جمعرات, اکتوبر 28 Live
Shadow
سرخیاں
جمناسٹک عالمی چیمپین مقابلے میں روسی کھلاڑی دینا آویرینا نے 15ویں بار سونے کا تمغہ جیت کر نیا عالمی ریکارڈ بنا دیا، بہن ارینا دوسرے نمبر پر – ویڈیویورپی یونین ہمارے سر پر بندوق نہ تانے، رویہ نہ بدلا تو بریگزٹ کی طرز پر پولیگزٹ ہو گا: پولینڈ وزیراعظمسابق سعودی جاسوس اہلکار سعد الجبری کا تہلکہ خیز انٹرویو: سعودی شہزادے محمد بن سلمان پر قتل کے منصوبے کا الزام، شہزادے کو بے رحم نفسیاتی مریض قرار دے دیاملکی سیاست میں مداخلت پر ترکی کا سخت ردعمل: 10 مغربی ممالک نے مداخلت سے اجتناب کا وضاحتی بیان جاری کر دیا، ترک صدر نے سفراء کو ملک بدر کرنے کا فیصلہ واپس لے لیاترکی کو ایف-35 منصوبے سے نکالنے اور رقم کی تلافی کے لیے نیٹو کی جانب سے ایف-16 طیاروں کو جدید بنانے کی پیشکش: وزیر دفاع کا تکنیکی کام شروع ہونے کا دعویٰ، امریکہ کا تبصرے سے انکارترک صدر ایردوعان کا اندرونی سیاست میں مداخلت پر 10 مغربی ممالک کے سفراء کو ناپسندیدہ قرار دینے کا فیصلہبحرالکاہل میں چینی و روسی جنگی بحری مشقیں مکمل – ویڈیونائجیریا: جیل حملے میں 800 قیدی فرار، 262 واپس گرفتار، 575 تاحال مفرورترکی: فسلطینی طلباء کی جاسوسی کرنے والا 15 رکنی صیہونی جاسوس گروہ گرفتار، تحقیقات جاریامریکی انتخابات میں غیر سرکاری تنظیموں کے اثرانداز ہونے کا انکشاف: فیس بک کے مالک اور دیگر ہم فکر افراد نے صرف 2 تنظیموں کو 42 کروڑ ڈالر کی خطیر رقم چندے میں دی، جس سے انتخابی عمل متاثر ہوا، تجزیاتی رپورٹ

سابق روسی صدور تاحیات سینٹر بن سکتے ہیں: صدر پوتن نے سابق صدور کے لیے مراعات سے بھرا نیا قانونی مسودہ اسمبلی میں پیش کر دیا

روسی صدر ولادیمیر پوتن نے پارلیمنٹ میں مسودہ جمع کروایا ہے جس کے تحت روسی صدور اپنی آئینی مدت پوری ہونے کے بعد سینٹ کے مستقل اور تاحیات رکن بن سکیں گے۔

مسودے کے تحت صدر اپنے ساتھ 7 مزید افراد کو بھی قانونی ادارے کا رکن بنا سکیں گے، اور وہ بھی تاحیات آئینی ادارے کا رکن رہیں گے۔ تاہم اس پرشرط لاگو کی گئی ہے کہ انہوں نے ملک کے لیے نمایاں خدمات سرانجام دی ہوں۔ مسودے کے مطابق سابق صدور 6 سال کے لیمزید 23 سینٹر بھی تعینات کرنے کے حقدار ہوں گے۔

سابق صدور کو دی جانے والی یہ مراعات گرمیوں میں ہونے والے اہم آئینی ریفرنڈم کے بعد سامنے آنے والی اہم قانونی ترمیم ہے، جس سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ صدر پوتن اپنی حالیہ مدت پوری کرنے کے بعد کریملن چھوڑ دیں گے اور ماسکو میں اقتدار ولادیمیر پوتن سے کسی اور شخص کے ہاتھوں میں چلا جائے گا۔

مسودے کے تحت صدر کے پاس آئینی مدت پوری کرنے کے بعد 3 ماہ ہوں گے کہ وہ وفاقی کونسل کے لیے درخواست دے سکے۔ واضح رہے کہ کہ روسی سینٹ کے 170 ارکان ہوتے ہیں اور اسکی حالیہ سینٹ کو 2011 سے ویلینتینا ماتوی ینکو چیئرکر رہی ہیں۔

صدر پوتن کے جمع کروائے گئے قانونی مسودے کے مطابق وفاقی کونسل بنانے کے لیے ملک کے تمام 85 صوبوں میں سے ہر ایک سے دو ارکان لیے جائیں گے، جن میں سے ایک قانونی معاملات کا ذمہ دار ہو گا اور دوسرا انتظامی معاملات کو دیکھے گا۔

گزشتہ ہفتے روسی پارلیمنٹ نے ایک اور آئینی ترمیم کی منظوری دیتے ہوئے صدر کو وزیراعظم کی مشروط تعیناتی کا اختیار بھی دیا ہے، جس کے تحت صدر صرف اس فرد کو وزیر اعظم تعینات کر سکے گا جس کی منظوری ارکان پارلیمنٹ کی جانب سے دی جائے گی، اور کابینہ کی منظوری کی بھی یہی شرط ہو گی۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us