بالآخر پولیس نے قانونی کارروائی کرتے ہوئے سینکڑوں مظاہرین کو گرفتار کرلیا ہے۔

برلن حکام نے رواں ہفتے کورونا مخالف مظاہروں پر پابندی لگائی تھی، جسے مقامی عدالت نے ختم کرتے ہوئے مظاہروں کی اجازت دے دی تھی، تاہم گروہوں کی جھڑپ اور پولیس سے الجھنے پر 300 سے زائد شہریوں کو جیل یاترا کرنا پڑ گئی ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں