ہفتہ, جنوری 15 Live
Shadow
سرخیاں
قازقستان ہنگامے: مشترکہ تحفظ تنظیم کے سربراہ کا صورتحال پر قابو کا اعلان، امن منصوبے کی تفصیلات پیش کر دیںبرطانوی پارلیمنٹ میں منشیات کا استعمال: اسپیکر کا سونگھنے والے کتے بھرتی کرنے کا عندیاامریکی سی آئی اے اہلکاروں کے ایک بار پھر کم عمر بچوں بچیوں کے ساتھ جنسی جرائم میں ملوث ہونے کا انکشافامریکہ کا مشرقی افریقہ میں تاریخ کے سب سے بڑے فوجی آپریشن کا اعلان: 1 ہزار سے زائد مزید کمانڈو تیارروسی صدر کی ثالثی: آزربائیجان اور آرمینیا کے مابین سرحدی جھڑپیں ختم، سرحدی حدود کے تعین پر اتفاق، جنگ سے متاثر آبادی اور دیگر انسانی حقوق کے تحفظ کی بھی یقین دہانینائیجیر: فرانسیسی فوج کی فائرنگ سے 2 شہری شہید، 16 زخمیامریکی فوج میں ہر 4 میں سے 1 عورت اور 5 میں سے 1 مرد جنسی زیادتی کا نشانہ بنتا ہے، بیشتر خود کشی کر لیتے، کورٹ مارشل کے خوف سے کوئی آواز نہیں اٹھاتا: سابقہ اہلکارروس کا غیر ملکی سماجی میڈیا کمپنیوں پر ملک میں کاروباری اندراج کے لیے دباؤ جاری: رواں سال کے آخر تک عمل نہ ہونے پر پابندی لگانے کا عندیاامریکہ ہائپر سونک ٹیکنالوجی میں چین اور روس سے بہت پیچھے ہے: امریکی جنرل تھامپسنامریکی تفریحی میڈیا صنعت کس عقیدے، نظریے اور مقصد کے تحت کام کرتی ہے؟

کورونا وائرس مردوں کے بچے پیدا کرنے صلاحیت کو بھی شدید متاثر کرتا ہے، ہر 105 میں سے 84 میں شکایت: سائنسدانوں کا فوری مزید تحقیق پر زور

سائنسدانوں نے کورونا وائرس کے مردانہ تولیدی نظام کو متاثر کرنے کے خدشے کا اظہار کیا ہے اور وائرس کے دور رست نتائج پر مزید تحقیق کرنے پر زور دیا ہے۔

محققین کا کہنا ہے کہ وائرس مردوں کی بچے پیدا کرنے کی صلاحیت کو متاثر کرتا ہے، جس سے آئندہ نسل شدید خطرے میں ہے۔ چینی صوبے ووہان کی جامعہ ھوآزہونگ میں مطالعہ کے دوران سامنے آیا ہے کہ وائرس مردوں کی تولیدی مادے میں پائے جانے والے جرثوموں کی حرکت، انکی تعداد اور خصیوں کو نقصان پہنچاتا ہے۔

محققین نے حکومتوں پر زور دیا ہے کہ فوری طور پر وائرس کے دور رست نتائج پر تحقیق شروع کروائی جائے کیونکہ وائرس سے متاثرہ مرد افراد کی تولیدی صحت شدید خطرے میں ہے۔

اب تک کی تحقیق کے بعد سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ وائرس جس انزائم (اینجیوٹینسن کوورٹنگ انزائم) کے ذریعے جسم میں داخل ہوتا ہے، وہ جسم کے اہم عضلات، دل، پھپھروں، گردوں اور آنتوں میں پائی جاتی ہے، جس سے ان عضلات کو تو نقصان ہوتا ہی ہے لیکن جسم میں داخل ہونے کے بعد کیونکہ وائرس کی پیداوار انتہائی بڑھ جاتی ہے اور وہ پورے جسم میں پھیل جاتا ہے لہٰذا مذکورہ انزائم سے سونکھنے کا نظام، عمل تنفس، نظام انہظام، اعصاب، خون اور مردوں کے تولیدی نظام پر بھی اثر پڑتا ہے۔

چین میں لیبارٹری تحقیق کے دوران سائنسدانوں نے مردوں کے تولیدی مادے میں بھی کورونا وائرس کو پایا ہے۔ اس کے علاوہ جرمنی اور ایران کے سائنسدانوں نے بھی وائرس سے متاثرہ افراد کے خصیوں کے متاثر ہونے کی شکایات کی تصدیق کی ہے۔ سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ اب تک کے مطالعہ کے مطابق ہر 105 متاثرہ مردوں میں سے 84 کے خصیے متاثر ہوئے ہیں۔

محققین نے خصیوں کے علاوہ تولیدی مادے کی جانچ کی تو انہیں مادے میں آکسیڈیٹیو دباؤ کے مریضوں کی علامات بھی دریافت ہوئیں، تولیدی مادے میں جلن پیدا کرنے اور خلیوں کو توڑنے والے مواد کی مقدار بھی کافی زیادہ مقدار میں ملی ہے۔

اس کے علاوہ جرثوموں کی رفتار تین گناء سست اور مقدار میں بھی نمایاں کمی دیکھی گئی۔ سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ یہ تمام عوامل تولیدی مادے کے متاثر ہونے کی علامات ہیں اور بچے پیدا کرنے کی صلاحیت کو متاثر کرتے ہیں۔

سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ اگرچہ یہ عوامل وقت کے ساتھ بہتر ہو جاتے ہیں لیکن پایا گیا ہے کہ کووڈ-19 کے متاثرہ افراد میں ایسا نہیں ہے اور بیماری تولیدی صحت کو شدید متاثر کر رہی ہے۔

محققین نے حکومتوں پر زور دیا ہے کہ معاملے پر مزید تحقیق کی جائے، وگرنہ اس سے دنیا کی آبادی کو شدید خطرات لاحق ہو جائیں گے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us