ہفتہ, جنوری 15 Live
Shadow
سرخیاں
قازقستان ہنگامے: مشترکہ تحفظ تنظیم کے سربراہ کا صورتحال پر قابو کا اعلان، امن منصوبے کی تفصیلات پیش کر دیںبرطانوی پارلیمنٹ میں منشیات کا استعمال: اسپیکر کا سونگھنے والے کتے بھرتی کرنے کا عندیاامریکی سی آئی اے اہلکاروں کے ایک بار پھر کم عمر بچوں بچیوں کے ساتھ جنسی جرائم میں ملوث ہونے کا انکشافامریکہ کا مشرقی افریقہ میں تاریخ کے سب سے بڑے فوجی آپریشن کا اعلان: 1 ہزار سے زائد مزید کمانڈو تیارروسی صدر کی ثالثی: آزربائیجان اور آرمینیا کے مابین سرحدی جھڑپیں ختم، سرحدی حدود کے تعین پر اتفاق، جنگ سے متاثر آبادی اور دیگر انسانی حقوق کے تحفظ کی بھی یقین دہانینائیجیر: فرانسیسی فوج کی فائرنگ سے 2 شہری شہید، 16 زخمیامریکی فوج میں ہر 4 میں سے 1 عورت اور 5 میں سے 1 مرد جنسی زیادتی کا نشانہ بنتا ہے، بیشتر خود کشی کر لیتے، کورٹ مارشل کے خوف سے کوئی آواز نہیں اٹھاتا: سابقہ اہلکارروس کا غیر ملکی سماجی میڈیا کمپنیوں پر ملک میں کاروباری اندراج کے لیے دباؤ جاری: رواں سال کے آخر تک عمل نہ ہونے پر پابندی لگانے کا عندیاامریکہ ہائپر سونک ٹیکنالوجی میں چین اور روس سے بہت پیچھے ہے: امریکی جنرل تھامپسنامریکی تفریحی میڈیا صنعت کس عقیدے، نظریے اور مقصد کے تحت کام کرتی ہے؟

یوکرین کی 8 سالہ ماڈل بچی کا 13 سالہ روسی لڑکے سے معاشقے کا اعلان: بچی کی والدہ کے معترض نہ ہونے کے بیان پر ملک بھر سے شدید ردعمل

یوکرین میں ایک آٹھ سالہ بچی کے 13 سالہ لڑکے سے معاشقے پر ملک بھر میں نئی بحث چھیڑ دی ہے، خصوصاً جبکہ اس تعلق سے لڑکی کی والدہ کو کوئی اعتراض نہیں ہے۔

میلانا ماخانیتس یوکرین کی ایک معروف سماجی میڈیا شخصیت ہے، جس کے 70 لاکھ سے زائد پیروکار ہیں۔ میلانا بچوں کے کپڑوں کے معروف مارکوں کے لیے ماڈلنگ کرتی ہے۔

میلانا کے سماجی میڈیا پر تمام کھاتے اسکی والدہ چلاتی ہیں، جہاں چند روز قبل انہوں نے اپنی 8 سالہ بچی کی ایک 13 سالہ ماسکو کے لڑکے پاشا پائی سے معاشقے کی خبر نشر کی۔

میلانا نے لکھا کہ پاشا اور وہ ایک جوڑا ہے۔ (پیغام کو اب تلف کر دیا گیا ہے)

واضح رہے کہ اگرچہ میلانا نے رشتے کا اعلان ابھی کیا ہے لیکن اس سے قبل بھی جوڑا سماجی میڈیا پر بوس وکنار اور ایک بستر پر سونے جیسی جنسی رحجان والی تصاویر نشر کر چکا ہے۔

قومی نشریاتی اداروں کی جانب سے معاملے کو اٹھانے پر کھاتے سے بیشتر جنسی مواد ہٹا دیا گیا ہے تاہم بچوں کی والدہ سے پوچھنے پر انکا کہنا تھا کہ یہ بچوں کی اپنی زندگی ہے اور وہ اس میں زیادہ مداخلت نہیں کرتیں۔

والدہ کی رائے سے بیشتر شہری متفق نہیں ہیں اور انکا کہنا ہے کہ بچی کی والدہ کے ساتھ کوئی نفسیاتی مسئلہ ہے، اسکا علاج ہونا چاہیے۔

صارفین کا کہنا ہے کہ بچی کی والدہ شہرت اور پیسہ بنانے کے لیے بچی کو جنسی طور پر استعمال کر رہی ہے، جبکہ کچھ نے معاملے کو بچوں سے جنسی زیادتی سے بھی جوڑا ہے۔

ایک صارف نے لکھا ہے کہ بچوں سے ماڈلنگ اور انکی مقابلہ حسن جیسے مقابلوں میں شرکت بچوں کی زندگیاں تباہ کر رہا ہے۔

معاملے پر سماجی حلقوں کے علاوہ سیاسی حلقوں کی جانب سے بھی ناراضگی کا اظہار کیا گیا ہے، اور اس پر فوری انتظامی کارروائی کا مطالبہ کیا جا رہا ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us