جمعرات, اکتوبر 28 Live
Shadow
سرخیاں
جمناسٹک عالمی چیمپین مقابلے میں روسی کھلاڑی دینا آویرینا نے 15ویں بار سونے کا تمغہ جیت کر نیا عالمی ریکارڈ بنا دیا، بہن ارینا دوسرے نمبر پر – ویڈیویورپی یونین ہمارے سر پر بندوق نہ تانے، رویہ نہ بدلا تو بریگزٹ کی طرز پر پولیگزٹ ہو گا: پولینڈ وزیراعظمسابق سعودی جاسوس اہلکار سعد الجبری کا تہلکہ خیز انٹرویو: سعودی شہزادے محمد بن سلمان پر قتل کے منصوبے کا الزام، شہزادے کو بے رحم نفسیاتی مریض قرار دے دیاملکی سیاست میں مداخلت پر ترکی کا سخت ردعمل: 10 مغربی ممالک نے مداخلت سے اجتناب کا وضاحتی بیان جاری کر دیا، ترک صدر نے سفراء کو ملک بدر کرنے کا فیصلہ واپس لے لیاترکی کو ایف-35 منصوبے سے نکالنے اور رقم کی تلافی کے لیے نیٹو کی جانب سے ایف-16 طیاروں کو جدید بنانے کی پیشکش: وزیر دفاع کا تکنیکی کام شروع ہونے کا دعویٰ، امریکہ کا تبصرے سے انکارترک صدر ایردوعان کا اندرونی سیاست میں مداخلت پر 10 مغربی ممالک کے سفراء کو ناپسندیدہ قرار دینے کا فیصلہبحرالکاہل میں چینی و روسی جنگی بحری مشقیں مکمل – ویڈیونائجیریا: جیل حملے میں 800 قیدی فرار، 262 واپس گرفتار، 575 تاحال مفرورترکی: فسلطینی طلباء کی جاسوسی کرنے والا 15 رکنی صیہونی جاسوس گروہ گرفتار، تحقیقات جاریامریکی انتخابات میں غیر سرکاری تنظیموں کے اثرانداز ہونے کا انکشاف: فیس بک کے مالک اور دیگر ہم فکر افراد نے صرف 2 تنظیموں کو 42 کروڑ ڈالر کی خطیر رقم چندے میں دی، جس سے انتخابی عمل متاثر ہوا، تجزیاتی رپورٹ

ریاست مشی گن میں بڑی ڈاک کمپنی کی مقامی شاخ کے ملازم کا سربراہ پر تاخیر سے آنے والے ووٹوں پر پرانی تاریخ ڈالنے کے حکم کا الزام، تحقیقات شروع

امریکی انتخابات میں تنازعے کے بڑھنے کا سلسلہ جاری ہے۔ ریاست مشی گن میں ایک معروف ڈاک کمپنی میں کام کرنے والے ملازم نے دعویٰ کیا ہے کہ اسکے سربراہ نے اسے اور عملے کے دیگر افراد کو تاخیر سے پہنچنے والے ووٹوں پر پچھلی تاریخ ڈالنے کا حکم دیا۔ ملازم کے دعوے پر کمپنی نے تحقیقات کا حکم دے دیا ہے۔

میڈیا پر انکشاف کو ویریٹاس منصوبے کے سامنے آجانے کا نام دیا گیا ہے۔ ویریٹاس سافٹ ویئر کے شعبے میں ایسے شخص کو کہا جاتا ہے جو کمپنیوں کی خاص ضروریات کے تحت انکی معلومات اور سافٹ ویئر میں حساس اور خفیہ تبدیلیاں کرنے کی سہولت فراہم کرتے ہیں۔

ملازم نے یہ دعویٰ بھی کیا ہے کہ اسے اور اسکے دیگر ساتھیوں کو حکم دیا گیا تھا کہ بدھ تک ڈاک کے ذریعے آنے والے تمام ووٹوں کو الگ رکھیں، اور شام کو ان سب پر پچھلی تاریخوں کی مہر لگا دیں۔

ملازم کے مطابق ایسا کرنے کے بعد ووٹوں کی پرچیوں کو تیز ڈاک کے لفافوں میں ڈالا گیا اور انہیں متعلقہ پولنگ اسٹیشنوں پر ارسال کر دیا گیا۔ ریاست مشی گن کے قانون کے مطابق ڈاک کے ذریعے آنے والے ووٹ کو سوموار کی رات 8 بجے تک مہر لگی ہونی چاہیے تھی، اور اس سے تاخیر والی ڈاک کے ووٹ کو قبول نہیں کیا جانا تھا۔

ملازم کا کہنا ہے کہ اس نے معاملے کی اطلاع ڈاک کمپنی کی دوسری شاخ کے مدیر کو بھی دی تھی، اور اس نے بھی برانچ کے سربراہ کو پچھلی تاریخ کی مہر لگاتے ہوئے دیکھا تھا، اگرچہ ادارے کے اصول کے مطابق یہ کام ایک ملازم کرتا ہے۔

سازش کو سامنے لانے والے صحافی جیمز اوقیف کا کہنا ہے کہ اس نے ملازم کے الزام پر ڈاک کمپنی کی متعلقہ شاخ پر فون کر کے سربراہ کا مؤقف لینا چاہا تو وہاں سے سوال سن کر فون بند کر دیا گیا۔ صحافی نے مزید دعویٰ کیا ہے کہ اس نے خود شاخ کا دورہ کیا تو اسے وہاں کمپنی کا قانونی مشیر تحقیقات کروانے یا نہ کروانے کے حوالے سے گفتگو کرتا ملا۔

واضح رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ریاست مشی گن میں دھاندلی کے خلاف مقدمہ درج کروایا ہے، اور انکا دعویٰ ہے کہ ریاست کے سیکرٹری نے دونوں بڑی جماعتوں کی موجودگی کے بغیر ڈاک کے ذریعے آنے والے ووٹوں کی گنتی کی۔

یوں جارجیا اور دیگر ریاستوں میں بھی مختلف وجوہات پر ڈاک کے ذریعے آنے والے ووٹوں کے وقت اور مقدار پر عدالت سے رجوع کیا گیا ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us