ہفتہ, April 9 Live
Shadow
سرخیاں
افغانستان میں امریکی فوج کی جانب سے تشدد کی تربیت کے لیے بلوچی قیدی کو استعمال کرنے کا انکشافہندوستانی میزائل کا مبینہ غلطی سے پاکستانی حدود میں گرنے کا واقعہ: امریکہ کی طرف سے متعصب جبکہ چین کی جانب سے نصیحت آمیز ردعملمیٹا آسٹریلوی سیاستدانوں کو سائبر حملوں اور جھوٹی خبروں سے بچنے کی تربیت دے گییوکرین: مغربی ممالک سے آئے 180 سے زائد جنگجو ہوائی حملے میں ہلاک، روس کی مغربی ممالک کو تنبیہ، سب نشانے پر ہیں، چُن چُن کر ماریں گےاسرائیل پر تاریخ کا بڑا سائبر حملہ: وزیراعظم، وزارت داخلہ اور وزارت صیہونی بہبود کی ویب سائٹیں ہیک اور تلفروس اور یوکرین کے مابین جلد امن معاہدہ طے پا جائے گا: روسی مذاکرات کاریوکرینی مہاجرین کی تعداد 50 لاکھ سے بڑھ گئی: اقوام متحدہفیس بک اور انسٹاگرام کی شدید متعصب پالیسی کا اعلان: روسی صدر اور فوج کیخلاف نفرت اور موت کے پیغامات شائع کرنے کی اجازت، نتیجتاً مغربی ممالک میں آرتھوڈاکس کلیساؤں اور روسی کاروباروں پر حملوں کی خبریںترکی کا بھی روس کے ساتھ مقامی پیسے میں تجارت کرنے کا اعلانمغرب کے دوہرے معیار: دنیا پر روس سے تجارت پر پابندیاں، برطانیہ سمیت بیشتر مغربی ممالک روس سے گیس و تیل کی خریداری جاری رکھیں گے

حکومت 16 لاکھ ڈالر چھپکلیوں کی دوڑ پر سرف کر رہی ہے لیکن شہریوں کیلئے کورونا سے بچاؤ کا بل صرف 600$: برہم امریکی سینٹر نے 54 ارب ڈالر کے فضول کاموں کی فہرست جاری کر دی

امریکی سینیٹر رینڈ پال کی جانب سے حکومت کے سالانہ اخراجات کی تفصیل جاری کرنے پر امریکی سماجی میڈیا صارفین کی جانب سے دلچسپ تبصرے سامنے آرہے ہیں۔ جس کی وجہ اخراجات میں چھپکلیوں کو دوڑ لگوانے جیسے غیر ضروری کاموں کے لیے لاکھوں ڈالر کا اسراف شامل ہے۔ شہریوں کا کہنا ہے کہ انہیں اندازہ ہی نہ تھا کہ ان کے ادا کردہ ٹیکسوں کا پیسہ چھپکلیوں کو دوڑ لگوانے کے لیے استعمال ہو رہا ہے۔

سینٹر رینڈ پال نے لکھا ہے کہ 2020 کے فیسٹیوس تہوار کی رپورٹ پیش خدمت ہے، حکومت نے مجموعی طور پر 54 ارب ڈالر کی رقم فضول کاموں پر ضائع کی ہے۔

سینٹر پال نے حکومت کے بڑے فضول کاموں کی فہرست میں سے 10 کی ایک فہرست بنائی ہے، جس میں قومی ادارہ برائے صحت کو 20 لاکھ ڈالر اس تحقیق کے لیے دیے گئے کہ گرم پانی کے ٹب میں نہانے سے اعصابی دباؤ کم ہوتا ہے یا نہیں؟ یوں دس لاکھ ڈالر اس سوال کے جواب کے لیے دیے گئے کہ کیا لوگ دندان ساز کے پاس جانے کےخوف سے نکل سکتے ہیں یا نہیں؟ اور اس تحقیق پر 13 لاکھ ڈالر سرف گئے گئے کہ آیا لوگوں کو پروٹین کے لیے حشرات کھانے پر راضی کیا جا سکتا ہے یا نہیں؟ سینٹر نے انسانوں کو حشرات کھلانے کی رپورٹ سے منصوبے کے مقاصد کو عیاں کرتے ہوئے لکھا ہے کہ ماحولیاتی تبدیلیوں کے باعث خوراک کی پیداوار میں کمی انسانی تہذیب کے لیے مسئلہ بن رہی ہے، اس لیے کیڑے مکوڑوں کو بطور خوراک پیش کرنا اچھا حل ہے۔

سینٹر پال کی فضول کاموں کی فہرست میں بیرون ملک امدادی منصوبے بھی شامل ہیں جن میں پہلے نمبر پر سینٹر نے لکھا ہے کہ 86 لاکھ ڈالر افغانستان میں منشیات کی روک تھام کی مہم کے لیے دیے گئے، جبکہ امریکہ میں منشیات اس سے بھی بڑا مسئلہ بن چکا ہے۔ سینٹر نے مزید کہا ہے کہ افغانستان میں سالانہ 100 ڈرون ضائع ہو رہے ہیں جن پر 17 کروڑ ڈالر خرچ ہوتے ہیں۔

سینٹر پال کی فضول کاموں کی فہرست میں سب سے نمایاں چھپکلیوں کو دوڑ کی مشین پر دوڑ لگوانے کے لیے 16 لاکھ ڈالر سرف کرنا ہے۔ جس پر ایک صارف نے لکھا ہے کہ وہ چپھکلیوں سے یہ کام ساڑھے سات لاکھ ڈالر میں کروا سکتا ہے۔

سینٹر پال کا کہنا ہے کہ انکا فہرست جاری کرنے کا مقصد کورونا وباء سے لڑتے امریکیوں کو معاشی تحفظ دینے کی کوشش میں ہے۔ حکومت جہاں غیر ضروری بلوں پر کروڑوں روپے خرچ کر ڈالتی ہے وہاں اپنے شہریوں کے لیے وباء سے نمٹنے کے لئے اس کے پاس فی کس صرف 600 ڈالر ہیں۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us