ہفتہ, April 9 Live
Shadow
سرخیاں
افغانستان میں امریکی فوج کی جانب سے تشدد کی تربیت کے لیے بلوچی قیدی کو استعمال کرنے کا انکشافہندوستانی میزائل کا مبینہ غلطی سے پاکستانی حدود میں گرنے کا واقعہ: امریکہ کی طرف سے متعصب جبکہ چین کی جانب سے نصیحت آمیز ردعملمیٹا آسٹریلوی سیاستدانوں کو سائبر حملوں اور جھوٹی خبروں سے بچنے کی تربیت دے گییوکرین: مغربی ممالک سے آئے 180 سے زائد جنگجو ہوائی حملے میں ہلاک، روس کی مغربی ممالک کو تنبیہ، سب نشانے پر ہیں، چُن چُن کر ماریں گےاسرائیل پر تاریخ کا بڑا سائبر حملہ: وزیراعظم، وزارت داخلہ اور وزارت صیہونی بہبود کی ویب سائٹیں ہیک اور تلفروس اور یوکرین کے مابین جلد امن معاہدہ طے پا جائے گا: روسی مذاکرات کاریوکرینی مہاجرین کی تعداد 50 لاکھ سے بڑھ گئی: اقوام متحدہفیس بک اور انسٹاگرام کی شدید متعصب پالیسی کا اعلان: روسی صدر اور فوج کیخلاف نفرت اور موت کے پیغامات شائع کرنے کی اجازت، نتیجتاً مغربی ممالک میں آرتھوڈاکس کلیساؤں اور روسی کاروباروں پر حملوں کی خبریںترکی کا بھی روس کے ساتھ مقامی پیسے میں تجارت کرنے کا اعلانمغرب کے دوہرے معیار: دنیا پر روس سے تجارت پر پابندیاں، برطانیہ سمیت بیشتر مغربی ممالک روس سے گیس و تیل کی خریداری جاری رکھیں گے

سابق امریکی وزیر خارجہ ہیلری کلنٹن کا کرد خواتین جنگجوؤں پر فلم بنانے کا اعلان: متعدد عالمی حلقوں نے مشرق وسطیٰ میں جنگ کی سیاست کو ہوا دینے کی کوشش قرار دے دیا

سابق امریکی وزیر خارجہ ہیلری کلنٹن نے بیٹی کے ساتھ مل کر خواتین کرد جنگجوؤں پر فلم بنانے کا اعلان کیا ہے۔ “کوبانی کی بیٹیاں: بغاوت، ہمت اور انصاف کی کہانی” نامی کتاب کو فلمانے کا فیصلہ بروز پیر سامنے آیا ہے۔

فلم پر شروع ہونے سے قبل ہی متعدد عالمی حلقوں کی جانب سے تنقید کی جا رہی ہے اور اسے ہیلری کی نسوانیت پسندی کے پردے میں مشرق وسطیٰ میں جاری جنگی آگ کو ٹرمپ کے بعد دوبارہ ہوا دینے کی کوشش قرار دیا جا رہا ہے۔ جس سے لسانی تفریق اور علاقائی مسائل میں مزید اضافہ ہو گا۔

کوبانی کی بیٹیاں کی کہانی ایسی لڑکیوں کے گرد گھومتی ہے جو امریکی مدد سے شام میں داعش کے خلاف لڑتی ہیں، لیکن حقیقت میں اس میں امریکی مدد کو بطور تحفہ اور خطے کا خیر خواہ دکھایا گیا ہے۔ فلم کا اعلان کرتے ہیلری کلنٹن کا کہنا تھا کہ یہ ایسی لڑکیوں کی کہانی ہے جو انصاف اور برابری کے حقوق کے لیے لڑتی ہیں۔

یاد رہے کہ ہیلری کلنٹن کے کرد باغیوں کے ساتھ دیرینہ تعلقات ہیں جن میں خصوصاً وائی پی جی اور پی کے کے نمایاں ہیں جنہیں ترکی اور امریکہ سمیت کئی ممالک میں دہشت گرد تنظیم مانا جاتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ اوباما کے دور حکومت میں ہیلری کرد ملیشیا کو داعش کے خلاف ہتھیار دینے کی بڑی حمائتی تھیں، اور مختلف ذرائع کے مطابق اب یہی گروہ شام میں امریکی مفادات اور متعدد تیل کے ذرائع کی حفاظت پر مامور ہیں۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us