منگل, دسمبر 7 Live
Shadow
سرخیاں
امریکی سی آئی اے اہلکاروں کے ایک بار پھر کم عمر بچوں بچیوں کے ساتھ جنسی جرائم میں ملوث ہونے کا انکشافامریکہ کا مشرقی افریقہ میں تاریخ کے سب سے بڑے فوجی آپریشن کا اعلان: 1 ہزار سے زائد مزید کمانڈو تیارروسی صدر کی ثالثی: آزربائیجان اور آرمینیا کے مابین سرحدی جھڑپیں ختم، سرحدی حدود کے تعین پر اتفاق، جنگ سے متاثر آبادی اور دیگر انسانی حقوق کے تحفظ کی بھی یقین دہانینائیجیر: فرانسیسی فوج کی فائرنگ سے 2 شہری شہید، 16 زخمیامریکی فوج میں ہر 4 میں سے 1 عورت اور 5 میں سے 1 مرد جنسی زیادتی کا نشانہ بنتا ہے، بیشتر خود کشی کر لیتے، کورٹ مارشل کے خوف سے کوئی آواز نہیں اٹھاتا: سابقہ اہلکارروس کا غیر ملکی سماجی میڈیا کمپنیوں پر ملک میں کاروباری اندراج کے لیے دباؤ جاری: رواں سال کے آخر تک عمل نہ ہونے پر پابندی لگانے کا عندیاامریکہ ہائپر سونک ٹیکنالوجی میں چین اور روس سے بہت پیچھے ہے: امریکی جنرل تھامپسنامریکی تفریحی میڈیا صنعت کس عقیدے، نظریے اور مقصد کے تحت کام کرتی ہے؟چوالیس فیصد امریکی اولاد پیدا کرنے کی خواہش نہیں رکھتے: پیو سروے رپورٹچینی کمپنی ژپینگ نے جدید ترین برقی کار جی-9 متعارف کر دی: بیٹری کے معیار اور رفتار میں ٹیسلا کو بھی پیچھے چھوڑ دیا

حکومت 16 لاکھ ڈالر چھپکلیوں کی دوڑ پر سرف کر رہی ہے لیکن شہریوں کیلئے کورونا سے بچاؤ کا بل صرف 600$: برہم امریکی سینٹر نے 54 ارب ڈالر کے فضول کاموں کی فہرست جاری کر دی

امریکی سینیٹر رینڈ پال کی جانب سے حکومت کے سالانہ اخراجات کی تفصیل جاری کرنے پر امریکی سماجی میڈیا صارفین کی جانب سے دلچسپ تبصرے سامنے آرہے ہیں۔ جس کی وجہ اخراجات میں چھپکلیوں کو دوڑ لگوانے جیسے غیر ضروری کاموں کے لیے لاکھوں ڈالر کا اسراف شامل ہے۔ شہریوں کا کہنا ہے کہ انہیں اندازہ ہی نہ تھا کہ ان کے ادا کردہ ٹیکسوں کا پیسہ چھپکلیوں کو دوڑ لگوانے کے لیے استعمال ہو رہا ہے۔

سینٹر رینڈ پال نے لکھا ہے کہ 2020 کے فیسٹیوس تہوار کی رپورٹ پیش خدمت ہے، حکومت نے مجموعی طور پر 54 ارب ڈالر کی رقم فضول کاموں پر ضائع کی ہے۔

سینٹر پال نے حکومت کے بڑے فضول کاموں کی فہرست میں سے 10 کی ایک فہرست بنائی ہے، جس میں قومی ادارہ برائے صحت کو 20 لاکھ ڈالر اس تحقیق کے لیے دیے گئے کہ گرم پانی کے ٹب میں نہانے سے اعصابی دباؤ کم ہوتا ہے یا نہیں؟ یوں دس لاکھ ڈالر اس سوال کے جواب کے لیے دیے گئے کہ کیا لوگ دندان ساز کے پاس جانے کےخوف سے نکل سکتے ہیں یا نہیں؟ اور اس تحقیق پر 13 لاکھ ڈالر سرف گئے گئے کہ آیا لوگوں کو پروٹین کے لیے حشرات کھانے پر راضی کیا جا سکتا ہے یا نہیں؟ سینٹر نے انسانوں کو حشرات کھلانے کی رپورٹ سے منصوبے کے مقاصد کو عیاں کرتے ہوئے لکھا ہے کہ ماحولیاتی تبدیلیوں کے باعث خوراک کی پیداوار میں کمی انسانی تہذیب کے لیے مسئلہ بن رہی ہے، اس لیے کیڑے مکوڑوں کو بطور خوراک پیش کرنا اچھا حل ہے۔

سینٹر پال کی فضول کاموں کی فہرست میں بیرون ملک امدادی منصوبے بھی شامل ہیں جن میں پہلے نمبر پر سینٹر نے لکھا ہے کہ 86 لاکھ ڈالر افغانستان میں منشیات کی روک تھام کی مہم کے لیے دیے گئے، جبکہ امریکہ میں منشیات اس سے بھی بڑا مسئلہ بن چکا ہے۔ سینٹر نے مزید کہا ہے کہ افغانستان میں سالانہ 100 ڈرون ضائع ہو رہے ہیں جن پر 17 کروڑ ڈالر خرچ ہوتے ہیں۔

سینٹر پال کی فضول کاموں کی فہرست میں سب سے نمایاں چھپکلیوں کو دوڑ کی مشین پر دوڑ لگوانے کے لیے 16 لاکھ ڈالر سرف کرنا ہے۔ جس پر ایک صارف نے لکھا ہے کہ وہ چپھکلیوں سے یہ کام ساڑھے سات لاکھ ڈالر میں کروا سکتا ہے۔

سینٹر پال کا کہنا ہے کہ انکا فہرست جاری کرنے کا مقصد کورونا وباء سے لڑتے امریکیوں کو معاشی تحفظ دینے کی کوشش میں ہے۔ حکومت جہاں غیر ضروری بلوں پر کروڑوں روپے خرچ کر ڈالتی ہے وہاں اپنے شہریوں کے لیے وباء سے نمٹنے کے لئے اس کے پاس فی کس صرف 600 ڈالر ہیں۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us