ہفتہ, April 9 Live
Shadow
سرخیاں
افغانستان میں امریکی فوج کی جانب سے تشدد کی تربیت کے لیے بلوچی قیدی کو استعمال کرنے کا انکشافہندوستانی میزائل کا مبینہ غلطی سے پاکستانی حدود میں گرنے کا واقعہ: امریکہ کی طرف سے متعصب جبکہ چین کی جانب سے نصیحت آمیز ردعملمیٹا آسٹریلوی سیاستدانوں کو سائبر حملوں اور جھوٹی خبروں سے بچنے کی تربیت دے گییوکرین: مغربی ممالک سے آئے 180 سے زائد جنگجو ہوائی حملے میں ہلاک، روس کی مغربی ممالک کو تنبیہ، سب نشانے پر ہیں، چُن چُن کر ماریں گےاسرائیل پر تاریخ کا بڑا سائبر حملہ: وزیراعظم، وزارت داخلہ اور وزارت صیہونی بہبود کی ویب سائٹیں ہیک اور تلفروس اور یوکرین کے مابین جلد امن معاہدہ طے پا جائے گا: روسی مذاکرات کاریوکرینی مہاجرین کی تعداد 50 لاکھ سے بڑھ گئی: اقوام متحدہفیس بک اور انسٹاگرام کی شدید متعصب پالیسی کا اعلان: روسی صدر اور فوج کیخلاف نفرت اور موت کے پیغامات شائع کرنے کی اجازت، نتیجتاً مغربی ممالک میں آرتھوڈاکس کلیساؤں اور روسی کاروباروں پر حملوں کی خبریںترکی کا بھی روس کے ساتھ مقامی پیسے میں تجارت کرنے کا اعلانمغرب کے دوہرے معیار: دنیا پر روس سے تجارت پر پابندیاں، برطانیہ سمیت بیشتر مغربی ممالک روس سے گیس و تیل کی خریداری جاری رکھیں گے

گوگل اور فیس بک کا بداعتمادی کے حکومتی مقدمات کے خلاف اتحاد: الزامات کی تردید

فیس بک اور گوگل نے آن لائن مارکیٹ میں دھوکے سے اجارہ داری قائم رکھنے کے خلاف ہونے والی ممکنہ کارروائی پر ایک دوسرے کا ساتھ دینے کا عندیا دیا ہے۔

گزشتہ ہفتے ٹیکساس سمیت نو امریکی ریاستوں نے فیس بک اور گوگل پر ایک دوسرے کو مارکیٹ میں ملی بھگت سے اجارہ داری قائم کرنے کے جرم میں عدالت کا دروازہ کھٹکایا ہے، درخواست میں مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ کمپنیوں میں باقائدہ خفیہ معاہدہ کیا گیا جسے جیڈی بلیو کا نام دیا گیا، اور اس کے تحت کمپنیاں آن لائن کاروبار اور اشتہارات کو دھوکے سے کنٹرول کر رہی ہیں۔ درخواست میں مزید کہا گیا ہے کہ کمپنیوں کو اس بات کی مکمل آگاہی تھی کہ ان کا معاہدہ بدعنوانی پر مبنی ہے اور انکے خلاف بداعتمادی کے تحت تحقیقات اور مقدمہ کیا جا سکتا ہے، یہی وجہ ہے کہ کمپنیوں نے معاہدے کو خفیہ رکھا۔

امریکی نشریاتی اداروں کے مطابق ٹیکنالوجی کی دونوں بڑی کمپنیوں نے مقدمے سے نمٹنے کے لیے ایک دوسرے سے بھرپور تعاون کرنے کا وعدہ کیا ہے۔

کمپنیوں کا کہنا ہے کہ انہوں نے کوئی غلط کام نہیں کیا ہے، فیس بک نے اپنے ردعمل میں کہا ہے کہ الزامات بےبنیاد ہیں، جبکہ گوگل نے بداعتمادی کے الزام کو ایک عمومی کہانی قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ وہ کسی کمپنی کو معاون معلومات فراہم نہیں کرتے۔

یاد رہے کہ گوگل پر اس سے قبل بھی آن لائن تلاش کے دوران اپنی کاروباری کمپنیوں کو فائدہ دینے کے الزامات پر متعدد بار جرمانہ ہو چکا ہے، اور ایسا عالمی سطح پر بھی ہوا ہے۔

دوسری جانب امریکہ میں اب بھی 35 ریاستوں نے گوگل پر آن لائن تلاش کو دھوکے سے متاثر کرنے کے الزامات کا سامنا ہے، جبکہ محکمہ انصاف بھی گوگل کو عدالت میں گھسیٹ چکا ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us