منگل, دسمبر 7 Live
Shadow
سرخیاں
امریکی سی آئی اے اہلکاروں کے ایک بار پھر کم عمر بچوں بچیوں کے ساتھ جنسی جرائم میں ملوث ہونے کا انکشافامریکہ کا مشرقی افریقہ میں تاریخ کے سب سے بڑے فوجی آپریشن کا اعلان: 1 ہزار سے زائد مزید کمانڈو تیارروسی صدر کی ثالثی: آزربائیجان اور آرمینیا کے مابین سرحدی جھڑپیں ختم، سرحدی حدود کے تعین پر اتفاق، جنگ سے متاثر آبادی اور دیگر انسانی حقوق کے تحفظ کی بھی یقین دہانینائیجیر: فرانسیسی فوج کی فائرنگ سے 2 شہری شہید، 16 زخمیامریکی فوج میں ہر 4 میں سے 1 عورت اور 5 میں سے 1 مرد جنسی زیادتی کا نشانہ بنتا ہے، بیشتر خود کشی کر لیتے، کورٹ مارشل کے خوف سے کوئی آواز نہیں اٹھاتا: سابقہ اہلکارروس کا غیر ملکی سماجی میڈیا کمپنیوں پر ملک میں کاروباری اندراج کے لیے دباؤ جاری: رواں سال کے آخر تک عمل نہ ہونے پر پابندی لگانے کا عندیاامریکہ ہائپر سونک ٹیکنالوجی میں چین اور روس سے بہت پیچھے ہے: امریکی جنرل تھامپسنامریکی تفریحی میڈیا صنعت کس عقیدے، نظریے اور مقصد کے تحت کام کرتی ہے؟چوالیس فیصد امریکی اولاد پیدا کرنے کی خواہش نہیں رکھتے: پیو سروے رپورٹچینی کمپنی ژپینگ نے جدید ترین برقی کار جی-9 متعارف کر دی: بیٹری کے معیار اور رفتار میں ٹیسلا کو بھی پیچھے چھوڑ دیا

چین کا خوف امریکہ اور ہندوستان کے سر چڑھ کر بولنے لگا: انڈوپیسفک اتحاد کے تحت دوسری چار روزہ بحری مشق بحیرہ عرب میں شروع

ہندوستان نے بحرالکاہل اور بحر ہند کے اتحاد کے نام پر امریکہ کی قیادت میں قائم ہونے والے نئے بین الاقوامی عسکری اتحاد کے تحت شمالی بحیرہ عرب میں مشق کا آغاز کر دیا ہے۔ مالابار نامی دوسری چار روزہ عسکری مشق میں امریکہ، آسٹریلیا، جاپان اور ہندوستان طاقت کا بھرپور مظاہرہ کریں گے۔ مشق میں دنیا کی سب سے بڑی آبدوز اور دو لڑاکا طیارے بردار بحری جہازوں سمیت کئی جدید لڑاکا طیارے اور بحری جہاز حصہ لے رہے ہیں۔

مشق میں حصہ لینے والا نمٹز نامی امریکی بحری بیڑہ دنیا کا سب سے بڑا چلتا پھرتا عسکری اڈہ ہے۔ 1972 میں سرد جنگ کے دوران امریکی بحریہ میں شامل ہونے والے بحری بیڑے سے ایٹمی ہتھیاروں کا حملہ بھی کیا جا سکتا ہے۔

پہلی مالابار عسکری مشق خلیج بنگال میں 3 سے 6 نومبر میں کی گئی تھی، جس میں لڑاکا طیاروں، آبدوزوں کو نشانہ بنانے کی مشق بھی کی گئی۔

یاد رہے کہ مالابار مشق امریکہ اور ہندوستان نے پہلی بار 1992 میں کی تھی، جس میں اس وقت کوئی دوسرا ملک شامل نہیں تھا۔ تاہم اب امریکہ نے چین کی بڑھتی طاقت کے خوف میں خطے میں نئے اتحاد اور عسکری قوت کے مظاہرے کا سلسلہ شروع کر رکھا ہے

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us