ہفتہ, جنوری 15 Live
Shadow
سرخیاں
قازقستان ہنگامے: مشترکہ تحفظ تنظیم کے سربراہ کا صورتحال پر قابو کا اعلان، امن منصوبے کی تفصیلات پیش کر دیںبرطانوی پارلیمنٹ میں منشیات کا استعمال: اسپیکر کا سونگھنے والے کتے بھرتی کرنے کا عندیاامریکی سی آئی اے اہلکاروں کے ایک بار پھر کم عمر بچوں بچیوں کے ساتھ جنسی جرائم میں ملوث ہونے کا انکشافامریکہ کا مشرقی افریقہ میں تاریخ کے سب سے بڑے فوجی آپریشن کا اعلان: 1 ہزار سے زائد مزید کمانڈو تیارروسی صدر کی ثالثی: آزربائیجان اور آرمینیا کے مابین سرحدی جھڑپیں ختم، سرحدی حدود کے تعین پر اتفاق، جنگ سے متاثر آبادی اور دیگر انسانی حقوق کے تحفظ کی بھی یقین دہانینائیجیر: فرانسیسی فوج کی فائرنگ سے 2 شہری شہید، 16 زخمیامریکی فوج میں ہر 4 میں سے 1 عورت اور 5 میں سے 1 مرد جنسی زیادتی کا نشانہ بنتا ہے، بیشتر خود کشی کر لیتے، کورٹ مارشل کے خوف سے کوئی آواز نہیں اٹھاتا: سابقہ اہلکارروس کا غیر ملکی سماجی میڈیا کمپنیوں پر ملک میں کاروباری اندراج کے لیے دباؤ جاری: رواں سال کے آخر تک عمل نہ ہونے پر پابندی لگانے کا عندیاامریکہ ہائپر سونک ٹیکنالوجی میں چین اور روس سے بہت پیچھے ہے: امریکی جنرل تھامپسنامریکی تفریحی میڈیا صنعت کس عقیدے، نظریے اور مقصد کے تحت کام کرتی ہے؟

ہسپانیہ: شاہی خاندان کی توہین پر گرفتار گلوکار کی آزادی کے لیے تحریک زور پکڑ گئی، کاتالونیا اور ویلنسیا میں بڑے مظاہرے، پولیس تشدد پر شہری مشتعل، جلاؤ گھیراؤ شروع

ہسپانیہ کے صوبے کاتالونیا میں گلوکار پیبلو حاصل کی گرفتاری کے خلاف شہریوں کی بڑی تعداد احتجاج کرنے سڑکوں پر نکل آئی ہے۔

مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے پولیس نے ربڑ کی گولیاں اور آنسو گیس کا استعمال کیا جس پر مظاہرین مشتعل ہو گئے اور ہنگامہ آرائی شروع ہو گئی۔

انتظامیہ نے گلوکار پیبلو حاصل کو ہسپانوی بادشاہ جوآن کارلوس اول اور شاہی خاندان کو چور کہنے پر گرفتار کر رکھا ہے۔ جس پر گلوکار کو نو ماہ قید کی سزا سنائی گئی تھی۔ پیبلو پر مزید الزام ہے کہ اس نے ماؤ گروہ کی ستائش کی اور ریاستی اداروں پر ملامت کی۔

پیبلو کی گرفتاری کے خلاف 200 سے زائد فنکاروں نے عرضی پر دستخط کیے ہیں اور اب اسکی آزادی کی تحریک ملک بھر میں پھیلتی جا رہی ہے۔

کاتالونیا کے علاوہ ویلنسیا میں ہونے والے مظاہرے میں شہریوں نے حکومت کے خلاف نعرے لگائے، انکا کہنا تھا کہ اظہار خیال کی آزادی کے بغیر جمہوریت کا تصور نہیں۔

ہسپانیہ میں جہاں ایک طرف شاہی خاندان کی توہین پر حکومت نے معروف فنکار کو دھر رکھا ہے وہاں گزشتہ ہفتے حکومت نے آزادی اظہار کے نام پر مذہب اور شاہی خاندان کی توہین کے قوانین میں نرمی کرنے کا عندیا دیا ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us