اتوار, April 10 Live
Shadow
سرخیاں
افغانستان میں امریکی فوج کی جانب سے تشدد کی تربیت کے لیے بلوچی قیدی کو استعمال کرنے کا انکشافہندوستانی میزائل کا مبینہ غلطی سے پاکستانی حدود میں گرنے کا واقعہ: امریکہ کی طرف سے متعصب جبکہ چین کی جانب سے نصیحت آمیز ردعملمیٹا آسٹریلوی سیاستدانوں کو سائبر حملوں اور جھوٹی خبروں سے بچنے کی تربیت دے گییوکرین: مغربی ممالک سے آئے 180 سے زائد جنگجو ہوائی حملے میں ہلاک، روس کی مغربی ممالک کو تنبیہ، سب نشانے پر ہیں، چُن چُن کر ماریں گےاسرائیل پر تاریخ کا بڑا سائبر حملہ: وزیراعظم، وزارت داخلہ اور وزارت صیہونی بہبود کی ویب سائٹیں ہیک اور تلفروس اور یوکرین کے مابین جلد امن معاہدہ طے پا جائے گا: روسی مذاکرات کاریوکرینی مہاجرین کی تعداد 50 لاکھ سے بڑھ گئی: اقوام متحدہفیس بک اور انسٹاگرام کی شدید متعصب پالیسی کا اعلان: روسی صدر اور فوج کیخلاف نفرت اور موت کے پیغامات شائع کرنے کی اجازت، نتیجتاً مغربی ممالک میں آرتھوڈاکس کلیساؤں اور روسی کاروباروں پر حملوں کی خبریںترکی کا بھی روس کے ساتھ مقامی پیسے میں تجارت کرنے کا اعلانمغرب کے دوہرے معیار: دنیا پر روس سے تجارت پر پابندیاں، برطانیہ سمیت بیشتر مغربی ممالک روس سے گیس و تیل کی خریداری جاری رکھیں گے

کرغزستان میں انتخابی دھاندلی کا شور: مظاہرین نے حکومتی سیکرٹریٹ پر قبضہ کر لیا (ویڈیو)۔

وسطی ایشیا کے مسلم ملک کرغزستان میں انتخابات میں مبینہ دھاندلی کے خلاف عوام سڑکوں پر نکل آئی ہے۔

صدر نورونبے جینبیکوف کا کہنا ہے کہ حزب اختلاف دھاندلی کے نام پر ملک میں بے امنی پھیلانا چاہتی ہے، کوئی بھی چیز ملک میں انتشار پھیلانے کی وجہ نہیں بن سکتی۔

صدر نے الیکشن کمیشن کو معاملے کی تحقیقات کرنے اور کسی شبہے کی صورت میں انتخابات کو مسترد کرنے کا اختیار دیتے ہوئے عوام سے پر امن رہنے کی گزارش کی ہے۔

ہنگاموں میں اب تک متعدد سرکاری عمارتوں کو نظر آتش کر دیا گیا ہے، سرکاری دستاویزات کو جلایا جا رہا ہے جبکہ پولیس اور دیگر سکیورٹی اداروں کے ساتھ چپکلش میں 600 سے زائد افراد کے زخمی ہونے اور ایک شہری کی ہلاکت کی اطلاعات ہیں۔

واضح رہے کہ گزشتہ اتوار کرغزستان میں پارلیمانی انتخابات ہوئے تھے جس میں 16 جماعتوں نے حصہ لیا۔ 16 میں سے صرف 4 جماعتیں بنیادی 7 فیصد ووٹ لے کر ضمانت پورا کرنے میں کامیاب رہیں جبکہ باقی 12 جماعتوں کی ضمانتیں ضبط ہو چکی ہیں۔ حزب اختلاف کا کہنا ہے کہ پارلیمان میں جگہ پانے والی 4 جماعتوں میں سے 2 کو حکومتی مدد حاصل تھی۔

حزب اختلاف کا الزام ہے کہ حکومت نے پیسوں سے ووٹ خریدے، انتخابی مراکز پر دھاندلی کی اور مجموعی طور پر انتخابات کو چرایا ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us