اتوار, April 10 Live
Shadow
سرخیاں
افغانستان میں امریکی فوج کی جانب سے تشدد کی تربیت کے لیے بلوچی قیدی کو استعمال کرنے کا انکشافہندوستانی میزائل کا مبینہ غلطی سے پاکستانی حدود میں گرنے کا واقعہ: امریکہ کی طرف سے متعصب جبکہ چین کی جانب سے نصیحت آمیز ردعملمیٹا آسٹریلوی سیاستدانوں کو سائبر حملوں اور جھوٹی خبروں سے بچنے کی تربیت دے گییوکرین: مغربی ممالک سے آئے 180 سے زائد جنگجو ہوائی حملے میں ہلاک، روس کی مغربی ممالک کو تنبیہ، سب نشانے پر ہیں، چُن چُن کر ماریں گےاسرائیل پر تاریخ کا بڑا سائبر حملہ: وزیراعظم، وزارت داخلہ اور وزارت صیہونی بہبود کی ویب سائٹیں ہیک اور تلفروس اور یوکرین کے مابین جلد امن معاہدہ طے پا جائے گا: روسی مذاکرات کاریوکرینی مہاجرین کی تعداد 50 لاکھ سے بڑھ گئی: اقوام متحدہفیس بک اور انسٹاگرام کی شدید متعصب پالیسی کا اعلان: روسی صدر اور فوج کیخلاف نفرت اور موت کے پیغامات شائع کرنے کی اجازت، نتیجتاً مغربی ممالک میں آرتھوڈاکس کلیساؤں اور روسی کاروباروں پر حملوں کی خبریںترکی کا بھی روس کے ساتھ مقامی پیسے میں تجارت کرنے کا اعلانمغرب کے دوہرے معیار: دنیا پر روس سے تجارت پر پابندیاں، برطانیہ سمیت بیشتر مغربی ممالک روس سے گیس و تیل کی خریداری جاری رکھیں گے

روسی صدور کو خصوصی استثنیٰ دینے کا قانونی مسودہ پارلیمنٹ میں پیش

جانی ٹکل (رشیا ٹوڈے) – روسی پارلیمنٹ میں سابق صدور کو تمام مجرمانہ اور انتظامی احتساب سے استثنیٰ دینے کے لیے قرارداد پیش کر دی گئی ہے۔ قرارداد کے مطابق ریاست کے تمام سابق سربراہ اور انکے اہل خانہ کو نہ صرف مقدمات سے استثنیٰ حاصل ہو گا بلکہ انہیں کسی بھی جرم میں گرفتار، قید، اچانک تلاشی اور تفتیش سے بھی استثنیٰ حاصل ہو گا۔

قانون سے سابق صدر دیمتری میدویدیو کو بھی استثنیٰ مل جائے گا کیونکہ روس کے وہ سابق واحد صدر ہیں جو اب بھی زندہ ہیں۔

قانون کے پاس ہونے پر صدور کو انکے عہدے سے قبل کیے کسی عمل پر بھی احتساب کا سامنا نہیں کرنا پڑے گا۔ یوں یہ قانونی تحفظ موجودہ صدر ولادیمیر پوتن کو انکے وزیراعظم کے دور کے حوالے سے بھی تحفظ کی ضمانت دیتا ہے۔

روس کا موجودہ قانون صدر کو صرف حکومت میں رہتے ہوئے جرائم اور انتظامی فیصلوں پر احتساب سے استثنیٰ دیتا ہے تاہم اس کے علاوہ کسی قسم کا استثنیٰ حاصل نہیں ہے، اور انکا احتساب کیا جا سکتا ہے۔

تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ ایسے قانون کی تیاری ظاہر کرتی ہے کہ صدر پوتن جلد طاقت سے الگ ہونے کا ارادہ رکھتے ہیں، اگرچہ ماضی قریب میں کی گئی ایک قانونی ترمیم کے تحت وہ 2036 تک ملک کے صدر کے لیے انتخابات لڑ سکتے ہیں۔

یاد رہے کہ قانونی تحفظ کے نئے مسودے میں صدر کو انتہائی سنجیدہ جرائم، مثلاً غداری کے مقدمے میں احتساب سے استثنیٰ حاصل نہیں ہو گا، تاہم اس کے لیے حکومت کو ملک کی اعلٰی عدالت اور آئینی عدالت سے اجازت کے ساتھ ساتھ سینٹ اور وفاقی کونسل سے اکثریت ووٹ کی ضرورت بھی ہو گی۔

گزشتہ ماہ روسی پارلیمنٹ میں سابق صدور کو تاحیات رکن سینٹ اور دیگر سیاسی مراعات کے لیے بھی مسودہ پیش کیا گیا تھا، جس پر تبصرے میں مغربی ماہرین کا کہنا تھا کہ اس کا مطلب ہے کہ صدر پوتن اقتدار سے تو الگ ہو جائیں گے تاہم ملکی سیاست سے الگ نہیں ہونا چاہتے۔

یاد رہے کہ سابق صدور کو تاحیات سینٹ رکن بننے کا اختیار دینے والا قانون اٹلی میں پہلے سے موجود ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us