ہفتہ, جنوری 15 Live
Shadow
سرخیاں
قازقستان ہنگامے: مشترکہ تحفظ تنظیم کے سربراہ کا صورتحال پر قابو کا اعلان، امن منصوبے کی تفصیلات پیش کر دیںبرطانوی پارلیمنٹ میں منشیات کا استعمال: اسپیکر کا سونگھنے والے کتے بھرتی کرنے کا عندیاامریکی سی آئی اے اہلکاروں کے ایک بار پھر کم عمر بچوں بچیوں کے ساتھ جنسی جرائم میں ملوث ہونے کا انکشافامریکہ کا مشرقی افریقہ میں تاریخ کے سب سے بڑے فوجی آپریشن کا اعلان: 1 ہزار سے زائد مزید کمانڈو تیارروسی صدر کی ثالثی: آزربائیجان اور آرمینیا کے مابین سرحدی جھڑپیں ختم، سرحدی حدود کے تعین پر اتفاق، جنگ سے متاثر آبادی اور دیگر انسانی حقوق کے تحفظ کی بھی یقین دہانینائیجیر: فرانسیسی فوج کی فائرنگ سے 2 شہری شہید، 16 زخمیامریکی فوج میں ہر 4 میں سے 1 عورت اور 5 میں سے 1 مرد جنسی زیادتی کا نشانہ بنتا ہے، بیشتر خود کشی کر لیتے، کورٹ مارشل کے خوف سے کوئی آواز نہیں اٹھاتا: سابقہ اہلکارروس کا غیر ملکی سماجی میڈیا کمپنیوں پر ملک میں کاروباری اندراج کے لیے دباؤ جاری: رواں سال کے آخر تک عمل نہ ہونے پر پابندی لگانے کا عندیاامریکہ ہائپر سونک ٹیکنالوجی میں چین اور روس سے بہت پیچھے ہے: امریکی جنرل تھامپسنامریکی تفریحی میڈیا صنعت کس عقیدے، نظریے اور مقصد کے تحت کام کرتی ہے؟

اسلحے کی جنگ میں کامیابی حاصل نہ کر سکنے کے بعد مغرب نے روسی تہذیب کے خلاف ہائبرڈ جنگ شروع کر رکھی ہے: روسی وزارت دفاع کے مشیر اعلیٰ کی قوم کو تنبیہ

روسی وزارت دفاع کے مشیر آندرے النتسکی نے حکومت اور عوام کو تنبیہ کی ہے کہ جوہری قوت اور مظبوط فوج کے باعث دشمن ممالک روس کو نشانہ بنانے سے قاصر ہیں لہٰذا انہوں نے روسی تہذیب کے خلاف جدید جنگ شروع کر دی ہے۔

میڈیا سے گفتگو میں مشیر کا کہنا تھا کہ مغرب روس کی عسکری قوت اور تاریخ سے بخوبی واقف ہے، لہٰذا ہمیں آئندہ ایک دہائی تک بھی کسی براہ راست حملے کا خطرہ نہیں، البتہ دشمن نے اب حملے کا پینتڑا بدلا ہے، اور اب ہمارے عام شہریوں کی سوچ کو نشانہ بنایا جا رہا ہے، سائبر حملے کیے جا رہے ہیں اور ڈیجیٹل صنعت کو نقصان پہنچایا جا رہا ہے۔

اعلیٰ روسی عہدےدار نے عوام کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ دشمن اب شہریوں کے سوچنے کے عمل کو کنٹرول کر رہا ہے، ان سے شہری حقوق کی تعلیم چھین کر انتشار کو بطور حل سکھایا جا رہا۔ دشمن نے ہماری تہذیب، دماغوں پر حملہ کر دیا ہے۔

آندرے کا مزید کہنا تھا کہ جنگوں سے متاثر اقوام وقت کے ساتھ انسانی وسائل کی مدد سے دوبارہ کھڑی ہو جاتی ہیں لیکن جو خود اپنی ثقافت اور تہذیب سے بدظن ہو جائیں انکا قیام ناممکن ہوتا ہے۔ روسی حکومتی مشیر کا مزید کہنا تھا کہ شہریوں کو سمجھنا ہو گا کہ ایسی جنگوں کے اثرات فوری سامنے آنے والے نہیں ہوتے، انہیں کم ازکم ایک دو نسل کے بعد دیکھا جا سکتا ہے، لیکن مسئلہ یہ ہے کہ اس وقت کوئی کچھ نہیں کر سکتا۔

یاد رہے کہ گزشتہ دسمبر میں روسی وزیر خارجہ سرگئی لاوروو نے مغربی ممالک کی جانب سے دنیا بھر میں روسی ویکسین سپوتنک5 ویکسین کے خلاف منفی پراپیگنڈے سے آگاہ کیا تھا، انکا کہنا تھا کہ مغربی ممالک انسانی تہذیب کو لاحق خطرے پر بھی سیاست کر رہے ہیں، اور ایسے حالات میں بھی اپنی ناپسندیدہ روسی حکومت کے خلاف پراپیگنڈا جاری ہے۔ روسی اعلیٰ عہدے دار نے اس کے باوجود مغربی ممالک کو مل کر مسائل حل کرنے کی دعوت دی تھی۔

اس کے جواب میں نیٹو کے جنرل سیکرٹری نے مغربی عسکری اتحاد کے اجلاس میں زہر فشانی کرتے ہوئے اتحادی ممالک کو ماسکو کے خلاف اکسایا اور کہا کہ ہماری جمہوری اقدار کو مشرق سے سخت خطرہ ہے، ممالک کو اس کے تحفظ کے لیے تیاری کرنا ہو گی۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us