منگل, جولائی 27 Live
Shadow
سرخیاں
لبنان میں سیاسی بحران و معاشی بدحالی: ارب پتی کاروباری شخصیت اور سابق وزیراعظم نجیب میقاطی حکومت بنانے میں کامیاب، فرانسیسی منصوبے کے تحت ملک کو معاشی بدحالی سے نکالنے کا اعلانجنگی جہازوں کی دنیا میں جمہوری انقلاب: روس نے من چاہی خوبیوں کے مطابق جدید ترین جنگی جہاز تیار کرنے کی صلاحیت کا اعلان کر دیا، چیک میٹ نامی جہاز ماکس-2021 نمائش میں پیشکیوبا میں کورونا اور تالہ بندی کے باعث معاشی حالات کشیدہ: روس کا خوراک، ماسک اور ادویات کا بڑا عطیہ، پریشان شہریوں کے انتظامیہ اور امریکی پابندیوں کے خلاف بڑے مظاہرےچینی معاملات میں بیرونی مداخلت ایسے ہی ہے جیسے چیونٹی کی تناور درخت کو گرانے کی کوشش: چین نے سابق امریکی وزیر تجارت سمیت 6 افراد پر جوابی پابندیاں عائد کر دیںمغربی یورپ میں کورونا ویکسین کی لازمیت کے خلاف بڑے مظاہرے، پولیس کا تشدد، پیرس و لندن میدان جنگ بن گئے: مقررین نے ویکسین کو شیطانی ہتھیار قرار دے دیا – ویڈیوجرمنی: پولیس نے بچوں اور جانوروں سے جنسی زیادتی کی ویڈیو آن لائن پھیلانے والے 1600 افراد کا جال پکڑ لیا، مجرمانہ مواد کی تشہیر کیلئے بچوں کے استعمال کا بھی انکشافگوشت کا تبادلہصدر بائیڈن افغانستان سے انخلا پر میڈیا کے کڑے سوالوں کا شکار: کہا، امارات اسلامیہ افغانستان ۱ طاقت ضرور ہے لیکن ۳ لاکھ غنی افواج کو حاصل مدد کے جواب میں طالبان کچھ نہیں، تعاون جاری رکھا جائے گاامریکہ، برطانیہ اور ترکی کا مختلف وجوہات کے بہانے کابل میں 1000 سے زائد فوجی تعینات رکھنے کا عندیا: امارات اسلامیہ افغانستان کی معاہدے کی خلاف ورزی پر نتائج کی دھمکیچینی خلا بازوں کی تیانگونگ خلائی اسٹیشن سے باہر نکل کر خلا میں چہل قدمی – ویڈیو

عراق میں جنگی جرائم میں ملوث بلیک واٹر کے اہلکاروں کو عام معافی دینے پر سماجی میڈیا پر تنقید کی سونامی: صارفین نے امریکی صدر کے اقدام کوانصاف کا قتل قرار دے دیا

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے بلیک واٹر کے اہلکاروں کی سزا ختم کرنے پر سماجی میڈیا پر صارفین کی جانب سے شدید ردعمل سامنے آیا ہے، اور شہری جنگی جرائم میں ملوث افراد کو معافی دینے کو انصاف کا قتل قرار دے رہے ہیں۔

صدر ٹرمپ نے بروز منگل مختلف جرائم میں ملوث 15 افراد کی سزا مکمل ختم کر دی تھی، جبکہ 5 کی سزا میں جزوی کمی کا اعلان کیا تھا۔ قومی و مذہبی تہواروں کے موقع پر قیدیوں کی سزا میں کمی یا معافی دینے کا رواج دنیا کے بیشتر ممالک کی طرح امریکہ میں بھی رائج ہے، جہاں عموماً کرسمس پر صدر اس روایت پر عمل کرتا ہے۔

تاہم رواں سال بدنام زمانہ عسکری کمپنی بلیک واٹر کے 4 اہلکاروں کو عراق میں قتل عام میں ملوث ہونے کے جرم میں ملنے والی سزاؤں کی معافی کے باعث مشرق وسطیٰ، خصوصاً عراق اور دیگر عرب ممالک اور دنیا بھر سے شدید ناراضگی کا اظہار سامنے آیا ہے۔ امریکہ میں بھی سماجی و سیاسی حلقوں کی جانب سے صدر کے اقدام کی مذمت کی جا رہی ہے۔

واضح رہے کہ سزا کی معافی پانے والے بلیک واٹر کے اہلکار بغداد کے النسور چوک ایک بچے سمیت 15 افراد کے قتل کے جرم میں سزا کاٹ رہے تھے۔ 2007 میں ہونے والے اس واقعے میں ملوث 4 بلیک واٹر اہلکاروں نے نہتے عراقی شہریوں پر بلااشتعال مشین گنوں، سنائپر اور گرنیڈ سے حملہ کیا تھا، اور بعد میں جواز میں کہا تھا کہ انہیں لگا کہ ان پر حملہ کیا جا رہا ہے، حالانکہ شہری بالکل نہتے تھے۔

تحقیقات میں جرم ثابت ہونے پر چاروں بلیک واٹر اہلکاروں کو مختلف سال جیل میں قید کی سزا سنائی گئی تھی، جبکہ پہلے گولی چلانے والے کو عمر قید کی سزا تھی۔

جنگی جرائم میں ملوث بلیک واٹر اہلکاروں کو سزا پر ردعمل میں امریکی فوج کے سابق وکیل نے کہا ہے کہ صدر نے اس معافی سے انصاف کو قتل کیا ہے۔

ایک عوامی نمائندہ خاتون نے کہا ہے کہ جنگی مجرموں کو صدارتی معافی دینا تاریخ پر ایک بدنما داغ چھوڑے گا۔

قانونی ماہرین نے معاملے پر اپنے ردعمل میں کہا ہے کہ بلیک واٹر کے اہلکاروں پر جرم ثابت کرنا ایک مشکل عمل تھا، صدارتی معافی نے ان تمام کوششوں کے ساتھ ساتھ نظام انصاف کو بھی مایوس کیا ہے۔

تاہم کچھ شہریوں نے اپنے ردعمل میں ایک بار پھر توجہ عراق جنگ کی بنیادوں کی طرف مبذول کی ہے، شہریوں کا کہنا ہے کہ عراق جنگ صدر ٹرمپ نے شروع نہیں کی تھی، تاہم اسے ختم ضرور کیا ہے، اسے شروع کرنے والا جارج بش اب تقسیم شدہ امریکی اسٹیبلشمنٹ کا چہیتا ہے، اور اسے جوبائیڈن کی جماعت نے اعلیٰ ترین اعزازوں سے نوزا ہے۔

واضح رہے کہ بدنام زمانہ بلیک واٹر کا بانی ایرک پرنس تھا جو صدر ٹرمپ کی وزیر تعلیم بیٹسی ڈیوس کا بھائی ہے۔ ایرک نے 2007 میں نجی کمپنی کے اہلکاروں کی جانب سے قتل عام میں ملوث ہونے پر کمپنی سے علیحدگی اختیار کر لی تھی۔ اور کمپنی بھی بدنامی سے بچنے کے لیے اب تک کئی نام بدل چکی ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us