منگل, جون 15 Live
Shadow
سرخیاں
ترکی: 20 ٹن سونا اور 5 ٹن چاندی کا نیا ذخیرہ دریافت، ملکی سالانہ پیداوار 42 ٹن کا درجہ پار کر گئی، 5 برسوں میں 100 ٹن تک لے جانے کا ارادہحکومت پنجاب کا ویکسین نہ لگوانے والوں کے موبائل سم کارڈ معطل کرنے کی پالیسی لانے کا فیصلہموساد کے سابق سربراہ کا ایرانی جوہری سائنسدان اور مرکز پر سائبر حملے کا اعترافی اشارہ: ایرانی سائنسدانوں کو منصوبہ چھوڑنے پر معاونت کی پیشکش کر دییورپی اشرافیہ و ابلاغی اداروں کے برعکس شہریوں کی نمایاں تعداد نے روس کو اہم تہذیبی شراکت دار و اتحادی قرار دے دیاروسی بحریہ نے سٹیلتھ ٹیکنالوجی سے لیس جدید ترین بحری جہاز کا مکمل نمونہ تیار کر لیا: مکمل جہاز آئندہ سال فوج کے حوالے کر دیا جائےگاٹویٹر کو نائیجیریا میں دوبارہ بحالی کیلئے مقامی ابلاغی اداروں کی طرح لائسنس لینا ہو گا، اندراج کروانا ہو گا: افریقی ملک کا امریکی سماجی میڈیا کمپنی کو دو ٹوک جواب، صدر ٹرمپ کی جانب سے پابندی پر ستائش کا بیانکاراباخ آزادی جنگ: جنگی قیدی چھڑوانے کے لیے آرمینی وزیراعظم کی آزربائیجان کو بیٹے کی حوالگی کی پیشکشمجھ پر حملے سائنس پر حملے ہیں: متنازعہ امریکی مشیر صحت ڈاکٹر فاؤچی کا اپنے دفاع میں نیا متنازعہ بیان، وباء سے شدید متاثر امریکیوں کے غصے میں مزید اضافہچین 3 سال کے بچوں کو بھی کووڈ-19 ویکسین لگانے والا دنیا کا پہلا ملک بن گیاایرانی رویہ جوہری معاہدے کی بحالی میں تعطل کا باعث بن سکتا ہے: امریکی وزیر خارجہ بلنکن

ریاست مشی گن میں بڑی ڈاک کمپنی کی مقامی شاخ کے ملازم کا سربراہ پر تاخیر سے آنے والے ووٹوں پر پرانی تاریخ ڈالنے کے حکم کا الزام، تحقیقات شروع

امریکی انتخابات میں تنازعے کے بڑھنے کا سلسلہ جاری ہے۔ ریاست مشی گن میں ایک معروف ڈاک کمپنی میں کام کرنے والے ملازم نے دعویٰ کیا ہے کہ اسکے سربراہ نے اسے اور عملے کے دیگر افراد کو تاخیر سے پہنچنے والے ووٹوں پر پچھلی تاریخ ڈالنے کا حکم دیا۔ ملازم کے دعوے پر کمپنی نے تحقیقات کا حکم دے دیا ہے۔

میڈیا پر انکشاف کو ویریٹاس منصوبے کے سامنے آجانے کا نام دیا گیا ہے۔ ویریٹاس سافٹ ویئر کے شعبے میں ایسے شخص کو کہا جاتا ہے جو کمپنیوں کی خاص ضروریات کے تحت انکی معلومات اور سافٹ ویئر میں حساس اور خفیہ تبدیلیاں کرنے کی سہولت فراہم کرتے ہیں۔

ملازم نے یہ دعویٰ بھی کیا ہے کہ اسے اور اسکے دیگر ساتھیوں کو حکم دیا گیا تھا کہ بدھ تک ڈاک کے ذریعے آنے والے تمام ووٹوں کو الگ رکھیں، اور شام کو ان سب پر پچھلی تاریخوں کی مہر لگا دیں۔

ملازم کے مطابق ایسا کرنے کے بعد ووٹوں کی پرچیوں کو تیز ڈاک کے لفافوں میں ڈالا گیا اور انہیں متعلقہ پولنگ اسٹیشنوں پر ارسال کر دیا گیا۔ ریاست مشی گن کے قانون کے مطابق ڈاک کے ذریعے آنے والے ووٹ کو سوموار کی رات 8 بجے تک مہر لگی ہونی چاہیے تھی، اور اس سے تاخیر والی ڈاک کے ووٹ کو قبول نہیں کیا جانا تھا۔

ملازم کا کہنا ہے کہ اس نے معاملے کی اطلاع ڈاک کمپنی کی دوسری شاخ کے مدیر کو بھی دی تھی، اور اس نے بھی برانچ کے سربراہ کو پچھلی تاریخ کی مہر لگاتے ہوئے دیکھا تھا، اگرچہ ادارے کے اصول کے مطابق یہ کام ایک ملازم کرتا ہے۔

سازش کو سامنے لانے والے صحافی جیمز اوقیف کا کہنا ہے کہ اس نے ملازم کے الزام پر ڈاک کمپنی کی متعلقہ شاخ پر فون کر کے سربراہ کا مؤقف لینا چاہا تو وہاں سے سوال سن کر فون بند کر دیا گیا۔ صحافی نے مزید دعویٰ کیا ہے کہ اس نے خود شاخ کا دورہ کیا تو اسے وہاں کمپنی کا قانونی مشیر تحقیقات کروانے یا نہ کروانے کے حوالے سے گفتگو کرتا ملا۔

واضح رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ریاست مشی گن میں دھاندلی کے خلاف مقدمہ درج کروایا ہے، اور انکا دعویٰ ہے کہ ریاست کے سیکرٹری نے دونوں بڑی جماعتوں کی موجودگی کے بغیر ڈاک کے ذریعے آنے والے ووٹوں کی گنتی کی۔

یوں جارجیا اور دیگر ریاستوں میں بھی مختلف وجوہات پر ڈاک کے ذریعے آنے والے ووٹوں کے وقت اور مقدار پر عدالت سے رجوع کیا گیا ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us